افسانچہ * تم*
اس نے بڑے انداز سے گھٹنے کے بل بیٹھ کر اسکی جانب گلاب کا پھول بڑھاتے ہوئے کہا
قسم سے میری زندگی میں صرف تم ہو۔۔
اس نے نگاہ اٹھا کر اسکے بڑھے ہوئے ہاتھ کو دیکھا پھر شرماتے ہوئے داہنا ہاتھ بڑھانے کو تھی کہ خیال آیا داہنا ہاتھ تو منگنئ کی انگوٹھی سے سجا ہے سو فورا کمر کے پیچھے ہاتھ کرتے ہوئے غیر محسوس انداز میں بایاں ہاتھ بڑھا کر گلاب کا پھول تھام کر بولی
میری زندگی میں آنے والے تم پہلے اور آخری شخص ہو۔۔
خوشی سے سرشار ہوتے ہوئے وہ اٹھ کھڑا ہوا ۔پشت پر جھوٹی قسم کے عذاب سے بچنے کو اس نے ایک ہاتھ سے شہادت اور درمیان والی انگلی سے کاٹے کا نشان بنا رکھا تھا۔۔۔

ختم شد

Kesa laga apko yeh Afsancha? Rate us below

Rating
https://vt.tiktok.com/ZSF7Ynu3e

By Syeda Vaiza Zaidi

Vaiza Zaidi is a female writer who writes Urdu web novels online. She is one of the most popular and prolific writers in the Urdu literature scene. She has written over 50 novels in different genres, such as romance, thriller, comedy, and social issues. She has a large fan following who admire her for her creativity, style, and humor. She is also an active blogger who shares her views on various topics related to Urdu culture, literature, and society. She is an inspiring role model for many young and aspiring Urdu writers.

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *