mana k wo youn tau bara khush atwar hay… per us k sath sath rehna bara dushwaar hay…

mana k wo youn tau bara khush atwar hay…
per us k sath sath rehna bara dushwaar hay…


kotah been hay mager chorta nahi nuqta e nazar…
behas wo kerta hay bohat hota sir pe sawar hay…


shaksyat mutasir kun nahi tau na sahi mager…
din ba din hota jaa reha wo adam bayzaar hay…


muskurahat uski aisi k zakhami ker deti hay chehra…
us ko hunsanay ki khawahish rekhna tau baykar hay…


itna us ko b ehsas hay apni kam mayagi ka…
khamosh rehta hay halake khush guftar hay…


kanootiat itni hay us me k ahbab hain nalaan us say…
bantta phrta hay tanhaiyan yeh uska shuaar hay…


kabi milay ga youn tapak say k gehra yarana hay…
kabhi pehchanay ga b na dekh k wo ada kaar hay…


na taluk nibhanay atay na nata torna hay ata…
rabto me pehal kerna uska tareka e farar hay…


lafz lafz tanha hay jabi aadi hay apni kehnay ka…
samayeen say mehrom reha ab samaato pe bar hay…


jee leta hay zindagi aur ander sy merta bhi hay…
hajoom b hay tanhai b youn hota wo khawar hay…

BY HAJOOM E TANHAI

مانا کہ وہ یوں تو بڑا خوش اطوار ہے …
پر اس کہ ساتھ ساتھ رہنا بڑا دشوار ہے …

کوتاہ بین ہے مگر چھوڑتا نہیں نقطہ نظر …
بحث وہ کرتا ہے بہت ہوتا سر پہ سوار ہے …

شخصیت متاثر کن نہیں تو نہ سہی مگر …
دن بہ دن ہوتا جا رہا وہ آدم بیزار ہے …

مسکراہٹ اسکی ایسی کہ زخمی کر دیتی ہے چہرہ …
اس کو ہنسنے کی خواہش رکھنا تو بیکار ہے …

اتنا اس کو بھی احساس ہے اپنی کم مایگی کا …
خاموش رہتا ہے حالانکہ خوش گفتار ہے …

قنوطیت اتنی ہے اس میں کہ احباب ہیں نالاں اس سے ..
بنتا پھرتا ہے تنہا یہاں یہ اسکا شعار ہے …

کبھی ملے گا یوں تپاک سے کہ گہرا یارانہ ہے …
کبھی پہچانے گا بھی نہ دیکھ کہ وہ ادا کار ہے …

نہ تعلق نبھانے آتے نہ ناتا توڑنا ہے آتا…
رابطوں میں پہل کرنا اسکا طریقہ فرار ہے …

لفظ لفظ تنہا ہے جبھی عادی ہے اپنی کہنے کا …
سامعین سے محروم رہا اب سماعتوں پہ بار ہے …

جی لیتا ہے زندگی اور اندر سے مرتا بھی ہے …
ہجوم بھی ہے تنہائی بھی یوں ہوتا وہ خوار ہے …

از قلم ہجوم تنہائی

By Syeda Vaiza Zaidi

Vaiza Zaidi is a female writer who writes Urdu web novels online. She is one of the most popular and prolific writers in the Urdu literature scene. She has written over 50 novels in different genres, such as romance, thriller, comedy, and social issues. She has a large fan following who admire her for her creativity, style, and humor. She is also an active blogger who shares her views on various topics related to Urdu culture, literature, and society. She is an inspiring role model for many young and aspiring Urdu writers.

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *