Salam Korea: A Tale of Cultural Fusion, Intrigue and Romance in Salam Korea,Unveiling the Secrets of Salam Korea,Unforgettable Journeys in Salam Korea Novel, Salam Korea: A Captivating Love Story,Salam Korea: Where Dreams and Destiny Collide,Exploring Salam Korea through Fiction, Salam Korea: A Saga of Adventure and Discovery,Love and Adventure in Salam Korea Novel,Salam Korea: An Epic Tale of Friendship and Redemption, Salam Korea: Embracing Tradition, Embracing Change,Unraveling the Charms of Salam Korea Novel,Salam Korea: A Gripping Journey of Self-Discovery,Salam Korea: The Melting Pot of Cultures and Emotions,Salam Korea: An Intimate Portrait of Love and Conflict.1. Urdu web travel novels,Urdu travel adventures,Pakistani travel novels,Urdu travelogues online, Exciting Urdu travel stories,Pakistani travel fiction,Wanderlust in Urdu novels,Journeys in Urdu literature,Exploring the world through Urdu web novels,Urdu travel narratives?Thrilling travel tales in Urdu,Adventure-packed Urdu travel literature,Unforgettable journeys in Urdu web novels,Cultural exploration in Urdu travel novels,Immersive travel experiences in Urdu fiction, Salam Korea travel guide,Salam Korea culture and lifestyle, Discovering Salam Korea,Salam Korea attractions and landmarks, Salam Korea food and cuisine,Salam Korea travel tips and insights, Exploring Salam Korea's hidden gems,Salam Korea travel itinerary,Salam Korea language and communication,Immersive experiences in Salam Korea,Salam Korea shopping and entertainment,Salam Korea historical and cultural sites,Salam Korea outdoor adventures , Salam Korea local customs and traditions, Salam Korea travel recommendations suspense stories in urdu,suspense stories in urdu ,horror poetry in urdu,short urdu horror stories urdu poetry, urdu shayari, sad poetry in urdu love poetry in urdu jaun elia allama iqbal poetry poetry in urdu 2 lines urdu shayri sad poetry in urdu 2 lines ahmad faraz ghalib shayari attitude poetry in urdu sad quotes in urdu funny poetry in urdu romantic poetry in urdu allama iqbal shayari best poetry in urdu bewafa poetry sad shayari urdu islamic poetry in urdu barish poetry poetry in urdu attitude ghalib poetry allama iqbal poetry in urdu attitude quotes in urdu poetry in urdu text deep poetry in urdu sad poetry in urdu text love shayari urdu ghazal in urdu urdu poetry in urdu text mirza ghalib shayari love poetry in urdu romantic urdu shayari on life rekhta shayari jaun elia poetry iqbal shayari deep lines in urdu sad love poetry in urdu urdu poetry sms best shayari in urdu death poetry in urdu funny shayari in urdu dosti poetry in urdu father quotes in urdu birthday poetry in urdu poetry status eid poetry Hajoom e tanhai poetry, Vaiza zaidi poetry, jaun elia shayari, urdu poetry text copy, attitude poetry in urdu 2 lines text, urdu shayari in english, shero shayari urdu, munafiq poetry, mirza ghalib poetry, romantic shayari in urdu, allama iqbal ki shayari, heart touching poetry in urdu 2 lines sms, poetry in urdu 2 lines attitude, john elia sad poetry, sad poetry sms in urdu 2 lines text messages, john elia shayari, 2 line urdu poetry copy paste, dukhi poetry, heart touching quotes in urdu, mohsin naqvi poetry, beautiful poetry in urdu, udas poetry, friendship poetry in urdu, muhabbat poetry, urdu sher, one line quotes in urdu, dosti shayari urdu, sad poetry status, narazgi poetry, judai poetry, ghalib shayari in urdu, faiz ahmad faiz shayari, barish poetry in urdu, urdu one line caption copy paste, wasi shah poetry, most romantic love poetry in urdu, khamoshi poetry, love poetry in urdu text, sad poetry sms in urdu 2 lines, sad poetry in urdu 2 lines about life, urdu poetry status, islamic poetry in urdu 2 lines, jon elia poetry, funny poetry in urdu for friends, attitude shayari in urdu, allama iqbal poetry in urdu for students, Zawwar haider poetry, mohabbat shayari urdu, jaun elia sad poetry, sad poetry sms, urdu poetry written, urdu novels,urdu novels, urdu poetry, urdu afsanay, urdu statuses, urdu shayari, sad poetry in urdu, love poetry in urdu, poetry in urdu 2 lines, urdu shayri, sad poetry in urdu 2 lines, ahmad faraz, romantic poetry in urdu, best poetry in urdu, bewafa poetry, sad shayari urdu, barish poetry, poetry in urdu text, deep poetry in urdu, sad poetry in urdu text, love shayari urdu, ghazal in urdu, urdu poetry in urdu text, love poetry in urdu romantic, urdu shayari on life, deep lines in urdu, sad love poetry in urdu, urdu poetry sms, best shayari in urdu, very sad poetry in urdu images, novels in urdu pdf, urdu books, bewafa poetry in urdu, best urdu novels, urdu poetry text copy, urdu shayari in english, shero shayari urdu, romantic shayari in urdu, heart touching poetry in urdu 2 lines sms, sad poetry sms in urdu 2 lines text messages, 2 line urdu poetry copy paste, famous urdu novels, beautiful poetry in urdu, udas poetry, muhabbat poetry, urdu sher, barish poetry in urdu, most romantic love poetry in urdu, khamoshi poetry, love poetry in urdu text, sad poetry sms in urdu 2 lines, sad poetry in urdu 2 lines about life, ahmed faraz poetry, mohabbat shayari urdu, sad poetry sms, urdu poetry written, love poetry in urdu romantic 2 line, attitude poetry in urdu text, heart touching poetry in urdu, sad ghazal in urdu, 2 line urdu poetry romantic sms, ahmad faraz poetry, poetry about life in urdu, urdu words for poetry, urdu poetry copy paste, urdu poetry in english, ahmad faraz shayari, bewafa shayari urdu, love poetry in urdu 2 lines, urdu ghazal poetry, poetry in urdu 2 lines deep sad lines in urdu, faraz shayari, urdu words for shayari, urdu sad poetry sms in urdu writing, dard poetry, happy poetry in urdu, urdu love poetry for her, faraz poetry, ali zaryoun shayari, shayari in urdu words, very sad shayari urdu, ishq poetry in urdu, urdu shayari images, 2 lines poetry, new poetry in urdu, urdu poetry in hindi, urdu poetry lines, one line poetry in urdu, poetry on beauty in urdu, one line poetry in urdu text, muskurahat poetry, sad poetry in urdu 2 lines without images, mohabbat poetry in urdu, nice poetry in urdu, best love poetry in urdu, muhabbat poetry in urdu, best lines in urdu, deep love poetry in urdu, beautiful shayari in urdu, urdu sad poetry sms, Novel urdu adab, urdu digests, raja gidh, urdu novels list, raqs e bismil novel, novels in urdu pdf, urdu books, best urdu novels, famous urdu novels, free urdu digest, naseem hijazi, best urdu novels list, raja gidh pdf, urdu books library, new urdu novels, jangloos, list of urdu books, urdu story books, bano qudsia books, pdf urdu books, famous urdu novels list, best pakistani novels in urdu, urdu stories pdf, naseem hijazi novels, urdu novels online, udaas naslain, best urdu novels pdf, latest urdu novels, short novels in urdu,, romantic story urdu, urdu best books, best urdu books to read, pakeeza anchal online reading, ismat chughtai books, urdu digest novels, urdu books online, urdu literature books, islamic books urdu, udas naslain pdf, urdu poetry books, urdu novel online reading, jasoosi digest, novel novels in urdu, urdu audio books, top urdu novels, romance novel best novels in urdu, wasif ali wasif books pdf, urdu language books pdf, tahir javed mughal novels, urdu digest pdf, naseem hijazi books, best books to read in urdu, ashfaq ahmed books pdf, dastak novel, a hameed novels, psychology books in urdu, bano qudsia novels, pakeeza anchal romantic novel, pyasa sawan novel, free urdu novels, anchal digest novels, raqs bismil nove,l urdu poetry books pdf, new novel 2021 in urdu, urdu novels 2021, love story novel in urdu, urdu history books, raja gidh read online, jasoosi novel, urdu love novels list, pakistani novels in urdu, urdu historical novels, romance novel famous urdu novels list, romance novel urdu novels list urdu poetry, urdu shayari, sad poetry in urdu love poetry in urdu jaun elia allama iqbal poetry poetry in urdu 2 lines urdu shayri sad poetry in urdu 2 lines ahmad faraz ghalib shayari attitude poetry in urdu sad quotes in urdu funny poetry in urdu romantic poetry in urdu allama iqbal shayari best poetry in urdu bewafa poetry sad shayari urdu islamic poetry in urdu barish poetry poetry in urdu attitude ghalib poetry allama iqbal poetry in urdu attitude quotes in urdu poetry in urdu text deep poetry in urdu sad poetry in urdu text love shayari urdu ghazal in urdu urdu poetry in urdu text mirza ghalib shayari love poetry in urdu romantic urdu shayari on life rekhta shayari jaun elia poetry iqbal shayari deep lines in urdu sad love poetry in urdu urdu poetry sms best shayari in urdu death poetry in urdu funny shayari in urdu dosti poetry in urdu father quotes in urdu birthday poetry in urdu poetry status eid poetry Hajoom e tanhai poetry, Vaiza zaidi poetry, jaun elia shayari, urdu poetry text copy, attitude poetry in urdu 2 lines text, urdu shayari in english, shero shayari urdu, munafiq poetry, mirza ghalib poetry, romantic shayari in urdu, allama iqbal ki shayari, heart touching poetry in urdu 2 lines sms, poetry in urdu 2 lines attitude, john elia sad poetry, sad poetry sms in urdu 2 lines text messages, john elia shayari, 2 line urdu poetry copy paste, dukhi poetry, heart touching quotes in urdu, mohsin naqvi poetry, beautiful poetry in urdu, udas poetry, friendship poetry in urdu, muhabbat poetry, urdu sher, one line quotes in urdu, dosti shayari urdu, sad poetry status, narazgi poetry, judai poetry, ghalib shayari in urdu, faiz ahmad faiz shayari, barish poetry in urdu, urdu one line caption copy paste, wasi shah poetry, most romantic love poetry in urdu, khamoshi poetry, love poetry in urdu text, sad poetry sms in urdu 2 lines, sad poetry in urdu 2 lines about life, urdu poetry status, islamic poetry in urdu 2 lines, jon elia poetry, funny poetry in urdu for friends, attitude shayari in urdu, allama iqbal poetry in urdu for students, Zawwar haider poetry, mohabbat shayari urdu, jaun elia sad poetry, sad poetry sms, urdu poetry written, urdu novels,urdu novels, urdu poetry, urdu afsanay, urdu statuses, urdu shayari, sad poetry in urdu, love poetry in urdu, poetry in urdu 2 lines, urdu shayri, sad poetry in urdu 2 lines, ahmad faraz, romantic poetry in urdu, best poetry in urdu, bewafa poetry, sad shayari urdu, barish poetry, poetry in urdu text, deep poetry in urdu, sad poetry in urdu text, love shayari urdu, ghazal in urdu, urdu poetry in urdu text, love poetry in urdu romantic, urdu shayari on life, deep lines in urdu, sad love poetry in urdu, urdu poetry sms, best shayari in urdu, very sad poetry in urdu images, novels in urdu pdf, urdu books, bewafa poetry in urdu, best urdu novels, urdu poetry text copy, urdu shayari in english, shero shayari urdu, romantic shayari in urdu, heart touching poetry in urdu 2 lines sms, sad poetry sms in urdu 2 lines text messages, 2 line urdu poetry copy paste, famous urdu novels, beautiful poetry in urdu, udas poetry, muhabbat poetry, urdu sher, barish poetry in urdu, most romantic love poetry in urdu, khamoshi poetry, love poetry in urdu text, sad poetry sms in urdu 2 lines, sad poetry in urdu 2 lines about life, ahmed faraz poetry, mohabbat shayari urdu, sad poetry sms, urdu poetry written, love poetry in urdu romantic 2 line, attitude poetry in urdu text, heart touching poetry in urdu, sad ghazal in urdu, 2 line urdu poetry romantic sms, ahmad faraz poetry, poetry about life in urdu, urdu words for poetry, urdu poetry copy paste, urdu poetry in english, ahmad faraz shayari, bewafa shayari urdu, love poetry in urdu 2 lines, urdu ghazal poetry, poetry in urdu 2 lines deep sad lines in urdu, faraz shayari, urdu words for shayari, urdu sad poetry sms in urdu writing, dard poetry, happy poetry in urdu, urdu love poetry for her, faraz poetry, ali zaryoun shayari, shayari in urdu words, very sad shayari urdu, ishq poetry in urdu, urdu shayari images, 2 lines poetry, new poetry in urdu, urdu poetry in hindi, urdu poetry lines, one line poetry in urdu, poetry on beauty in urdu, one line poetry in urdu text, muskurahat poetry, sad poetry in urdu 2 lines without images, mohabbat poetry in urdu, nice poetry in urdu, best love poetry in urdu, muhabbat poetry in urdu, best lines in urdu, deep love poetry in urdu, beautiful shayari in urdu, urdu sad poetry sms, novel urdu adab, urdu digests, raja gidh, urdu novels list, raqs e bismil novel, novels in urdu pdf, urdu books, best urdu novels, famous urdu novels, free urdu digest, naseem hijazi, best urdu novels list, raja gidh pdf, urdu books library, new urdu novels, jangloos, list of urdu books, urdu story books, bano qudsia books, pdf urdu books, famous urdu novels list, best pakistani novels in urdu, urdu stories pdf, naseem hijazi novels, urdu novels online, udaas naslain, best urdu novels pdf, latest urdu novels, short novels in urdu,, romantic story urdu, urdu best books, best urdu books to read, pakeeza anchal online reading, ismat chughtai books, urdu digest novels, urdu books online, urdu literature books, islamic books urdu, udas naslain pdf, urdu poetry books, urdu novel online reading, jasoosi digest, novel novels in urdu, urdu audio books, top urdu novels, romance novel best novels in urdu, wasif ali wasif books pdf, urdu language books pdf, tahir javed mughal novels, urdu digest pdf, naseem hijazi books, best books to read in urdu, ashfaq ahmed books pdf, dastak novel, a hameed novels, psychology books in urdu, bano qudsia novels, pakeeza anchal romantic novel, pyasa sawan novel, free urdu novels, anchal digest novels, raqs bismil nove,l urdu poetry books pdf, new novel 2021 in urdu, urdu novels 2021, love story novel in urdu, urdu history books, raja gidh read online, jasoosi novel, urdu love novels list, pakistani novels in urdu, urdu historical novels, romance novel famous urdu novels list, romance novel urdu novels list urdu poetry, urdu shayari, sad poetry in urdu love poetry in urdu jaun elia allama iqbal poetry poetry in urdu 2 lines urdu shayri sad poetry in urdu 2 lines ahmad faraz ghalib shayari attitude poetry in urdu sad quotes in urdu funny poetry in urdu romantic poetry in urdu allama iqbal shayari best poetry in urdu bewafa poetry sad shayari urdu islamic poetry in urdu barish poetry poetry in urdu attitude ghalib poetry allama iqbal poetry in urdu attitude quotes in urdu poetry in urdu text deep poetry in urdu sad poetry in urdu text love shayari urdu ghazal in urdu urdu poetry in urdu text mirza ghalib shayari love poetry in urdu romantic urdu shayari on life rekhta shayari jaun elia poetry iqbal shayari deep lines in urdu sad love poetry in urdu urdu poetry sms best shayari in urdu death poetry in urdu funny shayari in urdu dosti poetry in urdu father quotes in urdu birthday poetry in urdu poetry status eid poetry Hajoom e tanhai poetry, Vaiza zaidi poetry, jaun elia shayari, urdu poetry text copy, attitude poetry in urdu 2 lines text, urdu shayari in english, shero shayari urdu, munafiq poetry, mirza ghalib poetry, romantic shayari in urdu, allama iqbal ki shayari, heart touching poetry in urdu 2 lines sms, poetry in urdu 2 lines attitude, john elia sad poetry, sad poetry sms in urdu 2 lines text messages, john elia shayari, 2 line urdu poetry copy paste, dukhi poetry, heart touching quotes in urdu, mohsin naqvi poetry, beautiful poetry in urdu, udas poetry, friendship poetry in urdu, muhabbat poetry, urdu sher, one line quotes in urdu, dosti shayari urdu, sad poetry status, narazgi poetry, judai poetry, ghalib shayari in urdu, faiz ahmad faiz shayari, barish poetry in urdu, urdu one line caption copy paste, wasi shah poetry, most romantic love poetry in urdu, khamoshi poetry, love poetry in urdu text, sad poetry sms in urdu 2 lines, sad poetry in urdu 2 lines about life, urdu poetry status, islamic poetry in urdu 2 lines, jon elia poetry, funny poetry in urdu for friends, attitude shayari in urdu, allama iqbal poetry in urdu for students, Zawwar haider poetry, mohabbat shayari urdu, jaun elia sad poetry, sad poetry sms, urdu poetry written, urdu novels,urdu novels, urdu poetry, urdu afsanay, urdu statuses, urdu shayari, sad poetry in urdu, love poetry in urdu, poetry in urdu 2 lines, urdu shayri, sad poetry in urdu 2 lines, ahmad faraz, romantic poetry in urdu, best poetry in urdu, bewafa poetry, sad shayari urdu, barish poetry, poetry in urdu text, deep poetry in urdu, sad poetry in urdu text, love shayari urdu, ghazal in urdu, urdu poetry in urdu text, love poetry in urdu romantic, urdu shayari on life, deep lines in urdu, sad love poetry in urdu, urdu poetry sms, best shayari in urdu, very sad poetry in urdu images, novels in urdu pdf, urdu books, bewafa poetry in urdu, best urdu novels, urdu poetry text copy, urdu shayari in english, shero shayari urdu, romantic shayari in urdu, heart touching poetry in urdu 2 lines sms, sad poetry sms in urdu 2 lines text messages, 2 line urdu poetry copy paste, famous urdu novels, beautiful poetry in urdu, udas poetry, muhabbat poetry, urdu sher, barish poetry in urdu, most romantic love poetry in urdu, khamoshi poetry, love poetry in urdu text, sad poetry sms in urdu 2 lines, sad poetry in urdu 2 lines about life, ahmed faraz poetry, mohabbat shayari urdu, sad poetry sms, urdu poetry written, love poetry in urdu romantic 2 line, attitude poetry in urdu text, heart touching poetry in urdu, sad ghazal in urdu, 2 line urdu poetry romantic sms, ahmad faraz poetry, poetry about life in urdu, urdu words for poetry, urdu poetry copy paste, urdu poetry in english, ahmad faraz shayari, bewafa shayari urdu, love poetry in urdu 2 lines, urdu ghazal poetry, poetry in urdu 2 lines deep sad lines in urdu, faraz shayari, urdu words for shayari, urdu sad poetry sms in urdu writing, dard poetry, happy poetry in urdu, urdu love poetry for her, faraz poetry, ali zaryoun shayari, shayari in urdu words, very sad shayari urdu, ishq poetry in urdu, urdu shayari images, 2 lines poetry, new poetry in urdu, urdu poetry in hindi, urdu poetry lines, one line poetry in urdu, poetry on beauty in urdu, one line poetry in urdu text, muskurahat poetry, sad poetry in urdu 2 lines without images, mohabbat poetry in urdu, nice poetry in urdu, best love poetry in urdu, muhabbat poetry in urdu, best lines in urdu, deep love poetry in urdu, beautiful shayari in urdu, urdu sad poetry sms, Novel urdu adab, urdu digests, raja gidh, urdu novels list, raqs e bismil novel, novels in urdu pdf, urdu books, best urdu novels, famous urdu novels, free urdu digest, naseem hijazi, best urdu novels list, raja gidh pdf, urdu books library, new urdu novels, jangloos, list of urdu books, urdu story books, bano qudsia books, pdf urdu books, famous urdu novels list, best pakistani novels in urdu, urdu stories pdf, naseem hijazi novels, urdu novels online, udaas naslain, best urdu novels pdf, latest urdu novels, short novels in urdu,, romantic story urdu, urdu best books, best urdu books to read, pakeeza anchal online reading, ismat chughtai books, urdu digest novels, urdu books online, urdu literature books, islamic books urdu, udas naslain pdf, urdu poetry books, urdu novel online reading, jasoosi digest, novel novels in urdu, urdu audio books, top urdu novels, romance novel best novels in urdu, wasif ali wasif books pdf, urdu language books pdf, tahir javed mughal novels, urdu digest pdf, naseem hijazi books, best books to read in urdu, ashfaq ahmed books pdf, dastak novel, a hameed novels, psychology books in urdu, bano qudsia novels, pakeeza anchal romantic novel, pyasa sawan novel, free urdu novels, anchal digest novels, raqs bismil nove,l urdu poetry books pdf, new novel 2021 in urdu, urdu novels 2021, love story novel in urdu, urdu history books, raja gidh read online, jasoosi novel, urdu love novels list, pakistani novels in urdu, urdu historical novels, romance novel famous urdu novels list, romance novel urdu novels list urdu poetry, urdu shayari, sad poetry in urdu love poetry in urdu jaun elia allama iqbal poetry poetry in urdu 2 lines urdu shayri sad poetry in urdu 2 lines ahmad faraz ghalib shayari attitude poetry in urdu sad quotes in urdu funny poetry in urdu romantic poetry in urdu allama iqbal shayari best poetry in urdu bewafa poetry sad shayari urdu islamic poetry in urdu barish poetry poetry in urdu attitude ghalib poetry allama iqbal poetry in urdu attitude quotes in urdu poetry in urdu text deep poetry in urdu sad poetry in urdu text love shayari urdu ghazal in urdu urdu poetry in urdu text mirza ghalib shayari love poetry in urdu romantic urdu shayari on life rekhta shayari jaun elia poetry iqbal shayari deep lines in urdu sad love poetry in urdu urdu poetry sms best shayari in urdu death poetry in urdu funny shayari in urdu dosti poetry in urdu father quotes in urdu birthday poetry in urdu poetry status eid poetry Hajoom e tanhai poetry, Vaiza zaidi poetry, jaun elia shayari, urdu poetry text copy, attitude poetry in urdu 2 lines text, urdu shayari in english, shero shayari urdu, munafiq poetry, mirza ghalib poetry, romantic shayari in urdu, allama iqbal ki shayari, heart touching poetry in urdu 2 lines sms, poetry in urdu 2 lines attitude, john elia sad poetry, sad poetry sms in urdu 2 lines text messages, john elia shayari, 2 line urdu poetry copy paste, dukhi poetry, heart touching quotes in urdu, mohsin naqvi poetry, beautiful poetry in urdu, udas poetry, friendship poetry in urdu, muhabbat poetry, urdu sher, one line quotes in urdu, dosti shayari urdu, sad poetry status, narazgi poetry, judai poetry, ghalib shayari in urdu, faiz ahmad faiz shayari, barish poetry in urdu, urdu one line caption copy paste, wasi shah poetry, most romantic love poetry in urdu, khamoshi poetry, love poetry in urdu text, sad poetry sms in urdu 2 lines, sad poetry in urdu 2 lines about life, urdu poetry status, islamic poetry in urdu 2 lines, jon elia poetry, funny poetry in urdu for friends, attitude shayari in urdu, allama iqbal poetry in urdu for students, Zawwar haider poetry, mohabbat shayari urdu, jaun elia sad poetry, sad poetry sms, urdu poetry written, urdu novels,urdu novels, urdu poetry, urdu afsanay, urdu statuses, urdu shayari, sad poetry in urdu, love poetry in urdu, poetry in urdu 2 lines, urdu shayri, sad poetry in urdu 2 lines, ahmad faraz, romantic poetry in urdu, best poetry in urdu, bewafa poetry, sad shayari urdu, barish poetry, poetry in urdu text, deep poetry in urdu, sad poetry in urdu text, love shayari urdu, ghazal in urdu, urdu poetry in urdu text, love poetry in urdu romantic, urdu shayari on life, deep lines in urdu, sad love poetry in urdu, urdu poetry sms, best shayari in urdu, very sad poetry in urdu images, novels in urdu pdf, urdu books, bewafa poetry in urdu, best urdu novels, urdu poetry text copy, urdu shayari in english, shero shayari urdu, romantic shayari in urdu, heart touching poetry in urdu 2 lines sms, sad poetry sms in urdu 2 lines text messages, 2 line urdu poetry copy paste, famous urdu novels, beautiful poetry in urdu, udas poetry, muhabbat poetry, urdu sher, barish poetry in urdu, most romantic love poetry in urdu, khamoshi poetry, love poetry in urdu text, sad poetry sms in urdu 2 lines, sad poetry in urdu 2 lines about life, ahmed faraz poetry, mohabbat shayari urdu, sad poetry sms, urdu poetry written, love poetry in urdu romantic 2 line, attitude poetry in urdu text, heart touching poetry in urdu, sad ghazal in urdu, 2 line urdu poetry romantic sms, ahmad faraz poetry, poetry about life in urdu, urdu words for poetry, urdu poetry copy paste, urdu poetry in english, ahmad faraz shayari, bewafa shayari urdu, love poetry in urdu 2 lines, urdu ghazal poetry, poetry in urdu 2 lines deep sad lines in urdu, faraz shayari, urdu words for shayari, urdu sad poetry sms in urdu writing, dard poetry, happy poetry in urdu, urdu love poetry for her, faraz poetry, ali zaryoun shayari, shayari in urdu words, very sad shayari urdu, ishq poetry in urdu, urdu shayari images, 2 lines poetry, new poetry in urdu, urdu poetry in hindi, urdu poetry lines, one line poetry in urdu, poetry on beauty in urdu, one line poetry in urdu text, muskurahat poetry, sad poetry in urdu 2 lines without images, mohabbat poetry in urdu, nice poetry in urdu, best love poetry in urdu, muhabbat poetry in urdu, best lines in urdu, deep love poetry in urdu, beautiful shayari in urdu, urdu sad poetry sms, novel urdu adab, urdu digests, raja gidh, urdu novels list, raqs e bismil novel, novels in urdu pdf, urdu books, best urdu novels, famous urdu novels, free urdu digest, naseem hijazi, best urdu novels list, raja gidh pdf, urdu books library, new urdu novels, jangloos, list of urdu books, urdu story books, bano qudsia books, pdf urdu books, famous urdu novels list, best pakistani novels in urdu, urdu stories pdf, naseem hijazi novels, urdu novels online, udaas naslain, best urdu novels pdf, latest urdu novels, short novels in urdu,, romantic story urdu, urdu best books, best urdu books to read, pakeeza anchal online reading, ismat chughtai books, urdu digest novels, urdu books online, urdu literature books, islamic books urdu, udas naslain pdf, urdu poetry books, urdu novel online reading, jasoosi digest, novel novels in urdu, urdu audio books, top urdu novels, romance novel best novels in urdu, wasif ali wasif books pdf, urdu language books pdf, tahir javed mughal novels, urdu digest pdf, naseem hijazi books, best books to read in urdu, ashfaq ahmed books pdf, dastak novel, a hameed novels, psychology books in urdu, bano qudsia novels, pakeeza anchal romantic novel, pyasa sawan novel, free urdu novels, anchal digest novels, raqs bismil nove,l urdu poetry books pdf, new novel 2021 in urdu, urdu novels 2021, love story novel in urdu, urdu history books, raja gidh read online, jasoosi novel, urdu love novels list, pakistani novels in urdu, urdu historical novels, romance novel famous urdu novels list, romance novel urdu novels list kdrama urdu, Desi kimchi, Desi kdrama fans, Urdu kdrama, Urdu web, Kdrama maza, Korean masti, korean dramas, kdrama, k drama, best korean drama, korean drama 2020, korean drama 2021, kdrama 2021 best kdrama, korean series, kdramas to watch, korean drama website, kdrama website, netflix korean drama, asian drama, best korean drama 2020, top korean drama, new korean drama 2021, best korean drama 2021, best kdrama 2020, best kdrama to watch, best korean drama on netflix, best korean series, best kdrama 2021, kdrama netflix, k drama urdu, www korean drama, watch korean drama, best k dramas on netflix, netflix korean drama 2021, best kdrama on netflix, new korean drama, www kdrama, k drama 2021, korean series on netflix, netflix korean drama 2020, top 10 korean drama, top kdrama, top korean drama 2020, k dramas to watch, 2021 korean drama, korean drama series, best korean series on netflix, new kdrama 2021, 2020 kdrama, 2020 korean drama, 2021 kdrama, k drama netflix, best k drama to watch, romance kdrama, k drama 2020, new korean drama 2020, latest korean drama 2021, korean dramas to watch, top korean drama 2021, watch kdrama, korean tv series, highest rated korean drama, korean drama in hindi, korean drama shows, top kdrama 2021, new kdrama, watch asian drama, popular korean drama, kdrama online, latest korean drama, korean drama online, korean netflix series, korean tv shows, korean shows, must watch kdrama, korean shows on netflix, famous korean dramas, romance korean drama, top kdrama 2020, most popular korean drama, korean series 2021, must watch korean drama, new kdrama 2020, best romance kdrama, popular kdrama, good kdramas, korean drama in hindi dubbed, korean series 2020, kdramas 2020, best korean shows on netflix, korean drama 2021 netflix, top k dramas, top rated korean drama, watch kdrama online, korean romance, top korean series, netflix k drama, good korean dramas, latest kdrama 2021, most watched korean drama, top 10 kdrama, famous kdrama, all in korean drama, best k drama 2020, urdu adab, urdu digests, raja gidh, urdu novels list, raqs e bismil novel, novels in urdu pdf, urdu books, best urdu novels, famous urdu novels, free urdu digest, naseem hijazi, best urdu novels list, raja gidh pdf, urdu books library, new urdu novels, jangloos, list of urdu books, urdu story books, bano qudsia books, pdf urdu books, famous urdu novels list, best pakistani novels in urdu, urdu stories pdf, naseem hijazi novels, urdu novels online, udaas naslain, best urdu novels pdf, latest urdu novels, short novels in urdu,, romantic story urdu, urdu best books, best urdu books to read, pakeeza anchal online reading, ismat chughtai books, urdu digest novels, urdu books online, urdu literature books, pakeeza anchal, l online reading, pakeeza anchal novel online reading, urdu novel bank, urdu novel platform, yaar zinda sohbat baqi, desi story urdu,urdu web novel salam korea **Salam Korea: Aik aisa rishta jo aap ko kore aur pakistan ki saqafat se aashna karaye ga.** (Salam Korea: A relationship that will introduce you to the culture of Korea and Pakistan.)

Salam Korea: Aik aisi kahani jo aap ko kore ki sair karaye gi.

(Salam Korea: A story that will take you on a tour of Korea.)


by vaiza zaidi

Salam Korea Episode 37


قسط 37
پی اے اسے ایک بڑے سے ہال تک پہنچا گیا تھا۔ جانے کتنے منزلہ ہوٹل تھا یہ۔ یہاں کی دنیا ہی الگ تھی۔ چمچوں کی کھنک خوش گپیوں کی ہلکی سی آوازیں دھیمے بجتے آرکسٹرا مدھم روشنیاں۔ بڑے سے ہال میں ایک بڑی کانفرنس میز پر اس وقت دلہا دلہن کے ساتھ لی اور کم خاندان کے لوگ بیٹھے تھے۔وہ جھجک کر دروازے کے پاس ہی رک گئ۔ سامنے ہی ہیون کے والد اور انکے بائیں جانب والدہ بیٹھی تھیں۔
ہیون کسی لڑکی کے ساتھ کچھ فاصلے پرمیز کرسی پر بیٹھا باتیں کر رہا تھا۔ اسکی طرف ہیون متوجہ نہیں تھا اسکا بس ایک ہی رخ نظر آرہاتھا اسے۔ کم صاحب سے بات کرتے یونہی ہیون کے والد نے سامنے دیکھا تو سیدھا اسی پر نظر پڑی۔ اسکو دیکھ کر لی بری طرح چونکے تھے۔ گنگشن بھی اسی کانفرنس میز پر ہی بیٹھئ تھیں۔ انکی پی اے نے اسکی آمد کے بارے میں بتایا تو فورا مڑ کر اسے دیکھنے لگیں پھر اسے دیکھ کر اپنی جگہ سے اٹھ کر اسکے پاس آئی تھیں۔
آئو اریزہ یہاں کیوں کھڑی ہو۔
قصدا اونچئ آواز میں کہتی وہ اسکا ہاتھ تھام کر اسے اپنے ساتھ ہی لے آئیں۔ ایک لمحے کیلئے سب انکی جانب متوجہ ہوئے تھے۔ انی کے برابر ہی میں انکے شوہر بھی بیٹھے تھے انہوں نے اپنے باپ کی چبھتی نگاہوں کو بالکل نظر انداز کیا اور جیسے بہت اشتیاق سے اسے اپنے شوہر سے ملوانے لگیں۔
یوبو( جان) یہ ہے میری خاص الخاص مہمان اریزہ
من جون کھانا کھا رہے تھے اسکے اعزاز میں اٹھ کر کھڑے ہوگئے۔
اس نے دھیرے سے سر جھکا کر آننیانگ کہا تو جوابا وہ بھئ جھک کر سلام کرنے لگے۔
یہ فی الحال تو میری بہن سمجھیں مگر جلد ہی یہ ہمارے خاندان کا اہم حصہ بننے والی ہے۔
ہمارے ہیون کی نسبت سے۔
وہ ٹھیٹھ ہنگل میں بولی تھیں جس طرح سامنے بیٹھے ہیون کی جانب مسکرا کر دیکھ کر کہا تھا سب کو انکی بات سیاق و سباق کے ساتھ سمجھ آگئ تھئ۔ چمچوں چاپ اسٹکس کی آواز واضح طو رپر لمحہ بھر کے لیئے تھمی تھی۔ اریزہ مکمل بات نہ سمجھتے ہوئے بھئ ایکدم چھا جانے والی اس خاموشی کو محسوس کیئے بنا نہ رہ سکی۔ ہیون انی کی آواز پر متوجہ ہوا تھا او راعلان پر اسے کھڑا ہونا پڑا تھا۔ سارا نے خاصا حیران ہو کر اپنے برابر کھڑے ہیون کی شکل دیکھی تھی۔ ہیون کا چہرہ مکمل سپاٹ تھا اسکے چہرے سے اس بات کی سچائی کو ناپنا خاصا مشکل تھا اس وقت۔ کم از کم سارا کیلئے۔
کرے۔
(واقعی) کم صاحب نے سب سے پہلے مسکرا کر خاصی چبھتی نگاہ لی پر ڈالی تھی جو اس وقت خشمگیں نظروں سے گنگشن کو دیکھ رہے تھے۔
آپ بیٹھئے۔ کھانا کھائیے ہمارے ساتھ۔
من جون نے حتی المقدور گرم جوشی کا مظاہر کیا تھا ۔انہوں نے اپنی نشست چھوڑ دی تھی
اریزہ سبزی خور ہے۔
انی نے مزید شوشا چھوڑا۔
میں نے ہیون اور اسکے لیئے علیحدہ انتظام کیا ہے۔
وہ ایکدم مڑ کر ہیون کی جانب دیکھتے بولی تھیں۔ ہال میں اور بھی بہت سے لوگ مختلف میزوں پر بیٹھے کھانا کھا رہے تھے ۔سارا انکا ماضی الضمیر سمجھ کر اٹھ کھڑی ہوئی
انی مسکرا دیں پھر جیسے کچھ یاد آیا تومن جون کوبتانے لگیں۔
اریزہ کی پسندیدہ ڈش ہے چائنیز فرائیڈ رائس مکمل ویجی ٹیبل آپشنز آپ پوچھ رہے تھے نا یوبو میں نے ویج کیوں منگوایا اپنی اریزہ کیلئے۔
ویٹر ٹرالی بھرے انکے برابر آکھڑا ہوا تو اسے ہیون کی میز کی طرف اشارہ کرکے بولیں۔
اریزہ کیلئے کھانا وہاں لگا دو۔ہیون کے ساتھ۔
سارا کو ہنسی آگئ تھی۔ اس نے مسکرا کر ہیون کو دیکھا۔
تم اب اسکو ہاتھ پکڑ کر یہاں تک نہیں لائوگے۔
ایز یو وش۔
اس نے مسکرا کر کندھے اچکا دیئے۔ اریزہ کے پاس وہ خود چل آکر آیا۔اسوقت دس پندرہ لوگ بیٹھے ہوں گے اس میز پر سب کی نظروں کا وہ مرکز تھی۔ اسکو اپنے ہاتھ پائوں کانپتے محسوس ہورہے تھے۔اسکو آتے دیکھ کر وہ فورا اٹھ کھڑی ہوئی تھی۔ ہیون کی معیت میں وہ سارا کے پاس آئی تو میز پر ویٹر طرح طرح کے کھانے سجا رہا تھا۔
سارا نے اسے دیکھتے ہوئے خیر مقدمی مسکراہٹ چہرے پر سجالی۔
ہائے آئیم سارا۔
اس نے بے تکلفی سے ہاتھ بڑھایا۔ اریزہ نے ہاتھ ملایا اسکے ہاتھ کی لرزش سارا سے چھپی نہ رہ سکی۔
تمہاری وجہ سے جو آج مجھے ہتک محسوس ہوئی ہے اسکا بدلہ ادھار رہا۔ میں اپنے والد کو کیا جواب دوں یہ سوچتی ہوں تم مجھے اس سب کی کیا وضاحت دوگے یہ تم سوچ کے رکھنا۔ کرم۔
وہ ہنگل میں مسکرا مسکرا کر کیا بولی تھی۔
ہیون دھیرے سے مسکرا کر سر ہلا گیا۔
ڈیل۔ اس نے ہاتھ ملانے کیلئے بڑھایا۔ سارا نے خاصا زور سے دبا کر چھوڑا۔
تم سے مل کر خوشی ہوئی ۔
وہ یکسر بدلے انداز میں اریزہ سے انگریزی میں مخاطب ہوئئ۔
مجھے بھئ۔ اریزہ اتنا مدہم آواز میں بولی کہ اسکو اپنی آواز نہ آپائی۔
مجھے ایک اہم فون کال کرنی ہے میں آپ سب میں تھوڑی دیر تک شامل ہوتی ہوں۔
سارانے فون اٹھاکرکان سے لگاتے ہوئے سلیقے سے معزرت کی۔
سارا کا باپ اسے خاصی گہری نگاہوں سے دیکھ رہا تھا۔ اس نے آنکھوں کے اشارے سے انہیں کھانا جاری رکھنے کا کہا۔ وہ مزید رکی نہیں ہال سے بھی باہر چلی گئ
اسکو جاتے دیکھ کر انی کو جیسے اپنے شانے پر سے بوجھ ہٹتا محسوس ہوا تھا۔ ایکدم ہلکی پھلکی ہو کر مسکرا دیں۔
من جون نے انکے شاداں وفرحاں انداز کو محسوس کیا ۔ انکی گہری نگاہیں ہیون اور اریزہ پر جا ٹکی تھیں
کھانا سرو ہو چکا تھا۔ اس نے اریزہ کیلئے کرسی گھسیٹ کر پہلے اسے بٹھایا پھر خود اسکے مقابل آن بیٹھا۔
بہت پیاری لگ رہی ہو۔ مجھے اندازہ نہیں تھا تم مغربی لباس میں بھی اتنی ہی اچھی لگ سکتی ہو جتنی اپنے مقامی لباس میں لگتی تھیں۔
اس کو گہری نگاہوں میں رکھتے ہوئے ہیون نے کہا تھا۔
دے؟ وہ حیرانی سے اسکی شکل دیکھنے لگی۔
کبھی تم ہنبق پہن کر دکھانا مجھے لگتا وہ بھی بہت جچے گا تم پر۔کسی کوریائی شہزادی جیسا لباس۔اطمینان سے بات مکمل کی تھی اس نے۔
چینئ فرائیڈ رائس اسکے سامنے پیش کر دیئے گئے تھے ساتھ بیکڈ سبزیاں سوپ اور جانے کیا کیا۔ اس کے پاس کوئی چارہ نہ تھا سوائے اسکے کہ تھوڑے سے چاول پلیٹ میں نکال لے۔
ابھی تھوڑی دیر پہلے جو چاول کھائے تھے اس سے ذائقے میں دس گنا بہتر یہ سب چیزیں تھیں
ہیون نے اسکی پلیٹ میں خود اپنے ہاتھوں سے اسکی نا نا کے باوجود چیزیں ڈالی تھیں۔

تمہیں بالکل ڈائٹنگ کی ضرورت نہیں ہے۔ یہ خاص طور پر تمہاری پسند کے مطابق بنوائی گئ ہیں۔ ویسے بھی تم کافی دبلی ہوتی جا رہی ہو اور مجھے تم موٹی ہو یا پتلی اس سے فرق نہیں پڑتا۔
اسکو دیکھتے وہ جو زبان بول رہا تھا وہ نا ہنگل تھی نا انگریزی۔ انتہائئ شستہ دھیمے انداز میں وہ اسکو جزب سے دیکھتا کہہ رہا تھا۔
اسکو اپنے گال تپتے محسوس ہوئے۔
واٹ ڈڈ یو جسٹ سے؟ ( تم نے کیا کہا ابھی)
کیا؟ ۔۔۔ہیون زرا سا رخ اسکی جانب جھکایا جیسے کان لگا کر سننا چاہتا ہو۔
اس نے اس پھر دہرایا۔
اسکے منہ سے سرسراتی آواز نکلی تھی۔ اتنی دھیمی کہ ہیون کو بمشکل سنائی دی۔ وہ یوں ذرا سا ہنسا جیسے اس نے کوئی بہت دلچسپ سی بات کی ہو۔
پھر مسکرا کر بولا۔
جانے دو کیا کروگی جان کر چاہے جس بھی وجہ سے سہی مگر آج پہلی بار تم میرے قریب بیٹھی ہو فی الحال یہی بہت ہے میرے لیئے۔ کھانا کھائو۔ عجیب بات ہے مگر میں خوش ہوں۔
وہ اسی زبان میں بولتا گیا۔ اریزہ کی آنکھیں تھوڑی مزید بڑی ہوئیں۔
وہ اب یوں دیکھ رہا تھا جیسے کوئی بات کرنے کے بعد جواب طلب نظروں سے دیکھا جاتا ہے۔
اس نے مسکرا کر رخ سیدھا کیا۔ بنا دیکھے بھی اس وقت اسے اندازہ تھا سب اسے ہی دیکھ رہے ہیں۔ تھوک نگل کر پھر اسی زبان میں بولی جو اسے آتی تھئ۔
کیا کہہ رہے ہو ہیون کے بچے ایک لفظ پلے نہیں پڑ رہا میرے۔۔ اتنا تو پتہ ہے یہ کوئی اور زبان ہے۔ خیر اسوقت تو تم انگریزی بھی بولو تو شائد سمجھ نہ آئے مجھے۔
خدایا کہاں پھنس گئ میں۔
اس نے بات کرنے کے انداز میں بڑبڑا کر پہلا چمچ لیا۔۔ بھرے پیٹ نے دہائی دی تھی۔ مگر ماننے والی بات تھی ذائقہ اچھا تھا۔
پکا صبح پیٹ خراب ہونا میرا۔۔
اس بار وہ قصدا بڑبڑائی تھی تاکہ ہیون کہ سماعتیں محفوظ رہیں
ہیون کیلئے اسکی بڑ بڑ نئی نہ تھی مگر اس جواب نے کچھ سمجھ نہ آتے بھی اتنا سمجھا دیا تھا کہ اریزہ کی اور اسکی ذہنی لہریں ایک ہی فریکوئنسی پر کام کرتی ہیں۔
4hkaH5TU7iSG9YdZ4FtLt69e9RCE41PF8c6x375LZeHC۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
گاڑی پارکنگ سے نکالتے اس نے ایک نظر اس پر ڈالی پھر مسکراہٹ دبا کربولا
کین چھنا۔
کین چھنا۔۔ اس نے بھنوئیں اچکائیں۔
پھر ڈولتی آواز میں بولی۔
واٹ کین چھنا۔۔آئی ایم ڈائینگ ایکسٹریم پین ہے۔۔
درد کے مارے انگریزی ختم ہوگئ۔
دنیا گول گھوم رہی ہے میری۔ چاول ناچ رہے ہیں میری آنکھوں کے سامنے۔ ۔
ایکدم کھانسی سی آئی۔
کھانا حلق میں آتے آتے رہ گیا۔ حلق مرچیلا ہوگیا۔ آنکھوں میں مرچوں کے مارے آنسو آگئے۔
نہیں پیٹ میں ہی ناچ رہے ہیں۔
اس نے پیٹ پر ہاتھ رکھا۔ہیون نے مسکراتی نگاہوں سے دیکھا اسے۔
وہ سیٹ پر بیٹھی نہیں تقریبا دراز ہی تھی۔ پیٹ لگ رہا تھا پھٹ جائے گا۔ اندر سے کوئی تولیہ کی طرح آنتیں مروڑ رہا تھا۔
آہ۔ دوبارہ ایسا ہی محسوس ہوا۔
نیچے رہو۔۔اوپر مت آئو۔کھانے۔
اس نے غصے سے دیکھنا چاہا۔ آنکھوں سے آنسو نکل آئے تھے۔
اگر میں مر گئ تو انی کو میں معاف نہیں کروں گئ۔ ں زبان دبائی۔
ٹیچر کو کمینہ نہیں کہنا چاہیئے۔۔ اس نے سر کھجایا۔
آہ۔
اس نے کوشش کرکے سیدھا ہونا چاہا۔ درد کی لہریں اٹھ رہی تھیں۔ سن شیڈ نیچے کرکے اسکے پیچھے لگے آئینے میں خود کو دیکھنے لگی۔ پھر جیسے بے دم ہو کر واپس سیٹ پر گری۔
پوری آستینیں ہیں۔۔ زمین پر گھسیٹتا گائون پہنا ہوا ہے۔۔اور میرے کپڑے ۔۔

بولتے بولتے لگا الٹی آنے لگی تو فورا کھڑکی کھول کر باہر سر نکال دیا۔
ڈرائو کرتے ہیون کی جان نکلنے لگی۔
اریزہ پاگل ہو گئ ہو؟ پیچھے ہو ۔کیا کررہی ہو۔ بند کرو کھڑکی۔
کچھ نہیں۔
وہ نفی میں سر ہلاتی واپس ہوئی۔
کچھ نہیں کر سکی۔آئی نہیں الٹی۔
آہ۔ اس نے ہلکا سا مکا مارا سینے پر۔
کیا بول رہی ہو ؟ کیاہوا ہےاگر تم انگریزی میں بتائو اپنے درد تو شائد میں بانٹ سکوں۔
وہ بے چارگی سے بولا۔ اسکا دبا ہوا غصہ عود کر آیا۔
کیوں بولوں انگریزی۔ اردو میں ہی بولوں گی ۔۔۔۔
پاگل بنایا مجھے۔۔۔۔ہچکی
سب میرے سامنے ہنگل بولتے رہے ۔۔۔ چلو وہ تو۔۔۔ہچکی۔
ٹھیک ہے مجھے سمجھ نہیں آرہی تھی میرا مسلئہ تم کیا بول رہے تھے پکا وہ۔۔۔
ہچکی۔ ۔۔ ہن۔ ہچکی۔ ہنگل۔۔ ہنگل نہیں تھی۔
درد کے مارے انگریزی پہلے ہی بھول گئ تھی۔غصے کے مارے اعلان بھی کردیا انگریزی نہ بولنے کا۔ ہیون کان دبا کر خاموشی سے ڈرائئو کرنے لگا۔
کھڑکی کا شیشہ پھر اوپر ہو گیا تھا۔ہیون نے سکھ کا سانس لیا۔
چند لمحے گزرے پھر کھڑکی کا شیشہ۔۔۔۔
یہ کھڑکی جو بار بار اوپر نیچے کررہی ہو اندر ہیٹر آن ہے۔
وہ جھلایا نہیں تھا رسان سے بتا رہا تھا۔
ہاں تو اچھا ہے سردی لگے۔ گاڑی کے اندر الٹی کردوں۔
وہ جوابا بگڑ کر بولی۔ پھر دانت کچکچا کر مزید گھورا
ویسے دل یہی کر رہا ہے ۔
ہیون کو اسکی بات سمجھ نہ آئی تو گہری سانس لیکر ہیٹر بند کردیا۔
شیشہ پھر اوپر ہونے لگا۔
ویسے مجھے لگتا تھا میں بھول چکا ہوں رشین۔ کافی عرصے بعد نکلی میرے منہ سے مگر درست نکلی ہے۔ ہنگل تو تم سیکھنے لگی ہو سورشین اچھا آپشن ہے۔ کبھی تم سے جھگڑا ہوا بھی تو رشین میں جو چاہے کہہ سکتا ہوں۔ یہ بھی کہ میں تم سے واقعی پیار کرنے لگا ہوں۔ تمہیں کبھی مجھ سے ہلکی سی بھی محبت محسوس نہیں ہوئی۔
موڑ کاٹتے اس نے شکوہ کناں نگاہوں سے دیکھا۔
پھر شروع۔
اس نے ناک چڑھا کر گھورا۔رخ بدلا آئینے پر نگاہ گئ۔
اتنی پیاری لگ رہی تھی بس جو گھر میں تصویریں لیں بس وہی ہیں۔ جانے گوارا کہاں غائب ہوگئ تھی آہ۔۔ کراہ کر پہلو بدلا۔
نظر لگ گئ سب گھور کم رہے تھے۔ آہ۔۔ امی ہوتیں تو۔ مرچیں وارتیں سات۔
کھڑکی پھر تھوڑی نیچے ہوئی۔
پتہ نہیں کیا معیار ہے اونچا۔ کیا کمی ہے مجھ میں۔شکل و صورت کا بھی ٹھیک ہوں۔
اس نے بیک ویو مرر میں دیکھا۔
اتنا توپاکستانی لڑکیاں آئینہ نہیں دیکھتیں جتنا یہاں کے لڑکے۔
گاڑی کی رفتار کم ہوئی تھی۔اس نے چڑ کر اسے آئینہ دیکھتے دیکھا۔ ظاہر ہے آئینہ فل اسپیڈ میں گاڑئ چلاتے تو نہیں دیکھا جاسکتا تھا۔
ہیون نے ترچھی نگاہ ڈالی تو اس نے نظروں کا ذاویہ بدلا نگاہ اپنے سامنے سن شیڈ کے آئینے میں جھلکتے اپنے عکس پر پڑگئ۔
پاکستانئ ہو یہی تو مسلئہ۔ ملک کے دو بڑے انڈسٹرلیٹس کے ساتھ کھانا تھا کوئی کورین لڑکی ہوتی تو خوشی سے پھولے نہ سماتی۔ ایک ارب پتی گھرانے کی ہونے والی بہو کے طور پر متعارف کرائے جانے پر۔ اور تم۔
وہ دیکھ سامنے رہا تھا بول اس سے رہا تھا۔
پیدل اتر کر چلوں تو جلدی پہنچ جائوں۔ جان کے تپا رہا مجھے۔ اتنا درد ہو رہا۔ امی۔
اسکے درد کے مارے سچ مچ آنکھوں سے آنسو بہہ نکلے۔
مگر تم شائد نہیں جانتیں انکا تعارف تمہارے لیئے تو بس ہیون ہوں میں۔ لیکن ہیون کیا اتنا عام سا ہے کہ۔
اس نےگاڑی گلئ میں موڑی بولتے بولتے جیسے کوئی گھنٹی سی بجی تھی۔ بے ساختہ بریک پر پائوں پڑا۔ گاڑی جھٹکے سے رکی تھی۔اریزہ سیٹ سے نکل کر ڈیش بورڈ سے ٹکراتے بچی۔تھوڑی سی گاڑی کی رفتار مزید تیز ہوتی تو شاید سر لگتا ونڈ اسکرین سے۔ ابھی بھی اتنے زور کے جھٹکے نے اسکی چیخ نکال دی تھی۔۔
کین چھنا؟ تم نے سیٹ بیلٹ نہیں باندھی تھئ؟ حد ہے یار۔
وہ فکرمندی سے جھلاگیا تھا۔اریزہ نے تنک کر گھورا
ان جملوں کا مطلب کس زبان میں مجھے معاف کردو بنتا؟
بیان۔ وہ فورا ہوش میں جیسے آکر معزرت کرنے لگا۔
پیٹ میں اینٹھن ہے میری او رمیں سیٹ بیلٹ لگاتی۔ کیسے بھلا۔
اسے انگریزئ میں بتا کروہ پیٹ پکڑ کر دہری ہوگئ اتنا شدید درد اٹھا تھا۔کہ رو ہی پڑی۔
اریزہ کیا ہوا کین چھنا؟
وہ بری طرح گھبراگیا۔
اس نے چہرہ اٹھا کر دیکھا تو منہ سرخ ہو چکا تھا آنکھوں سے آنسو بہہ رہے تھے۔
میں نے کچھ ذیادہ کھا لیا آج۔
اس نے اتنی بے چارگئ سے کہا تھا کہ ہیون کو روکتے روکتے بھی ہنسی آگئ۔
ہاں اور ہنسو۔ ( اردو)
اسکا ہنسنا زہر لگا تھا اسے۔وہ خفا ہوگئی تھئ۔
4hkaH5TU7iSG9YdZ4FtLt69e9RCE41PF8c6x375LZeHC۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
فارمیسی سے دوا لیتے اسکا چہرہ سرخ ہو رہا تھا۔ وہ دانت پر سختی سے دانت جمائے تھا۔
کائونٹر پر موجود لڑکے نے ازراہ ہمدردی اسے دیکھتے ہوئے کہا۔
آپ کی تو کافی طبیعت خراب لگتی ہے۔یہ سلوشن پانی میں حل کرکے فوری پی لیجئے۔۔۔اس سے الٹی ہو جائے گی پھر یہ دوا پی لیجئے گا۔
اس نے دوائیاں اور پانی کی بوتل اسکو تھمائی۔ ہیون نے کارڈ سے پیسے ادا کیئے شکریہ اداکرکے باہر نکل آیا۔ سڑک کے دوسری جانب اس نے گاڑی پارک کی ہوئی تھی۔ اس جانب چوڑا فٹ پاتھ بنا ہوا تھا ساتھ ریلنگ بھی لگی تھی کیونکہ یہاں سے نیچےگلی کا کم از کم پندرہ فٹ کا فاصلہ تھا۔ اریزہ گاڑی سے نکل کر فٹ پاتھ کی جانب بونٹ سے ٹکی ہوئی کھڑی تھی۔
بہت سردی ہے تمہیں باہر نہیں نکلنا چاہیئے تھا۔
وہ ٹوکے بنا نہ رہ سکا۔
وہ صرف میکسی پہنے تھی ساتھ کوئی جرسی سوئٹر وغیرہ نہیں تھا۔ جبکہ اس وقت بھی مائنس میں درجہ حرارت جا رہا تھا۔ خود اس نے تو گرم لانگ جیکٹ پہن رکھا تھا۔
مجھے لگ رہا اندر آگ لگی ہے۔ سردی نہیں لگ رہی۔
اسے سچ مچ پسینے آرہے تھے۔ بمشکل ہانپتے ہوئے جملہ مکمل کیا
کیا ہوا ذیادہ طبیعت خراب ہو رہی ہے تو اسپتال چلیں۔
وہ گھبرا گیا۔
دوا لے آئے؟۔
اس نے پوچھا تو وہ سر ہلا کر بونٹ پر شاپر رکھ کر جلدی سے دوا گھول کر بنانے لگا۔ سوڈے کی بوتل کی طرح بلبلے بنے۔ اس نے جلدی سے اسکی جانب بڑھائئ وہ ایک سانس میں پی گئ۔
اس سے ابھی تمہاری طبیعت ٹھیک ہو جائے گی۔
ہیون نے تسلی دی۔ مگر یہ نہیں بتایا کہ کیسے
مجھے سانس نہیں آرہی۔
نیا مسلئہ۔ اسے سچ مچ گھبراہٹ ہونے لگی۔
اپنا سینہ مسلتے ہوئے اسے لگ رہا تھا کلیجہ منہ کو آنے لگا ہے
ہمم۔
ہیون نے سر ہلا کر دوائیں بونٹ پر رکھیں شاپر خالی کرکےاسکی جانب بڑھانے لگا ۔۔
شاپر اس نے پیچھے کردیا۔
مجھے لگ رہا ہے مجھے۔۔
وہ ایکدم تیر کی طرح دوڑی ریلنگ پر جھکی اور ہیون کا شاپر اسکے ہاتھ میں ہی رہ گیا۔
اریزہ۔ وہ جہاں کا تہاں کھڑا رہ گیا۔
اریزہ ریلنگ پر جھکی الٹی کر رہی تھی۔ ایک کافی زور کی ہائش کی آواز آئی تھی۔ ہیون کا بدترین خوف سچ ہو گیا تھا۔
کین چھنا۔
اسکے منہ سے سرسراتی آواز نکلی تھی۔
ہوں۔ اب بہتر ہوں۔ اف اتنی بڑی الٹی آئی مجھے اب بہتر ہے جیسے بوجھ ہلکا ہوگیا۔
وہ سکون سے کہتی پلٹی۔
اسکی یقینا اب بہتر ہو رہی تھئ طبیعت۔
ہیون نے اسے بے یقینئ سے دیکھا۔
کیہہ سکی۔۔ ہائش۔
یہ آوازیں اسے سنائی نہیں دے رہیں۔
ہیون تیزی سے ریلنگ کی طرف بڑھا جلدی سے موبائل کی ٹارچ آن کرکے نیچے جھانکا۔ گھپ اندھیرا تھا ٹارچ کی روشنی نیچے ڈالی۔ تبھی کسی نے ٹارچ کی روشنی اس پر ڈالی۔ وہ کوئی ادھیڑ عمر آہجوشی تھا جس کی کالی سیاہ جیکٹ پر سفید سفید کچھ گرا تھا۔ اسکے ٹارچ کی روشنی ڈالنے پر اب اسے پتہ لگا تھا کہ کہاں سے کیا آیا ہے ۔بکتا جھکتا اسے صلواتیں سنانے لگا۔
چھے سو ہمبندا۔
وہ یہی کہہ سکتا تھا جھک جھک کر کہا
کیا ہوا۔
اسکے معزرت کرنے پراریزہ حیران ہو کر اسکا شانہ ہلا رہی تھی۔ آہجوشی خرافات بکتے تیزی سے سیڑھیاں چڑھنے لگا۔یقینا اب اس گلی سے تیزی سے نکل کر اوپر بھی آنے والا تھا۔
شٹ بھاگو۔
وہ اسکا ہاتھ تھام کر گاڑی کی جانب دوڑا۔
کیا ہوا۔ وہ کچھ نہ سمجھتے ہوئے اسکے ساتھ گھسٹتی چلی گئئ۔
اسکو جلدی سے فرنٹ سیٹ پر بٹھا کر اس نے بھاگ کے آکے گاڑی اسٹارٹ کی آہجوشی سیڑھیاں چڑھ کر بھاگتا اوپر آگیا تھا۔ اس کی گاڑی کی جانب دوڑا اس نے تیزی سے گاڑی یو ٹرن پر لی اس بار جو کثر رہ گئ تھی وہ بونٹ پر رکھی دوائ کی شیشی کے پٹاخ سے زمین پر گرنے اور چھینٹیں اڑانےسے پوری ہوگئ۔
کیہہ سیکی۔۔ تمہارے آبائو اجداد بھی یقینا پیچھے سے سور کی نسل سے ہوں گے۔
غصہ ور انکل اس سے بہتر گالی کیا دیتے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
۔ لفٹ میں اسے اب سوچ سوچ کے شرمندگی ہو رہی تھی۔
مجھے لگا تھا نیچے جھاڑیاں ہوں گی۔ تمہیں مجھے بتانا چاہیئے تھا کہ نیچے گلی ہے۔
بیان۔ ہیون نے مسکرا کر غلطی مان لی۔
ان کے سر پر گری تھی؟
تجسس بھی تھا۔ ہیون کو ہنسی آگئ۔
پوچھنا ہے ان سے واپس لے چلوں انکے پاس۔؟
آنی۔ زور زور سے نفی میں سر ہلاتی ہنس دی۔
۔رونے سے اسکا میک اپ اتر چکا تھا۔ ٹشو سے رگڑ رگڑ کر اس نے اپنا چہرہ سرخ کرلیا تھا پھر بھی اس وقت آنکھیں پانڈا سی بن چکی تھیں۔ لباس مسک چکا تھا پھربھئ وہ سیدھا جیسے دل میں اترتی جا رہی تھی۔ لفٹ کے فلور بدل رہے تھے وہ خاموشی سے ان نمبروں نگاہ جمائے تھئ اور وہ اس پر۔ مطلوبہ منزل آچکی تھی۔ لفٹ کا دروازہ کھلا تو وہ سرعت سے بنا اسکی جانب دیکھے اپارٹمنٹ کی جانب بڑھ گئ۔
شکریہ۔ فلیٹ کےدروازے پر لاک کھولتے اسکے ہاتھ کانپ رہے تھے جب اسے پیچھے سے ہیون کی آواز سنائی دی
شکریہ؟ وہ سوالیہ نگاہوں سے مڑ کر دیکھنے لگی۔
Thankyou for comming for eating۔۔۔
with me
(تمہارا شکریہ آنے کیلئے ساتھ کھانے کے لیئے۔)
ود می تک اسکی آواز آہستہ ہوگئ تھی۔
For overeating
ذیادہ کھانے کیلئے۔
اس نے تصحیح کی۔پھر خود بھی سوچ سوچ کر بولی
شکریہ دوا دلانے کیلئے ، آہجوشی سے بچانے کیلئے بھی۔
اسکے شکریئے پر ہیون کی مسکراہٹ پھیکی پڑتی گئ۔
ہاتھ ہلا کر جانے کو مڑ گیا۔ وہ اسے لفٹ میں جاتا دیکھتی رہی اس نے مڑ کر نہیں دیکھا تھا۔ دروازہ کھول کر اندر داخل ہوئی تو اتنی دیر سے جو خود پرضبط سے قابو پایا ہوا تھا اس کی طنابیں چھوٹنے لگیں۔دونوں بازو مسلتے اسکے جیسے دانت بجنے لگے ۔ جلدی سے لائونج کی بتی جلاتی اندر آئی۔ کمرے کا دروازہ بند تھا اس نے احتیاط سے کھول کر بتی جلائی۔ ڈبل بیڈ پر بس ایک ہی وجود دکھائی دیا۔ سر منہ تک کمبل تانے یقینا وہ ہوپ ہی تھی۔ وہ سی سی کرتی جلدی سے الماری سے اپنے گرم کپڑے لیتی بھاگ کے غسل خانے میں گھس گئ۔
4hkaH5TU7iSG9YdZ4FtLt69e9RCE41PF8c6x375LZeHC۔۔۔۔
مسلسل بجتی فون کی گھنٹی سے صبح اسکی آنکھ کھلی تھی۔ کسلمندی سے ٹٹول کر اس نے تکیئے پر سے فون اٹھایا۔
ہیلو۔
صارم تھا۔ اور جو کچھ کہہ رہا تھا اس سے وہ ایکدم اٹھ کر بیٹھ گئ۔
کیا کیا؟ پھر کہو؟
اسے لگا اسے سننے میں کوئی غلط فہمی ہوئی ہے۔
صارم نے گہری سانس لی
سنتھیا کا کچھ پتہ نہیں چل رہا اسکے والد نے ایڈون پر کیس کردیا حبس بے جا کا۔ وہ اس وقت کوریا میں ہیں اور تم سے ملنا چاہتے ہیں۔ تمہارا نیا نمبر انکے پاس نہیں ۔میں نے نمبر نہیں دیا تمہارا مگر وہ ظاہر ہے پولیس کی مدد لیں گے اب بتائو کچھ جانتی ہو کہاں ہے سنتھیا؟
ہاں۔ وہ جھٹ بولی۔ پھر نفی میں سر ہلانے لگی۔
نہیں۔ میرا مطلب ہے ہاں اس نے رابطہ کیا تھا مگر میں نہیں جانتی وہ کہاں ہے بس اتنا پتہ ہے ٹھیک ہے ایڈون کا اس کی گمشدگی میں کوئی ہاتھ نہیں۔
کہاں ہے؟دیکھو اگر تمہیں پتہ ہے تو بتا دو۔ہم خود ان سے بات کر لیں گے۔ وہ جانے کیا کیا کہہ رہے مجھے لگتا ہے تمہیں بالکل ان سے بات نہیں کرنی چاہیئے۔ صارم نے فکر مندی سے کہا۔
کیا کہہ رہے۔ وہ چونکی۔
جانے دو۔ صارم نے سر کھجایا۔
نہیں بتائو نا مجھے۔ انکی بیٹی اپنے منگیتر کے ساتھ جھگڑ کر اپنی مرضی سے غائب ہے اس میں میرا کیا ذکر؟
اسے غصہ آگیا۔
یہی میں بھی کہہ رہا ہوں۔ خالو کو اتنا غصہ آیا تھا کہ ان دونوں میں ہاتھا پائی ہونے لگی تھی کن مشکلوں سے میں نے سنبھالا ہے میں جانتا ہوں۔ تم واپس آجائو کچھ دنوں کیلئے ۔۔
وہ بھڑک ہی اٹھئ۔
ہاں بس یہی آتا ہے۔ میں کیوں واپس آجائوں؟ سنتھیا نہیں مل رہی کوریا میں سو میں واپس آجائوں۔ کوئی رشتہ ڈھونڈ رکھا ہے نا جبھی مطلب کچھ بھی ہو اسکا حل یہی ہے میں واپس آجائوں۔
اوفوہ واپس چلی جانا کچھ دنوں بعد۔
وہ جھلایا۔
تم معاملے کی نزاکت نہیں سمجھ رہی ہو وہ زبردستی تمہیں بھی اس معاملے میں شریک بنا رہے ہیں۔ کوریا میں اکیلی ہو کیسے پولیس وولیس کے چکر سے نکلوگئ۔
یہ کوریا ہے پاکستان نہیں۔
وہ جتا کر بولی۔
پاکستان سے ذیادہ محفوظ ہوں میں یہاں۔ میری فکر کرنے کی ضرورت نہیں سمجھے۔ میں سنبھال لوں گی سب معاملات
اس نے کہہ کر بنا اسکا جواب سنے فون بند کردیا۔
حد ہوگئ ۔ میں کہاں سے آگئ بیچ میں۔ خود بھگتیں اپنی بیٹی کا پھیلایا۔ کھڑاگ۔ سنتھیا تم۔تمہیں خد اپوچھے
اسے اتنا شدید غصہ آرہا تھا کہ بس نہیں تھا جا کے سنتھیا کا منہ نوچ لے۔ تکیئے کو نوچ کھسوٹ کر خود کر پرسکون کرتی اٹھنے ہی لگی تھی کہ صارم کا پیغام آگیا۔
سنتھیا کے والد نے بیان دیا ہے سنتھیا تمہارے ساتھ کوریا میں فلیٹ لیکر رہ رہی تھی اور ایڈون کبھی کبھی آیا کرتا تھا۔ ایڈون نے اسے چیٹ کیا ہے تمہارے ساتھ مل کر اور اب غائب کرنے میں تمہارا بھئ ہاتھ ہے۔
یقینا یہ سب اسکا بتانے کا ارادہ نہیں تھا مگر معاملے کی نوعیت سمجھانے کیلیے لکھ بھیجا۔
اس نے جواب نہیں دیا۔
اٹھ کر فریش ہوئی بازو پر روز نئی ڈریسنگ کرنی ہوتی تھی ۔ تین چار دن سے گوارا یہ ذمہ داری نبھا رہی تھی آج نہ گوارا تھی نہ ہوپ ۔ کل خاص کر اسکی جلد سے ملتی جلتی بینڈیج لگائی تھی پیچ جیسا پلاسٹر۔اس وقت اتارا تو تارے نظر آگئے۔ زخم گہرا نہیں تھا چوڑا تھا۔ پھونکیں مار مار کر اس کو صاف کیا۔
پھر اٹھ کر اپنے لیئے سینڈوچ بنایا۔ کافی بنائئ۔
ابھی پہلا لقمہ لینے ہی لگی تھی کہ داخلی دروازے کی گھنٹی بج اٹھی۔ گوارا اسے خیال آیا لیکن گوارا گھنٹی تھوڑی بجاتی۔ اٹھ کر حسب عادت دروازہ کھول دیا ۔
بلیک لانگ کوٹ فان ہائی نیک میں ملبوس نک سک سے درست ہیون کھڑا مسکرا رہا تھا۔
صبح بخیر۔
صبح بخیر۔ وہ اسکو راستہ دیتی اندر چلی آئی۔
کیا ہوا تم ابھی تک تیار نہیں ہوئیں؟
اسے حیرت ہو رہی تھی۔ وہ اطمینان سے میز پر آکر بیٹھ کر سینڈوچ کھانے لگی۔
کیوں؟ اس نے بے دھیانی سے پوچھا۔
پوری پانچ چھٹیاں ہو چکی ہیں محترمہ آپکی۔ اکیڈمی سے نام کٹ جائے گا۔
ہیون کے کہنے پر اسے جیسے کرنٹ سا لگا۔
میں نے تو کوئی اسائنمنٹ بھی تیار نہیں کی۔ اور آج تو ہفتہ ہے۔آج تو ٹیسٹ تھا۔
اسکی پریشانی دیدنی تھی۔
ہاں تو ٹیسٹ تو دو جا کر کم از کم۔ جون جے کو کہہ دینا کہ بہادری دکھاتے زخمی ہوگئ تھی۔
فرسٹ ایڈ باکس سے پائو ڈین اور دوا نکال کر اس نے آگے بڑھ کر احتیاط سے اسکا ہاتھ تھاما۔
اس نے چھڑانا چاہا مگر ہیون کی گرفت مضبوط تھی۔
رکو زرا ۔ وہیں ماربل کائونٹر کے کنارے سے ٹک کراس نے ٹوکا۔۔۔پھر جائزہ لینے لگا۔
ہم ٹھیک ہو رہا ہےاب پلاسٹر نہ لگانا کھرنڈ آرہا ہے۔پلاسٹر اسکو نوچ دے گا۔
وہ مکمل توجہ سے اسکا زخم صاف کرکے دوا لگا رہا تھا۔وہ اب اسکے ہاتھ کی انگلیوں کو دیکھ رہا تھا۔ انگلیوں کے زخم پر کھرنڈ آگئ تھی۔ اس نے دھیرے سے چھوا۔
یہ تو بس اب نشان ہی ہیں۔ اس نے ہاتھ کھینچ لیا۔ ہیون اٹھ کھڑا ہوا۔
چلو دیر ہو رہی ہے تمہیں۔
میں نہیں جا رہی ۔ امتحان دے کر فیل ہو کر مزاق بنوانے کا فائدہ۔
اس نے اطمینان سے کہتے کافی کا گھونٹ بھرا
امتحان دینے سے پہلے یہ فیصلہ کیسے کر لیا کہ نتیجہ برا ہی ہوگا۔
ہیون کو حیرت ہوئی
انسان کو پتہ ہوتا ہے اپنا۔مجھے پتہ ہے مجھے کچھ نہیں آتا تو امتحان میں کچھ نہیں لکھ پائوں گی۔جب کچھ نہیں لکھ پائوں گی تو نتیجہ اچھا تھوڑی آئے گا۔
اس نے وضاحت دی ہیون ہنس دیا۔
تم ہر معاملےکو حل کرنے سے ذیادہ اس سے بھاگنے کو ترجیح کیوں دیتی ہو؟
اسکی بات گہری انداز اس سے بھی ذیادہ گہرا تھا۔
اس نے تنک کر گھورا۔
جی نہیں ایسا کچھ نہیں ہے۔
4hkaH5TU7iSG9YdZ4FtLt69e9RCE41PF8c6x375LZeHC
جلدی جلدی کپڑےبدل کر اسے اسکےساتھ آنا پڑا۔اسکے ساتھ چلتے آج وہ سارا راستہ ذہن نشین کر لینا چاہتی تھی سو گردن گھما گھما کر ارد گرد دیکھ رہی تھی۔ اسکے ساتھ قدم بڑھاتے ایکدم اپنی رفتار تیز کرکے بائیں جانب مڑی۔ اور اپنی یاد داشت پر فاتحانہ انداز میں مسکرائی۔
اتنا تو مجھے یاد ہو گیا ہے۔ پہلا موڑ بائیں جانب لینا ہے۔
دل ہی دل میں اپنی کامیابی پر خوش ہو رہی تھی۔ ہیون نے اسکے تیزی سے اسے پیچھے چھوڑ جانے کے باوجود اپنی رفتار نہیں بڑھائی تھی۔وہ خود ہی اسکے اپنے پاس آنے کا انتظار کرنے لگی۔ اسکے قریب آتے ہی دوبارہ اسکے ہمراہ چلنے لگی۔
کل تم بہت پیاری لگ رہی تھیں۔ وہ لباس تم پر بہت جچا تھا۔
اس نے ترچھی سی نگاہ ڈالی۔
ویسے کافی عجیب لگا تھا کل مجھے خالص نجی محفل تھی تمہارے قریبی رشتے داروں کی اور انی نے مجھے وہاں بلا لیا۔ سب جانے کیا سوچتے ہوں گے۔ تمہارے آہبوجی کافی غصے میں لگ رہے تھے۔
کل کے ذکر پر اسے ذہن میں اپنی کل والی سبکی تازہ ہوگئ۔
انی تو بہت خوش تھیں تمہیں دیکھ کر وہ یاد نہیں۔
ہیون نے ہلکے سے جتانا چاہا۔
وہ تو بہت اچھی ہیں۔بالکل چھوٹی بہنوں کی طرح پیار کرتی ہیں وہ۔ کل جس طرح سب کو مجھ سے ملوا رہی تھی اف شرمندہ ہوگی تھی میں۔
وہ لوگ اگلا موڑ مڑ چکے تھے۔ اریزہ باتوں میں مگن ہوچکی تھی۔
نونا مجھ سے بہت پیار کرتی ہیں۔ تم میری عزیز دوست ہو اسلیئے وہ تم سے بھی پیار کر رہی تھیں۔
سڑک پر اشارہ بند تھا۔ سو وہ سڑک کنارے ٹریفک رکنے کا انتظار کرنے لگے۔
تم نونا کہتے ہو وہ برا نہیں مانتیں؟ میں نے نونا کہا تو بولیں انی کہو مجھے۔
اسے یاد آیا۔
لڑکے بڑی بہن کو نونا کہتے ہیں لڑکیاں انی۔
ہیون کا دھیان ٹریفک پر تھا۔
ہوں ۔ اس نے پرسوچ انداز میں سر ہلایا۔
اکیڈمی آگئ تھی وہ حسب عادت خدا حافظ کہہ کر جانے لگی۔ تو ہیون نے پیچھے سے آواز دیکر اسے فائٹنگ کا اشارہ کیا۔ وہ منہ بنا کر گھور کر رہ گئ۔
ٹیسٹ سامنے آیا۔ابتدائی ہنگل کے جملے تھے۔ جیسے میں ںے آج کھانا کھایا۔ اس کو ہنگل میں ترجمہ کرنا تھا کچھ الفاظ معنی تھے۔ ایک دو جملے بنانے تھے۔
حسب توقع اسے کچھ نہیں آتا تھا۔ صبح ہیون کا انداز سے پکار کر فائٹنگ کہنا یاد آیا تو قلم مٹھی میں بھینچ کر بولی۔
کیہہ سوری فائٹنگ۔ کھوجو۔
پیپر کو دفع کرکے سیدھی ہو کر بیٹھی تو اپنے کئی ہم جماعتوں کو حیرت سے تکتا پایا۔
ویئے؟
ناک چڑھا کر وہ یہی کہہ سکتی تھی
4hkaH5TU7iSG9YdZ4FtLt69e9RCE41PF8c6x375LZeHC۔۔۔۔۔۔۔
عقلمند صورتحال کا تجزیہ کرکے پہلے سے ہی آنے والی مشکل سے نمٹنے کا منصوبہ بنا رکھتے ہیں۔ اور بیوقوف عقلمندوں کو کہتے گھبرائو نہیں سب ٹھیک ہوجائے گا۔
ریلنگ پر کہنیاں ٹکائے وہ گوگل وائس پر بول رہی تھی۔ تاکہ مکمل جملے کا ترجمہ کرکے بولے۔ دو با رتین بار کوئی پانچ چھے بار سن کر بھی جملہ ٹھیک سے یاد نہیں ہو رہا تھا ۔
ڈھیر ساری لعنت۔
اس نے اب اسکا ترجمہ کیا۔
مانن جھئوجھو۔
دو تین بار میں پکا یاد ہوگیا۔
مانن چھئو جھو۔
اسلام و علیکم۔
شستہ سلام وہ کرنٹ کھا کر جیسے سیدھی ہوئی
سامنے علی کھڑا تھا مسکرا کر ادب سے سلام اسکی جانب سے ہی بھیجا گیا تھا
دے۔ آننیانگ۔
وہ سٹپٹا کر سر جھکا کر آننیانگ بول گئ۔
کس پر لعنتیں بھیج رہی ہو۔
اس نے مسکرا کر پوچھتے ہوئے اسکی جانب ایک شاپنگ بیگ بڑھایا۔
ایسے ہی بس۔ وہ اب کیا بتاتی۔ شاپر کھول کر دیکھا تو اپنا ہی پل اوور جھانکتا دکھائی دیا
ارے میں تو بھول گئ تھی یہ؟
اسکے بے ساختہ حیرت کے اظہا رپر علی نے مسکرا کر وضاحت کی۔
یہ یہیں لٹکا ملا تھا مجھے۔
گوماوویو۔
وہ جھک کر شکریہ ادا کرنے لگی۔
ویسے گوگل ٹرانسلیٹر اچھی چیز ہے۔ اسائنمنٹ بنانے کے کام آسکتا ہے۔
وہ جتا رہا تھا۔وہ کھسیانی سی ہو کر سر کھجانے لگی۔
وہ دراصل بہت مصروف ہفتہ تھا یہ۔بھول گئ پرسوں جمع کرادوں گی۔ جھنچا۔
وہ متاثر کرنے کو انگریزئ کے بیچ بیچ میں کورین کا تڑکا لگاتی تھی۔
پرسوں سے تو سردیوں کے میلے کی چھٹیاں شروع ہو رہی ہیں۔
اس نے یاد کرایا۔
ابھئ پڑھایا ہی کتنا ہے جو چھٹیاں بھی شروع کردیں۔
وہ جیسے خفا ہو گئ تھی۔
جتنا پڑھایا وہ کونسا پڑھ لیا تم نے۔ علی کو حیرت ہوئی اسکے غصے پر جیسے ٹاپر ہو کلاس کی۔
پڑھ رہی ہوں اتنی محنت سے یکسر اجنبی زبان سیکھ رہی ہوں
اس نے اپنی کارکردگئ جتائی۔ علی نے اسکا جھوٹ پکڑکر گھورا
کیا پڑھا ہے ؟ خالی ٹیسٹ تھما کے آئی ہو مجھے۔۔
اس کی بات پر وہ خفت ذدہ سی ہوئی خاص طور پر اپنے برابر بیٹھے امریکی سے اسکا ٹیسٹ لیکر اپنے ٹیسٹ کے اوپر رکھ کر اسے تھمایا تھا۔ مگر علی بھی ایک کائیاں تھا اسکا ٹیسٹ اسی وقت نیچے سے نکال کر دیکھا تھا۔

رات کو دیر تک پارٹی کروگی تو ٹیسٹ برباد ہی ہوگا۔
لوہا گرم دیکھ کر اس نے ہلکا پھلکا ڈانٹ بھی دیا۔
پارٹی؟ ۔۔ اسے یہ الزام سخت ناگوار گزرا۔ فورا تصحیح کی
شادی میں گئ تھی۔ اہم قومی مذہبی فریضہ ہوتا ہے شادی۔
اور ٹیسٹ اچھا دینا اخلاقی تعلیمی تربیتی فریضہ۔
وہ ترکی بہ ترکی بولا۔
آہ۔ اس نے تاسف سے دیکھا۔
اس بندے میں یہ کمال ہے کہ اچھا بھلا موڈ غارت کرکے رکھ دے۔
اس نے گہری سانس لی۔
بیان۔۔ ( معزرت)
آئیندہ خوب دل لگا کر پڑھائی کروں گئ۔ جھنچا۔
اس نے ہاتھ اٹھا کر جیسے حلف دیا۔
گھمسامنیدہ۔
اس نے بھی لطف لیتے ہوئے بظاہر سنجیدگی سے شکریہ ادا کیا مگر شرارت آنکھوں سے عیاں تھی۔اسکی شکل دیکھتے اسکے ذہن میں فورا سوال ابھرا۔ مگر سیدھا سیدھا پوچھتے جھجک گئ۔
آپ سے ایک ذاتی سوال پوچھوں؟
آنی۔ جوابا اس نے بے مروتی سے نفی میں سر ہلایا۔
تمہارا بوائے فرینڈ آگیا ہے۔پھر کبھی پوچھ لینا۔
وہ سادے سے انداز میں کہہ رہا تھا۔ اس نے اسکی نظروں کے تعاقب میں دیکھا تو ہیون کی گاڑی موڑ مڑتی نظر آگئ۔
ہیون میرا بوائے فرینڈ نہیں ہے۔
اس کو تپ چڑھ گئ۔ کل سے ایک ہی رٹ لگائی ہوئئ۔
ہوں ہاں اب تو فیانسی ہے۔ اس نے آرام سے جیسے تصحیح کرلی۔
واٹ دا ہیل۔ کچھ بھی؟ کل سے کبھی اسے میرا بوائے فرینڈ کہہ رہے کبھی فیانسی۔ ہم صرف دوست ہیں ۔آراسو۔
وہ جس طرح جھلائی تھی علی ٹھٹھک کر اسکی شکل دیکھنے لگا۔
یہ میں نہیں آج چھپنے والا ہر آرٹیکل کہہ رہا ہے۔
اس نے موبائل میں سے ایک آرٹیکل نکال کر اسے دکھایا۔ ہیون سیڑھیاں چڑھ رہا تھا اس نے جھپٹ کر علی کا موبائل پکڑا ایک نظر شہہ سرخی پر ڈالی۔۔
مشہور لی گروپ کے فرزند ارجمند نے اپنی شریک حیات چن لی۔ کل رات نجی محفل میں ایک پاکستانی نژاد لڑکی آرزا کا لی خاندان سے ہیون کی فیانسی کی حیثیت سے تعارف کرایا گیا۔
جی ہائے بستر پر لیٹی موبائل استعمال کر رہی تھی کہ سامنے ایک مراسلہ آگیا۔۔
تھیبا۔۔وہ ایکدم سے چیخ مارکے اٹھ بیٹھی سنتھیا اچھل سی پڑی۔
کیا ہوا؟
جوابا اس نے وہی مراسلہ اسکی نگاہوں کے سامنے کردیا۔ وہ ہونق سی تصویر دیکھتی رہی جس پر عنوان ہی اصل توجہ کا مرکز تھا۔ تصویر میں ہیون اور اریزہ کا چہرہ واضح تھا کھانا کھاتے ہوئے مسکراتے ہوئے دونوں۔ مگر معاملہ سمجھ نہ آسکا۔ وہ جھنجھلا گئ
کیا ہے یہ میں ہنگل تھوڑی سمجھ سکتی ہوں۔
تمہاری سہیلی ہیون سے شادی کر رہی ہے۔
اس نے وضاحت کی تو سنتھیا جیسے بھونچکا سی رہ گئ۔ چند لمحے آنکھیں پھاڑے گھورتی رہی پھر نفی میں سر ہلا کر بولی
ناممکن۔ ایسا کبھی نہیں ہو سکتا۔
ہے نا مجھے بھئ حیرت ہو رہی۔ دو لوزرز بھی اکٹھے جوڑا بنا سکتے واہ کچھ بھی ممکن ہے دنیا میں۔ صحیح گولڈ ڈگر ہے اریزہ اونچا ہاتھ مارا ہے۔
وہ استہزائیہ انداز میں ہنس رہی تھی۔
مطلب ؟ سنتھیا کو اسکا انداز برا لگا۔
مطلب صاف ہے۔لی گروپ کوریا کے بڑے ترین گروپس میں سے ایک ہے ۔ انکے اکلوتے ناجائز بیٹے کی ہونے والی بیوی ہے۔اونچا ہاتھ مارا ہے بھئی۔
جی ہائے کے انداز میں رشک تمسخر حسد سب تھا۔
ایسا نہیں ہو سکتا ۔ اریزہ کبھی بھی ایسا نہیں کر سکتی۔
سنتھیا کو ماننے میں تامل تھا۔ جی ہائے نے بھنوئیں اچکا کر دیکھا۔
مجھے تو ایسا ہوتا نظر آرہا تھا۔ ہر وقت تو دونوں ساتھ رہتے تھے سب دوست ایک۔طرف اور یہ دونوں ایک طرف ہوتے تھے اکٹھے گھومتے پھرتے تھے۔ پہلے دن سے ان دونوں کا جھکائو ایک دوسرے کی جانب تھا۔
بس کرو۔ وہ چڑ گئ۔
ایسا کچھ نہیں ہے۔ میری بچپن کی دوست ہے تم سے ذیادہ جانتی ہوں میں اسے۔ وہ کبھی کسی غیر مذہب کے لڑکے سے شادی نہیں کرسکتی۔
اسکے انداز میں تیقن تھا جی ہائے ہنس پڑی
غیر مذہب کے لڑکے کے ساتھ گھوم سکتی پھر سکتی اسے ڈیٹ کرسکتی ہے مگر شادی نہیں کر سکتی واہ کیا منافقت ہے
کیا ہے یہ؟
وہ تن فن کرتی اسکے پاس پہنچی تھی اور موبائل اسکی آنکھوں کے سامنے لہرایا۔
مجھے بتائو؟ کیا بکواس ہے یہ؟ یہ کیا ہے کل تم لوگوں نے؟ کیا کہا تھا تم نے نونا کو میرے بارے میں کہ ہم ڈیٹ کر رہے ہیں؟ بولو جواب دو۔بولتے کیوں نہیں اب تم۔
وہ غصے سے بے قابو ہو کر چلائی تھی۔
ہیون کے لیئے غیر متوقع ردعمل تھا وہ ابھی سمجھنے کی کوشش ہی کر رہا تھا کہ پاس سے گزرتے طلباء میں سے ایک نے آواز لگائی
تھیبا یہ تو لی کپل ہے۔
ہیون؟ لی ہیون۔
لوگ انہیں پہچان پہچان کر اکٹھے ہونے لگے تھے۔
یہ جگہ مناسب نہیں چلو کہیں چل کر بات کرتے ہیں۔
لہجہ دھیما رکھتے ہوئے اس نے اسکا ہاتھ تھام کر انتباہ کرنا چاہا وہ غصے سے اپنا ہاتھ چھڑا کر بولی۔
مجھے کوئی بات نہیں کرنی تم سے میں سوچ بھی نہیں سکتی تھی کہ تم۔
وہ مزید کچھ کہتی مگر ہیون نے اسکا ہاتھ تھام کر تیزی سے اپنی جانب کھینچا اور سیڑھیاں اترنے لگا۔ لوگ مکھیوں کی طرح ان پر جیسے حملہ آور ہوئے تھے۔ وہ نا چاہتے ہوئے بھی اسکے ساتھ گھسٹتی آئی۔ اس نے بھیڑ سے رستہ بناتے اسے گاڑی میں بٹھایا تھا۔
چھوگیو۔ ہیونا۔۔ نا جانے کتنی آوازیں تھیں کتنے کیمرے وہ جتنی جلدی ہو سکے یہاں سے نکل جانا چاہتا تھا۔۔۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
اپنے ہی زیر تعمیر پلازہ کے قریب لا کر اس نے گاڑی پارک کی تھی۔
میرے ساتھ آئو۔
وہ نرم سے انداز میں اسکی جانب کا دروازہ کھولے کھڑا تھا۔
اس نے ایک نظر گھپ اندھیرے میں ڈوبی اس کثیر منزلہ عمارت پر نگاہ ڈالی پھر اس پروہ اسکے اترنے کا منتظر کھڑا تھا۔۔ دنیا کا کوئی اور انسان ہوتا تو یہاں اترتے وہ سو مرتبہ سوچتی۔
اسکو گھورتے ہوئے وہ اسکے ساتھ اتر آئی۔ وہ موبائل کی ٹارچ آن کرکے اسے سیڑھیوں کے رستے دوسری منزل پر لایا تھا۔ صرف ڈھانچہ کھڑا تھا سامنے کچھ فاصلے دریا کنارہ تھا جہاں کی سڑک کی دو رویہ بتیاں اس وقت قمقموں کی طرح روشن تھیں۔ اس عمارت میں صرف ارد گرد کی روشنیاں ہی اندھیرے گھپ سے بچائے تھیں۔۔
وہ بالکل خاموشی سے کھڑا سامنے نگاہ جمائے تھا۔ اتنا خاموش کہ اسے مزید غصہ آنے لگا۔
یہ کیسی وضاحت ہے؟
ہیون نے رخ موڑ کر اسکی جانب غور سے دیکھا
میری جگہ کوئی اور لڑکا ہوتا تو تمہیں یہاں لا کر پرپوز کرتا۔
پھر نہیں۔ وہ بےزاری سے ٹوک گئ۔
تم نے پرپوز کیا میں نے انکار کیا بات ختم ہوگئ ہم اچھے دوست ہیں اور رہیں گے تم اس طرح کی فالتو غلط فہمیاں مت پالو نا افواہیں پھیلائو سمجھے۔ میری بات مکمل طو رپر سمجھ آئی تمہیں ۔۔
وہ ہاتھ اٹھا کر نہایت سخت انداز میں کہہ رہی تھی۔وہ چپ چاپ اسکی شکل دیکھتا رہا۔اتنی خاموشی سے کہ اریزہ کو پہلی بار اسکی نگاہوں میں دیکھنا مشکل لگنے لگا۔ اس سے قبل کہ وہ نگاہ چرا لیتی اس نے گہری سانس لیکر رخ موڑ ا اور سامنے دریا پرنگاہ جما دی
یہ کثیر منزلہ عمارت ہے۔ 2023 تک مکمل ہوگی۔ اس میں رہائشی اپارٹمنٹس ہونگے دریا کنارہ بہترئن جگہ بہترین مناظر کے ساتھ جب یہ بن کر تیار ہوگا تو ایک ایک اپارٹمنٹ اپنی طرز کا ایک شاہکار ہوگا۔ اربوں مالیت کا پراجیکٹ ہے یہ۔ مکمل طور پر میرے نام ۔
میری تعلیم مکمل ہونے تک مجھے لی گروپ کا ڈائریکٹر بنا دیا جائے گا۔ اس وقت لی گروپ کوریا کے پانچ بڑے ترین بزنس گروپس میں سے ایک ہے۔
تم مجھے یہ سب کیوں بتا رہے ہو؟
اریزہ حیرت سے ٹوک بیٹھی۔۔
زندگی میں ہمیشہ میں اکیلا رہا ہوں اریزہ۔ یہ حوالہ یہ شناخت یہ پہچان میرے ساتھ اتنا رہی ہے کہ مجھے نفرت ہونے لگی ہے اس حوالے سے۔ مجھ سے سب دوستی کرنا چاہتے تھے۔ کچھ اسلیئے کہ کہہ سکیں کہ لی گروپ کا ولی عہد انکا جاننے والا ہے کچھ اسلیئے کہ میں ان پر کھلے دل سے خرچ کرتا ہوں۔ اور جب میں ان سب کے ساتھ ہوتا تھا تو میں خاموش ہوں میں انکے ساتھ ہوتے ہوئے بھی انکے ساتھ نہیں ہوں۔کبھی کسی کو پتہ نہ لگ سکا۔جب سب ایک دوسرے سے ہنسی مزاق کرتے ایک دوسرے کے ساتھ گپیں ہانکتے میں چپ چاپ کسی کونے میں بیٹھا انہیں دیکھا کرتا تھا۔ کیسے سب ایک دوسرے کے ساتھ مل جل کر ہلہ گلہ کرتے ہیں مگر مجھ سے بات کرتےایک فاصلہ رکھتے ہیں۔
اسکے ذہن میں ایسے ہزاروں واقعات فلم کی طرح چل رہے تھے جہاں وہ سب دوستوں میں ہوتے ہوئے بھی ایک کونے میں اکیلا بیٹھا ہوتا تھا۔ اس کی ٹریٹ پر سب مزے کرتے ہوئے یہ بھول جاتے تھے کہ جب کرائوکے روم اسی نے بک کروایا ہے تو وہ خود گانا کیوں نہیں گاتا۔۔
وہ ماضی کو جیسے دوبارہ جی رہا تھا۔اریزہ کی زبان تالو سے چپک سی گئ۔
کم سن گوارا یون بن کیا یہ سب تمہارے دوست نہیں؟
وہ پوچھے بنا نہ رہ سکی
اس نے مڑ کر اسکی شکل دیکھی۔
کم سن گوارا یون بن جی ہائے سب بہت اچھے دوست ہیں۔۔۔۔۔۔
وہ لحظہ بھر رکا۔
آپس میں۔۔۔
اس نے جملہ مکمل کیا۔ وہی مسکراہٹ دوبارہ اسکے چہرے پر آسجی تھی وہی جسکو دیکھتے اریزہ سوچتی تھی۔ اسکا پورا چہرہ مسکراتا ہے سوائے آنکھوں کے۔
کرائوکے ، کلبنگ ، لانگ ڈرائیو گیمنگ وغیرہ جس میں میری عمر کے لوگ گھنٹوں بتا سکتے ہیں میں بور ہونے لگتا تھا میں اٹھ جاتا تھا باہر نکل آتا تھا کبھی کوئی میرے پیچھے نہیں آیا۔۔۔ ہیون کیا ہوا چلوکہیں اور چلتے ہیں۔ وہ ذرا سا ہنسا۔
اریزہ کی پیشانی پر تفکر کی لکیریں سی بننے لگیں۔
تم نے کبھی نوٹ نہیں کیا تم اور میں ہمیشہ اکٹھے اکیلے کیوں رہ جاتے تھے؟ کیونکہ میں اکیلا ہوتا تھا۔
وہ اسکے اور اپنے درمیان چند قدم کا فاصلہ مٹاتا اسکی نگاہوں میں جھانکتے پوچھ رہا تھا۔
سادہ انگریزی میں کہوں تو میں پش اوور ہوں۔
پیسے والا مگر گھامڑ گھونچو انسان۔
ایسا نہیں ہے۔ بالکل بھی ایسا نہیں ہے۔ سب دوست تم سے محبت کرتے ہیں۔کم سن گوارا میں نے انکو تمہاری فکر کرتے دیکھا ہے۔
اریزہ نے اسکا دل صاف کرنا چاہا مگر اس پر ان جملوں کا مطلق اثر نہیں ہوا۔
میں نے کب کہا کہ وہ مجھ سے نفرت کرتے ہیں۔
اس نے جیسے مکھی اڑائئ۔
میں اپنی بات کر رہا ہوں۔ میں یہاں کی سوسائٹی کا سونے کا چمچ منہ میں لیکر پیدا ہونے والا گڈ فار نتھنگ انسان تھا۔
اس نے تھا پر زور دیا تھا ۔ اریزہ کو حقیقت میں حیرت ہوئی تھی۔ سمجھ نہ آیا ایسا لڑکا جسے وہ اتنے دنوں میں اتنا مکمل او رمضبوط انسان سمجھ رہی تھی ایسے کامپلیکسز پال کر بیٹھا ہوگا۔
تمہاری شخصیت بہت اچھی ہے بہت اچھی باتیں کرتے ہو تم رحمدل ہو ، سادہ مزاج ہو ،پرخلوص ہو خوش مزاج ہو مجھے ایسا کبھی نہیں لگا۔۔ تم اچھے ہو۔ جھنچا
اریزہ نے جھنچا پر زور دے کر کہا۔
ہاں۔ یہ سب تم کہہ رہی ہو۔ آج تک یہ سب صرف تم نے ہی کہا ہے مجھ سے۔ تم نے مجھے احساس دلایا ہے کہ میں مختلف سہی مگر جیسا بھی ہوں برا نہیں ہوں۔
تو جو لڑکی مجھے میں جیسا ہوں ویسا ہی پسند کرتئ ہے کیا اسے ہمیشہ اپنی زندگی کا حصہ بنانے کی خواہش غلط ہے میری؟
وہ آنکھوں میں ہزاروں امیدوں کے دیئے سجائے بہت آس بہت مان سے پوچھ رہا تھا۔ اریزہ لمحہ بھر کو جیسے سانس لینا ہی بھول گئ۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
سارا راستہ دونوں بالکل خاموش رہے تھے۔ گاڑی اسکی عمارت کے پارکنگ ایریا میں رکتے ہی وہ جیسے دروازہ کھول کر اترنے لگی تو ہیون دھیرے سے بولا

کل جو کچھ ہوا وہ غلط فہمی کی بنیاد پر ہوا۔ میں نے نونا کو بتایاتھا کہ میں تمہیں پرپوز کرنے لگا ہوں۔ انکو لگا تھا تم نے حامی بھر لی ہوگی۔ وہ صرف آہبوجی کے سامنے یہ بات بتانا چاہ رہی تھیں بس۔ اگر تمہیں دکھ پہنچا تو بیان۔۔ ( معزرت)
بیان تک اسکی آواز ڈول سی گئ تھی۔ سامنے نگاہ جمائے وہ دانستہ اسکی جانب دیکھنے سے احتراز برت رہا تھا۔ اریزہ نے سر ہلایا۔ اور خاموشی سے اتر کر دروازہ بند کردیا۔ وہ بنا اسکی طرف دیکھے گاڑی آگے بڑھا لے گیا تھا۔
جانے آج موقع تھا یا نہیں۔
اس نے سوچنا چاہا۔ ذہن منتشر سا ہو رہا تھا۔ چلتے چلتے خیال ہی نہ رہا کہ ایک سیڑھی اوپر سے احاطہ شروع ہوتا ہے ۔بہت زور سے سیڑھی کا کونہ لگا تھا اسکی ٹانگ پر۔ تکلیف سے دہری ہوتی ٹانگ سہلاتی وہیں بیٹھ گئ۔
اریزہ۔
قدموں کی آہٹ کسی نے اس کے قریب آکر اسے پکارا تھا۔ اس نے آنسو بھری آنکھیں اٹھا کر اوپر دیکھا تو غیر متوقع طور پر سامنے علی کھڑا تھا۔
وہ اتنئ حیران ہوئی کہ دیکھتی رہ گئ ۔
تم ٹھیک ہو۔
وہ اسکی چوٹ کی بابت پوچھ رہا تھا۔
آہ۔۔ دے۔ وہ فورا ٹانگیں سمیٹ کر اٹھ کھڑی ہوئی۔
معمولی چوٹ ہے۔
چہرے پر پھیلے آنسو پونچھتے وہ قصدا مسکرائی۔ علی نے اسکی شکل دیکھی۔ معمولی چوٹ پر یوں پھوٹ پھوٹ کر رونے کا مطلب چوٹ اندر کہیں لگی ہے یہ بہانہ بنا ہے۔
کین چھنا۔ اس نے اپنی جانب سے اطمینان دلانا چاہا۔
تھائینیئے۔وہ سر ہلا کر اسکا یقین کرگیا۔ وہ ہاتھ میں وہی والا شاپنگ بیگ تھامے تھا۔ یقینا وہ یہی واپس کرنے آیا تھا۔ اس وقت وہ اتنا تیزی میں نکلے تھے کہ خیال نہیں رہا۔اس نے اسکی جانب بڑھا دیا۔
آپکو کافی زحمت ہوئی شکریہ۔ اس نے فورا تھام لیا او رجھک کر شکریہ بھی ادا کردیا
کرم۔ وہ جانے کو مڑی۔
اریزہ ۔
علی نے پکارا تو وہ مڑ کر یوں دیکھنے لگی جیسے پوچھ رہی ہو اب کیا؟
وہ میرا ہینڈ فون۔۔
اس نے یاد دلایا۔ وہ چند لمحے ناسمجھی سے اسے دیکھتی رہی پھر خیال آیا۔ غصے میں وہ اسکا فون پکڑے پکڑے ہی ہیون کی کلاس لینے آگے بڑھ گئ تھی۔
اس نے بیگ میں فورا فون تلاشا۔ صد شکر دو عد دفون موجود تھے۔
میں بہت معزرت خواہ ہوں آپکو بہت زحمت ہوئی ۔ مجھے بالکل خیال نہیں رہا تھا کہ ۔۔ ایک بار پھر معزرت سوری
وہ اتنی شرمندہ ہوئی تھی کہ بس نہیں تھا کہ وہیں گڑ مر جائے۔ ایسا بھی کیا اندھا پن۔
اسکے اتنی مرتبہ معزرت کرنے پر وہ خود بھی شرمندہ سا ہوگیا
نہیں۔معزرت مت کیجئے۔ آنیو۔ بس وہ صبح مجھے اس کی ضرورت پڑتی شہر سے باہر جانا ہے اسلیئے بس۔
اسے کہیں نہ بھی جانا ہوتا پھر بھی کون آجکل کے دور میں موبائل کے بغیر رہ سکتا۔ وہ خود کو جتنا ملامت کرتی کم تھا۔
وہ سر ہلا کر رہ گئ ۔۔
کرم۔ وہ سر کے اشارے سے خدا حافظ کہتا جانے لگا کہ خیال آیا۔ ذراسا جھک کر بولا
اریزہ۔ آئیم سوری۔
کس لیئے۔ ؟ وہ حیران ہوئی۔
کل کے کیلئے، آج جو کچھ ہوا مجھے لگا ہے کہیں نہ کہیں جو کچھ ہوا اسکے لیئے مجھے معزرت کرنی چاہیئے۔ آئیم سوری
اسکو اپنی پوزیشن آکورڈ لگی۔تھئ۔ اریزہ کچھ نہ بولی۔
اپنا خیال رکھنا شب بخیر بائے۔
وہ کہہ کر ہلکے سے سر جھکا کر مخصوص کورین انداز میں کہتا اپنی گاڑی کی طرف بڑھ گیا۔۔ وہ بے دھیانئ میں اسے دیکھ رہی تھی کہ خیال آیا۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
وہ فلیٹ کا دروازہ کھولتی اندر داخل ہوئی تو سامنے ہی گوارا صوفے پر بیٹھی ٹی وی دیکھ رہی تھی وہیں سے پکارنے لگی۔
میری جان میری زندگی یوبو۔ اف کتنا یاد کر رہئ تھی پوچھ لو ہوپ سے مستقل اس سے پوچھے جا رہی ہوں کب آئوگی تم ۔
اریزہ جوابا مسکرا بھی نہ سکی۔ ہوپ کچن میں کافی بنا رہی تھی اس سے بھی پوچھنے لگی
کافی پیوگی؟
اس نے بس نفی میں سر ہلایا اور کمرے میں گھس گئ۔
اسکو کیا ہوا؟ گوارا ہوپ سے پوچھ رہی تھی۔
میں کیا جانوں؟ اس نے کندھے اچکا دیئے۔
اریزہ۔۔
گوارا اٹھ کر اسکے پیچھے آئی وہ کمبل منہ تک تانے بتیاں بجھائے یقینا سونے کا ارادہ باندھ چکی تھی۔ وہ آہستگی سے دروازہ بند کرتی واپس چلی گئ۔۔۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
وہ اور یون بن اس سے ملنے آئے تھے۔ ایک ہفتے سے اوپر ہو چکا تھا اسے جیل میں ڈال دیا گیا تھا۔ اسکی حالت انکی توقع سے ذیادہ خراب تھئ۔ سوکھ کے جیسے کانٹا ہوا وا تھا۔ آنکھوں کے گرد حلقے تھے انکو دیکھ کر حقیقتا اسکی آنکھیں بھر آئی تھیں۔
کین چھنا۔ یون بن پوچھ کے پچھتایا۔
وہ سلاخوں سے سر ٹکا کر رو ہی پڑا۔
میں نے کچھ نہیں کیا میں نے سنتھیا کو اغوا نہیں کیا۔ میں کیوں اسکو نقصان پہنچائوں گا ۔
سب ٹھیک ہو جائے گا۔
یون بن اسکے ہاتھ پر ہاتھ رکھ کر تسلی دینے لگا۔۔
ہماری پولیس تھوڑی سست ہے مگر جلد ہی سنتھیا کا پتہ چلا لے گی۔ اسکی حالت ٹھیک نہیں یقینااسے اسپتال کی ضرورت پڑے گی۔وہ ضرور کسی کلینک سے رابطہ کرے گی فورا اسکا پولیس کو پتہ چل جائے گا تم پریشان مت ہو۔
یون بن اسے بچوں کی طرح بہلا رہا تھا۔ کم سن ہونٹ بھینچے بیٹھا رہا تھا۔ ملاقات کا وقت ختم ہونے تک یون بن کی تسلیوں کے باعث اسے کافی بہتر لگ رہا تھا۔
اسکے ہمراہ باہر آتے یون بن کو نیا خیال آیا۔
یار سنتھیا نے کہیں سو سائیڈ تو نہیں کرلی۔
کم سن نے حیرت سے شکل دیکھی تو وضاحت کرنے لگا۔
دیکھو نا سیول میں جا بجا سی سی ٹی وی کیمرے لگے ہیں نا ممکن ہے کہ وہ باہر نکلے اور کسی کیمرے کی نظر میں نہ آئے۔ اور باہر کیسے کوئی نہیں نکلے گا؟ کھانا پینا کیسے کر رہی ہوگی وہ بھلا؟ یہاں تو اسکا کوئی دوست بھی نہیں۔
کم سن نے سر کھجایا۔ اس دن سنتھیا جب اس کے پاس انٹرویو دینے آئی تھی تو اس نے جو آپر پہن رکھا تھا اس پر بڑا بڑا یونیورسٹی کے جمناسٹک کلب کا نام لکھا ہوا تھا۔ وہ اسی وقت سمجھ گیا تھا کہ اسکی مدد کون کر رہا ہے یقینا وہ ہاسٹل میں چھپی ہوگی ۔ اسے باہر نکلنے کی ضرورت ہی نہیں تھی کم ازکم سمسٹر بریک اور کرسمس کی چھٹیوں کے ختم ہونے تک۔۔
ہنگن دریا تو فریز ہوا وا ہے یقینا وہ کچھ کھا کر مر چکی۔
یون بن اپنی دھن میں گاڑی میں بیٹھتے بول رہا تھا
اے سوچ کے بولو۔
فرنٹ سیٹ پر بیٹھتا کم سن ایکدم اتنی زور سے بھڑک کر بولا
کمچاگئا
( ڈرا دیا)
وہ بے ساختہ دل پر ہاتھ رکھ کر گھورنے لگا۔
کیا ہوا ہے بس خیال ظاہر کر رہا ہوں۔ ہائش۔ میں کونسا فرشتہ ہوں جو بیٹھا اسکی تقدیر لکھ رہا ہوں۔ اس نے منہ بنا کر گاڑی اسٹارٹ کی۔
پھر بھئ کسی کی زندگی موت کے بارے میں غیر سنجیدگی سے ذکر زیب نہیں دیتا
کم سن اس بار لہجہ سنبھال کر بولا تھا۔
غیر سنجیدگی سے نہیں کہہ رہا۔ اسکی حالت ٹھیک نہیں ہوگی۔ اس میں خون کی شدید کمی ہے۔ جو رپورٹس تھیں انکے مطابق اگر وہ اس بچے کو گراتی تو اسکی جان کوخطرہ تھا اور اگر پیدا کرنا چاہتی تو مزید خطرہ تھا۔مکمل بیڈ ریسٹ تجویز کیا تھا ڈاکٹر نے۔ اور وہ احمق لڑکی خود سے کہیں چلی گئ۔
اور سب جانتے بوجھتے ایڈون اسکو ذہنی طور پر مزید پریشان کرتا رہا اسکی مرضی کے خلاف ابارشن پر مجبور کرکے۔
کم سن کو ایڈون پر غصہ آیا تھا۔یون بن نے ایک نظر اسکی جانب دیکھا پھر کندھے اچکا کر بولا۔
ایک بائیس تئیس سالہ لڑکا پڑھائی کرے گا یا بیوی بچے پالے گا؟ مجھے ایڈون اتنا غلط نہیں لگتا۔
کم سن سوچ میں پڑ گیا ذہن میں یون بن کے کہے الفاظ گونج رہے تھے
اسکی حالت ٹھیک نہیں ہے یقینا اسے اسپتال کی ضرورت پڑے گئ۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
وہ گاڑی لیکر جیسے اڑتا ہوا پہنچا تھا۔ ہاسٹل گیٹ پر ہی اسے جی ہائے مل گئ تھئ۔ چھوٹتے ہی بولی
اتنئ دیر؟
سنتھیا کہاں ہے؟ اس نے پوچھا تو وہ اسے اشارے سے خاموش رہنے کا اشارہ کرتی مین گیٹ سے کچھ فاصلے پر ایک درخت کے نیچے لگے بنچ کے پاس لے آئی۔
سنتھیا گھاس پرزمین پر دہری ہوئی لیٹی تھی۔
اس وقت سیکیورٹی گارڈ کی نظروں میں آئے بغیر ہمیں اسے لے جانا ہوگا ورنہ میں بہت بڑی مصیبت میں پڑ جائوں گی۔
جی ہائے کو اس وقت بھئ اپنی فکر پڑی تھی
کم سن نے گھورا تو وہ چپ کرگئ۔ اس نے آگے بڑھ کر دیکھا تو اسکا جسم کانپ رہا تھا پسینے چھوٹ رہے تھے۔ وہ بالکل بے دم ہوئی جا رہی تھی
یہ یہاں تک کیسے آئی ہے۔
کم سن نے اسکو سیدھا کیا تو جس طرح وہ کراہی وہ پوچھے بنا نہ رہ سکا۔
چل کر۔ اس وقت چل پا رہی تھی میرا خیال ہے چلنے سے اسکی ذیادہ طبیعت خراب ہوئی ہے۔
جی ہائی کے کہنے پر وہ سوچ میں پڑا پھر جیسے ایک فیصلہ کرکے جیب سے چابی نکال کر اسکی جانب بڑھائی
گاڑی کو یونیورسٹی کے گیٹ نمبر 3 کے پاس لیکر آئو۔
مگر وہ تو بند ہوگا اس وقت۔
جی ہائے نے کہا تو وہ ہونٹ بھینچ کر کسی کو کال ملانے لگا۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
آڈیٹوریم سے وہیل چئیر لا کر وہ سنتھیا کو اس پر بٹھا کر جتنئ تیزی سے ہو سکا گیٹ تک پہنچا تھا۔ گیٹ پر انکا قابل اعتبار سیکیورٹی گارڈ کھڑا تھا۔سنتھیا کو دیکھ کر سٹپٹا گیا
دیکھو آدل لڑکوں کا دیر سے ہاسٹل آنے پر گیٹ کھولنا یا بے وقت جانے دینے میں اور یوں کسی لڑکی کے ساتھ جانے دینے میں فرق ہے۔ مجھے معاملہ گڑبڑ لگ رہا ہے ۔
ہاسٹل سے غائب ہونے کیلئے یون بن شاہزیب سالک وغیرہ کے ساتھ وہ اسی گیٹ کا استعمال کرتے تھے اسی چوکیدار کو پیسے دے کر۔ یہاں کا سی سی ٹی وی خراب نہیں تھا مگر اس سے نمٹنا بھی اسی چوکیدار کا کام تھا۔
میں آپکو کسی مشکل میں پھنسا سکتاہوں بھلا۔ اس لڑکی کی طبیعت بہت خراب ہے اسکو اسپتال لے جانا ضروری ہے۔
اس نے منت بھرے انداز میں کہا۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
مگر میرے ہی کلینک میں لانا ضروری تھا؟
سن بے ای کوانگ دو جھلارہا تھا۔
وہ سر جھکا گیا۔
بتایا تو ہے سن بے کسی بھی سرکاری اسپتال لے جاتا تو پھنس جاتا پولیس کیس ہے۔
اس نے اتنی معصومیت سے کہا تھا کہ سن بے ( سینئر) کا دل چاہا اسکے سر پراپنا وہی اسٹیتھسکوپ ماردے جسکو سنتھیا کی دھڑکن ماپنے کیلئے استعمال کر رہا تھا۔
فکر کی بات نہیں ہے ۔ یوں طبیعت اوپر نیچے ہونا عام بات ہے۔ بخار ابھی اتر جائے گا تو کچھ کھلا پلا دینا بس۔
اسے گھورنے کے بعد رخ پھیر کر سن بے جی ہائے سے ہی مخاطب تھے۔
وہ سر ہلا کر جمائی روکنے کی کوشش میں لگی تھی۔
میرا کلینک اتنا بڑا نہیں ہے کہ ایمرجنسی کی سہولت موجود ہوتی۔ منہ اٹھا کر یہاں لے آئے اگر سچ مچ حالت بگڑتی تو اسپتال جانے تک یہ اوپر جا چکئ ہوتی۔
سن بے سنتھیا کو ٹیکا لگاتےہوئے اس کو بھی ساتھ ساتھ ٹھونک بجا رہے تھے۔
مجھے پتہ ہے آپ اتنے قابل ڈاکٹر ہیں کہ ایسی کسی بھی مشکل سے با آسانی نمٹ سکتے ہیں جبھی پورے بھروسے کے ساتھ آیا میں۔
وہ مکھن لگا رہا تھا۔
آہیش۔ دانت پیستے اس نے معائنہ مکمل کیا۔ نرس کو ڈرپ تیار کرکے لگانے کا کہتا اسے گھورتا باہر نکل گیا۔
نرس سنتھیا کودیکھ رہی تھی۔ جی ہائے سنتھئا کا ہاتھ سہلا رہی تھی تکلیف میں یقینا کافی کمی آئی تھی۔ سنتھیا بہتر لگ رہی تھی۔ وہ اطمینان کرتا سن بے کے پاس چلا آیا۔وہ اپنے کمرے میں بیٹھا اسی کی رپورٹس اپنے مانیٹر پردیکھ رہا تھا۔وہ چپ چاپ اسکے مقابل آبیٹھا۔
۔ مسلئہ کیا ہے تم دونوں کے بیچ؟ مانیٹر سے نظر ہٹا کر اس نے گھورا
دے؟ وہ سمجھا نہیں۔
تمہاری یوجا شنگو( لڑکی دوست) بہت کمزور ہے۔شدید ذہنی دبائو کی وجہ سے بچے کی جان کو خطرہ ہے۔ اگر یہ بچہ چاہیئے تو اس سے جھگڑنا بند کرو۔ لڑکیاں جزباتی چڑچڑی ہو جاتی ہیں
Be A man..
وہ۔ ۔در اصل۔ وہ کہتے کہتے رک گیا۔پھر بات بنا دی۔
یہی میں کہہ رہا ہوں اتنی کمزور ہے بچہ کیسے پالے گی میں تو کہہ رہا ہوں معاملہ ختم کرا دیتے ہیں یہ ضد کر رہی ہے پالنے کی۔
اوں ہوں۔
سن بے نے نفی میں سر ہلایا۔
اب بہت دیر ہوگئ ہے۔ قانونی طور پر بھی اور ابھی جو اس لڑکی کی حالت ہے اب ابارشن کا مطلب اسکو قتل کرنا ہوگا۔ خاص کر اگر وہ اس بچے کیلئے جزباتی کیفیت کا شکار ہے۔ ماں بچے کی خاطر بڑے سے بڑا درد جھیل جاتی ہے۔تھوڑی ہمت وہ کرے تھوڑی برداشت تم دکھائو اس پریگننسئ کو جاری رکھو بس خیال رکھو ہو سکتا ہے وہ ریکور کر جائے۔
ڈاکٹر کے دوٹوک جواب پر وہ سر ہلا کر گہری سوچ میں ڈوب گیا۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
وہ کمرے میں آیا تو جی ہائے صوفے پر لیٹ کر سو چکی تھی۔ سنتھیا جاگ رہی تھی مگر رخ دوسری جانب تھا۔ تکیئے سے سر ٹکائے ڈرپ پر نگاہ جمائے تھی۔
وہ دھیرے سے پاس آکر پوچھنے لگا۔
کین چھنا۔
سنتھیا نے چونک کر اسکی شکل دیکھی۔ فکر چہرے سے عیاں تھی اسکے۔ ابھی ان دو گھنٹوں میں جس طرح اس نے مدد کی تھی۔ کیسے اسے اٹھا کر گاڑی میں بٹھایا تھا وہ اسکی جتنی شکر گزار ہوتی کم تھا اسکی آنکھوں سے آنسو بہہ نکلے
شکریہ۔ میں تمہارا احسان نہیں چکا سکتی۔
آنیا۔ وہ بے ساختہ دونوں ہاتھ نفی میں ہلا کر بولا
ایسی کوئی بڑی بات نہیں۔ تم بس کچھ مت سوچو آرام کرو۔یہاں کی فکر مت کرو ۔
اسکے کہنے پر وہ خاموشی سے اسکو دیکھتی رہی۔
کچھ چاہیئے؟ پانی پیوگی؟
اسکی نظروں میں جانے کیا تھا وہ گڑبڑا کر بات بدلنے کو بولا۔
اس نے آہستگی سے سر ہلایا۔ اسکے سر ہلانے پر وہ سائیڈ ٹیبل سے منرل واٹر کی بوتل کھول کر اسکی جانب بڑھانے لگا۔ ناتوانی کی وجہ سے وہ خود سے اٹھنے کی کوشش کرتے ہانپ ہانپ گئ ۔ اس نے احتیاط سے اسکو سہارا دے کر بٹھایا۔ جانے کتنی دیر کی پیاسی تھی۔ آدھی بوتل پیتی چلی گئ۔۔
اب سونے کی کوشش کرو۔
اسکو ہدایت دے کر وہ واپس جانے لگا تو سنتھیا نے پکار لیا۔
کم سن۔
مختلف لہجہ غلط تلفظ مگر مانوس انداز۔ وہ مڑ کر سوالیہ نگاہوں سے دیکھنے لگا۔
وہ اپنے کانوں سے سونے کے ننھے منے سے ٹاپس اتارنے لگی پھر اسکی جانب بڑھا دیئے۔
یہ بہت قیمتی نہیں ہیں مگر کچھ نہ کچھ تو انکا مل جائے گا۔ مجھے اندازہ نہیں اسپتال کے خرچ اس سے پورے ہوں گے یا نہیں مگر میں۔۔
وہ مزید بھی کچھ کہہ رہی تھی اس نے بات کاٹ دی
واپس پہن لو مجھے نہیں چاہییے۔
مجھے اچھا نہیں لگ رہا یوں بوجھ بننا برائے مہربانی اسے رکھ لو میرے ضمیر کا بوجھ ہی کم ہوجائے گا۔۔
وہ اصرار کرنے لگی۔ کم سن کے ذہن میں کوئی پرانی یاد تازہ ہوئی ۔بلا ارادہ سوال کر بیٹھا۔
ایک بات پوچھوں؟
ہوں۔ وہ چونکی۔
تم اس بچے سے محبت کرنے لگی ہو؟
سوال عجیب تھا۔ وہ جواب نہ دے پائی۔ محبت کیا اسے محبت ہے؟ یامحبت کو باندھ کر رکھنے کا بہانہ ہے یہ بچہ۔۔
اس نے لمحہ بھر سوچا جواب واضح تھا۔
ہاں۔ مجھے یہ بہت عزیز ہوگیا ہے۔
ایڈون سے ذیادہ؟
کم سن کا اگلا سوال حاضر تھا۔ وہ الجھن بھرے انداز میں دیکھنے لگی۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
وہ باہر نکلا تو گھر جانے کی نیت سے تھا مگر برفباری ہو رہی تھی۔
وہ کلینک کا دروازہ بند کرکے اندر سے بلائینڈز گرا کر وہیں لابی میں رکھے سنگل سیٹر صوفے پر آکر بیٹھ گیا۔
برفباری ذیادہ ہے ایسے موسم میں ڈرائیو نہیں کرنا چاہیئے۔
اس نے خود کو خود ہی بتایا پھر گہری سانس لیکر سر صوفے کی پشت سے ٹکا دیا۔
کلینک دو کمروں پر مشتمل تھا اس سے ملحق اوپر اسٹوڈیو میں ہی سن بے رہتے تھے۔ اسے اوپر گیلری سے باہر لابی میں بیٹھے دیکھا تو گہری سانس لیکر اسےاوپر بلا لائے۔ گرم کافی بنا کر اسکی جانب بڑھائی۔کمبل تکیہ لا کر اوپن کچن سے ملحق لائونج میں رکھا۔
یہاں لائونج میں سوجانا۔
دے۔
اس نے سر ہلا دیا۔ وہ کمرے میں واپس جاتے جاتے مڑے۔جانے کیا خیال آیا اسے دیکھ کر بولے۔
یاد رکھنا بچہ پیار کی نشانی ہوتا ہے۔گرل فرینڈ اگر ماں بننا چاہتی ہے تو اسکا صرف ایک مطلب ہوتا ہے وہ اپنے بوائے فرینڈ سے بہت اور سچا پیار کرتی ہے۔ تم سچے پیار کی قدر کرو۔
کم سن کافی کا گھونٹ بھرتے بھرتے رک گیا۔
سن بے نے اسکے ردعمل کا انتظار کیا پھر اسے خاموش بیٹھا دیکھ کر اپنے کمرے میں چلے گئے۔
خالی پیٹ کافی۔ اس نے مگ وہیں رکھا اور خود آکر لائونج کے صوفےپر نیم دراز ہوگیا۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
اس دن ہوپ نے جانے رات کیسے گزار دی تھی صبح اٹھ کر جانے کی ضد کرنے لگی ۔
ڈاکٹر اسے ابھی انڈر آبزرویشن رکھنا چاہ رہی تھی مگر اسکی ضد۔ چڑ کر ڈاکٹرنی نے اسکو سمجھانے کو کہا۔
اگر وہ جانا چاہتی ہے تو آپ جانے دیں وہ اپنی حالت بہتر جانتی ہے۔
کم سن کا جواب بالکل غیر متوقع تھا ڈاکٹرنی کیلئے۔ وہ تو وہ ہوپ بھی لمحہ بھر اسکی شکل دیکھنے لگی تھئ۔
مجھے سمجھ نہیں آتا تم لوگوں کا۔ اگر بچوں سے اتنئ چڑ ہوتی ہے تو احتیاط کیوں نہیں برتتے ہو۔ پہلے ابارشن کرکے جان لی۔ اپنی بھی جان خطرے میں ڈالی اور اب اپنا خیال نہ رکھ کر تم آئیندہ کے دروازے بھی بند کردو۔
ہونہہ مجھے کیا۔
وہ چڑ کر بکتی جھکتی چلی گئ۔
ہوپ اپنا پرس اٹھا کر جانے کو تیار ہوگئ۔
میں تمہیں وائر کردوں گئ مگر کل۔ آج ابھی مجھے انتظام۔
کہتے کہتے اسے چکر سا آگیا تھا دھپ سے بیڈ پر بیٹھنا پڑا۔
کل کیوں آج ہی سب پیسے واپس کرو بلکہ ابھی۔ وہ بھنا گیا۔
مسلئہ کیا ہے تمہارے ساتھ۔ ایک تو غلط انسان پر بھروسہ کیا اوپر سے خود کو سزا دے رہی ہو۔
تمہیں لگتا ہے مجھے زندگی نے اتنے خوبصورت دن دکھائے ہیں کہ میں محبت کی نشانی مٹاتی پھری ہوں۔
وہ ایکدم بھڑک کر بولی۔ کم سن ایکدم چپ ہی رہ گیا۔۔وہ تو یہی سمجھا تھا شائد بریک اپ کے بعد اس نے ابارشن کروالیا۔
نا یہ محبت کی نشانی تھی نا کسی ایک شخص کا انعام۔ چین سے شمالی کوریا واپس نہ جانے کا تاوان تھا چین میں رہنے کا ہرجانہ اور جنوبی کوریا کا ٹکٹ تھا۔
وہ ایکدم سے جنونی سی ہو کر چیخ چیخ کربولی۔ اسکی جزباتی کیفیت بالکل بھی نارمل نہیں تھی۔ دوائوں کے زیر اثر وہ ہانپ بھی رہی تھی کانپ بھی۔ چیخنے کی کوشش میں آواز پھٹ سی رہی تھی۔ وہ گھبرا گیا۔
ہوپ پریشان مت ہو۔ خود کو سنبھالو۔
اس نے آگے بڑھ کر اسکو سہارا دینا چاہا اس نے اسکا ہاتھ جھٹک دیا۔
نہیں چاہیئے مجھے ایسی کوئی نشانی جو اس بدبودار ماضئ کی یاد دلاتی رہے اسی لیئے اسی لیے میں نے۔
وہ خود پر سے جیسے نادیدہ گندگی جھاڑنے لگی۔
گھن آتئ تھئ مجھے اپنے اندر پلتے اس ناسور سے ۔ گھن آرہی ہے ابھئ بھئ۔۔ مجھے اپنے وجود سے بھی۔ وہ خود بھی نہیں جانتی تھی کہ وہ پھوٹ پھوٹ کر رو پڑی ہے۔ اسکے دونوں ہاتھوں کو تھام کر اسے روکنے میں وہ ہلکان ہوگیا تھا۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
اس نے کروٹ بدلی۔۔۔ اسکا ذہن الجھا ہوا تھا۔
سنتھیا اسکے سوال پر ہنس دی تھی۔
بچپن میں ہمیں بڑے اکثر تنگ کرنے کیلئے پوچھتے تھے کہ ماما سے ذیادہ محبت ہے یا پاپا سے۔ ہم کسی ایک کا نام نہیں لے پاتے تھے دونوں سے ہے کوئی ذیادہ تکرار کرے تو رو دیتےتھے۔ کبھی فیصلہ نہیں کر پائے۔مگر آج جب خود ماں بنی ہوں تو احساس ہورہاہے ماں کیلئے تو فیصلہ مکمل اور یک طرفہ ہوتا ہے۔ بچے کے باپ سے جتنی بھی محبت ہو بچے سے پیاراس محبت سے دگنا ہوتا ہے۔
جی ہائے جانے کب جاگ گئ تھی۔ اسکی جانب سے خاصا غیر متوقع سوال آیا تھا۔ کم سن اور سنتھیا دونوں چونکے تھے۔
کیہہ سوری۔ (یہ کیا فضلہ ہے)
کم ذیادہ بھاڑ میں ڈالو یہ بتائو تمہیں ابھی بھی ایڈون سے محبت ہے؟ آہیش۔۔۔ حیرت ہی ہے مجھے۔ اگلے نے تمہیں حقیقتا سڑک پر لا چھوڑا ہے ، ذمہ داریوں سے بھاگنے والے اس بھگوڑے کیہہ سیکی سے اگر اس سب کے بعد بھی محبت ہے نا تو جائو تم اسی کے پاس جان چھڑائو اس سے جو تمہاری محبت میں حائل ہو رہا ہے۔
جی ہائے نے اسے ٹھیک ٹھاک سنا دی۔ سنتھیا کا رنگ زرد پڑگیا تھا۔
جی ہائے۔ کم سن نے اسے گھور کر باز رکھنا چاہا تھا۔مگر جی ہائے رکی نہیں۔
محبت پرفلسفیانہ موڈ رات کے د وبجے ہا ہا۔ آگاشی آپکے بے حد پیار کرنے والدین اور آپکا پیارا پہلا پیار دونوں کو ہی آپکے اس بچے جس سے اب آپکو دنیا میں سب سے ذیادہ پیار ہے بالکل دلچسپی نہیں۔ اب آپ کیا کیجئے گا ؟
وہ صوفے سے اتر کر اسکے سامنے آکھڑی ہوئی
سنتھیا بٹر بٹر گم صم سی بیٹھی اسکی شکل دیکھ رہی تھی۔وہ کچھ غلط نہیں کہہ رہی تھی۔
اگر تم ایڈون سے بریک اپ کرتی ہو میرا وعدہ ہے میں جو ممکن ہو سکا مدد کروں گی تمہاری اور اگر ابھی بھی اس کمینے کیلیئے دل میں نرم گوشہ ہے تو صبح جائو پولیس اسٹیشن بیان دو میرا اور کم سن کا مزید وقت اور پیسہ برباد مت کرو۔
پولیس اسٹیشن کیوں؟ وہ کم سن کی جانب سوالیہ نظروں سے دیکھ رہی تھی۔
وہ۔ کم سن نے سر کھجایا۔ جی ہائے نے یہاں بھی اسے جواب کی زحمت سے بچا لیا
تمہارے والدین نے اسے تمہاری گمشدگی کا زمہ دار ٹھہرا کر جیل میں بند کروادیا ہے۔
کیا۔ وہ بری طرح متوحش ہوگئی تھی۔
کب سے ؟
ایک ڈیڑھ ہفتہ ہو رہا ہے۔
کم سن نے آہستگی سے بتایا۔ وہ سر پکڑ کر رہ گئ۔
پھر کیا فیصلہ ہے تمہارا ایڈون یا یہ بچہ؟
جی ہائے کو حقیقتا غصہ آرہا تھا۔ اسکے پیچھے وہ کم سن سے لڑی او روہ ابھی بھی ایڈون کے لیئے پریشان ہو رہی تھی۔
ایڈون۔۔۔
اس نے شائد جی ہائے کی بات سنی بھی نہیں تھی۔
ایڈون سے ملاقات ہوئی ہے تمہاری؟ ٹھیک تو ہے وہ؟
وہ فکرمندی سے کم سن سے مخاطب تھی۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
کم سن نے پھر کروٹ بدلی۔ پھر چڑ کر کمبل اتارتا اٹھ بیٹھا۔
ہائیش۔ میرے اپنے مسلئے کم پڑ گئے ہیں جو تم دوسروں کے معاملے سلجھانے بیٹھ گئے ہو۔
اس نے اپنے سر پر بنا لحاظ چپیڑ لگا دی۔ او رتھوڑی زو رسے لگا دی جبھی اگلے ہی لمحے اپنا سر پکڑ کر کراہ رہا تھا۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
ختم شد۔
جاری ہے۔

Kesi lagi apko yeh qist ? rate us below

Rating

By Syeda Vaiza Zaidi

Vaiza Zaidi is a female writer who writes Urdu web novels online. She is one of the most popular and prolific writers in the Urdu literature scene. She has written over 50 novels in different genres, such as romance, thriller, comedy, and social issues. She has a large fan following who admire her for her creativity, style, and humor. She is also an active blogger who shares her views on various topics related to Urdu culture, literature, and society. She is an inspiring role model for many young and aspiring Urdu writers.

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *