salam korea 

by vaiza zaidi

salam korea 

by vaiza zaidi

urdu poetry,
urdu shayari,
sad poetry in urdu
love poetry in urdu
jaun elia
allama iqbal poetry
poetry in urdu 2 lines
urdu shayri
sad poetry in urdu 2 lines
ahmad faraz
ghalib shayari
attitude poetry in urdu
sad quotes in urdu
funny poetry in urdu
romantic poetry in urdu
allama iqbal shayari
best poetry in urdu
bewafa poetry
sad shayari urdu
islamic poetry in urdu
barish poetry
poetry in urdu attitude
ghalib poetry
allama iqbal poetry in urdu
attitude quotes in urdu
poetry in urdu text
deep poetry in urdu
sad poetry in urdu text
love shayari urdu
ghazal in urdu
urdu poetry in urdu text
mirza ghalib shayari
love poetry in urdu romantic
urdu shayari on life
rekhta shayari
jaun elia poetry
iqbal shayari
deep lines in urdu
sad love poetry in urdu
urdu poetry sms
best shayari in urdu
death poetry in urdu
funny shayari in urdu
dosti poetry in urdu
father quotes in urdu
birthday poetry in urdu
poetry status
eid poetry
Hajoom e tanhai poetry,
Vaiza zaidi poetry,
jaun elia shayari,
urdu poetry text copy,
attitude poetry in urdu 2 lines text,
urdu shayari in english,
shero shayari urdu,
munafiq poetry,
mirza ghalib poetry,
romantic shayari in urdu,
allama iqbal ki shayari,
heart touching poetry in urdu 2 lines sms,
poetry in urdu 2 lines attitude,
john elia sad poetry,
sad poetry sms in urdu 2 lines text messages,
john elia shayari,
2 line urdu poetry copy paste,
dukhi poetry,
heart touching quotes in urdu,
mohsin naqvi poetry,
beautiful poetry in urdu,
udas poetry,
friendship poetry in urdu,
muhabbat poetry,
urdu sher,
one line quotes in urdu,
dosti shayari urdu,
sad poetry status,
narazgi poetry,
judai poetry,
ghalib shayari in urdu,
faiz ahmad faiz shayari,
barish poetry in urdu,
urdu one line caption copy paste,
wasi shah poetry,
most romantic love poetry in urdu,
khamoshi poetry,
love poetry in urdu text,
sad poetry sms in urdu 2 lines,
sad poetry in urdu 2 lines about life,
urdu poetry status,
islamic poetry in urdu 2 lines,
jon elia poetry,
funny poetry in urdu for friends,
attitude shayari in urdu,
allama iqbal poetry in urdu for students,
Zawwar haider poetry,
mohabbat shayari urdu,
jaun elia sad poetry,
sad poetry sms,
urdu poetry written,

urdu novels,urdu novels,
urdu poetry,
urdu afsanay,
urdu statuses,
urdu shayari,
sad poetry in urdu,
love poetry in urdu,
poetry in urdu 2 lines,
urdu shayri,
sad poetry in urdu 2 lines,
ahmad faraz,
romantic poetry in urdu,
best poetry in urdu,
bewafa poetry,
sad shayari urdu,
barish poetry,
poetry in urdu text,
deep poetry in urdu,
sad poetry in urdu text,
love shayari urdu,
ghazal in urdu,
urdu poetry in urdu text,
love poetry in urdu romantic,
urdu shayari on life,
deep lines in urdu,
sad love poetry in urdu,
urdu poetry sms,
best shayari in urdu,
very sad poetry in urdu images,
novels in urdu pdf,
urdu books,
bewafa poetry in urdu,
best urdu novels,
urdu poetry text copy,
urdu shayari in english,
shero shayari urdu,
romantic shayari in urdu,
heart touching poetry in urdu 2 lines sms,
sad poetry sms in urdu 2 lines text messages,
2 line urdu poetry copy paste,
famous urdu novels,
beautiful poetry in urdu,
udas poetry,
muhabbat poetry,
urdu sher,
barish poetry in urdu,
most romantic love poetry in urdu,
khamoshi poetry,
love poetry in urdu text,
sad poetry sms in urdu 2 lines,
sad poetry in urdu 2 lines about life,
ahmed faraz poetry,
mohabbat shayari urdu,
sad poetry sms,
urdu poetry written,
love poetry in urdu romantic 2 line,
attitude poetry in urdu text,
heart touching poetry in urdu,
sad ghazal in urdu,
2 line urdu poetry romantic sms,
ahmad faraz poetry,
poetry about life in urdu,
urdu words for poetry,
urdu poetry copy paste,
urdu poetry in english,
ahmad faraz shayari,
bewafa shayari urdu,
love poetry in urdu 2 lines,
urdu ghazal poetry,
poetry in urdu 2 lines deep
sad lines in urdu,
faraz shayari,
urdu words for shayari,
urdu sad poetry sms in urdu writing,
dard poetry,
happy poetry in urdu,
urdu love poetry for her,
faraz poetry,
ali zaryoun shayari,
shayari in urdu words,
very sad shayari urdu,
ishq poetry in urdu,
urdu shayari images,
2 lines poetry,
new poetry in urdu,
urdu poetry in hindi,
urdu poetry lines,
one line poetry in urdu,
poetry on beauty in urdu,
one line poetry in urdu text,
muskurahat poetry,
sad poetry in urdu 2 lines without images,
mohabbat poetry in urdu,
nice poetry in urdu,
best love poetry in urdu,
muhabbat poetry in urdu,
best lines in urdu,
deep love poetry in urdu,
beautiful shayari in urdu,
urdu sad poetry sms,

Novel urdu adab,
urdu digests,
raja gidh,
urdu novels list,
raqs e bismil novel,
novels in urdu pdf,
urdu books,
best urdu novels,
famous urdu novels,
free urdu digest,
naseem hijazi,
best urdu novels list,
raja gidh pdf,
urdu books library,
new urdu novels,
jangloos,
list of urdu books,
urdu story books,
bano qudsia books,
pdf urdu books,
famous urdu novels list,
best pakistani novels in urdu,
urdu stories pdf,
naseem hijazi novels,
urdu novels online,
udaas naslain,
best urdu novels pdf,
latest urdu novels,
short novels in urdu,,
romantic story urdu,
urdu best books,
best urdu books to read,
pakeeza anchal online reading,
ismat chughtai books,
urdu digest novels,
urdu books online,
urdu literature books,
islamic books urdu,
udas naslain pdf,
urdu poetry books,
urdu novel online reading,
jasoosi digest,
novel novels in urdu,
urdu audio books,
top urdu novels,
romance novel best novels in urdu,
wasif ali wasif books pdf,
urdu language books pdf,
tahir javed mughal novels,
urdu digest pdf,
naseem hijazi books,
best books to read in urdu,
ashfaq ahmed books pdf,
dastak novel,
a hameed novels,
psychology books in urdu,
bano qudsia novels,
pakeeza anchal romantic novel,
pyasa sawan novel,
free urdu novels,
anchal digest novels,
raqs bismil nove,l
urdu poetry books pdf,
new novel 2021 in urdu,
urdu novels 2021,
love story novel in urdu,
urdu history books,
raja gidh read online,
jasoosi novel,
urdu love novels list,
pakistani novels in urdu,
urdu historical novels,
romance novel famous urdu novels list,
romance novel urdu novels list


urdu poetry,
urdu shayari,
sad poetry in urdu
love poetry in urdu
jaun elia
allama iqbal poetry
poetry in urdu 2 lines
urdu shayri
sad poetry in urdu 2 lines
ahmad faraz
ghalib shayari
attitude poetry in urdu
sad quotes in urdu
funny poetry in urdu
romantic poetry in urdu
allama iqbal shayari
best poetry in urdu
bewafa poetry
sad shayari urdu
islamic poetry in urdu
barish poetry
poetry in urdu attitude
ghalib poetry
allama iqbal poetry in urdu
attitude quotes in urdu
poetry in urdu text
deep poetry in urdu
sad poetry in urdu text
love shayari urdu
ghazal in urdu
urdu poetry in urdu text
mirza ghalib shayari
love poetry in urdu romantic
urdu shayari on life
rekhta shayari
jaun elia poetry
iqbal shayari
deep lines in urdu
sad love poetry in urdu
urdu poetry sms
best shayari in urdu
death poetry in urdu
funny shayari in urdu
dosti poetry in urdu
father quotes in urdu
birthday poetry in urdu
poetry status
eid poetry
Hajoom e tanhai poetry,
Vaiza zaidi poetry,
jaun elia shayari,
urdu poetry text copy,
attitude poetry in urdu 2 lines text,
urdu shayari in english,
shero shayari urdu,
munafiq poetry,
mirza ghalib poetry,
romantic shayari in urdu,
allama iqbal ki shayari,
heart touching poetry in urdu 2 lines sms,
poetry in urdu 2 lines attitude,
john elia sad poetry,
sad poetry sms in urdu 2 lines text messages,
john elia shayari,
2 line urdu poetry copy paste,
dukhi poetry,
heart touching quotes in urdu,
mohsin naqvi poetry,
beautiful poetry in urdu,
udas poetry,
friendship poetry in urdu,
muhabbat poetry,
urdu sher,
one line quotes in urdu,
dosti shayari urdu,
sad poetry status,
narazgi poetry,
judai poetry,
ghalib shayari in urdu,
faiz ahmad faiz shayari,
barish poetry in urdu,
urdu one line caption copy paste,
wasi shah poetry,
most romantic love poetry in urdu,
khamoshi poetry,
love poetry in urdu text,
sad poetry sms in urdu 2 lines,
sad poetry in urdu 2 lines about life,
urdu poetry status,
islamic poetry in urdu 2 lines,
jon elia poetry,
funny poetry in urdu for friends,
attitude shayari in urdu,
allama iqbal poetry in urdu for students,
Zawwar haider poetry,
mohabbat shayari urdu,
jaun elia sad poetry,
sad poetry sms,
urdu poetry written,

urdu novels,urdu novels,
urdu poetry,
urdu afsanay,
urdu statuses,
urdu shayari,
sad poetry in urdu,
love poetry in urdu,
poetry in urdu 2 lines,
urdu shayri,
sad poetry in urdu 2 lines,
ahmad faraz,
romantic poetry in urdu,
best poetry in urdu,
bewafa poetry,
sad shayari urdu,
barish poetry,
poetry in urdu text,
deep poetry in urdu,
sad poetry in urdu text,
love shayari urdu,
ghazal in urdu,
urdu poetry in urdu text,
love poetry in urdu romantic,
urdu shayari on life,
deep lines in urdu,
sad love poetry in urdu,
urdu poetry sms,
best shayari in urdu,
very sad poetry in urdu images,
novels in urdu pdf,
urdu books,
bewafa poetry in urdu,
best urdu novels,
urdu poetry text copy,
urdu shayari in english,
shero shayari urdu,
romantic shayari in urdu,
heart touching poetry in urdu 2 lines sms,
sad poetry sms in urdu 2 lines text messages,
2 line urdu poetry copy paste,
famous urdu novels,
beautiful poetry in urdu,
udas poetry,
muhabbat poetry,
urdu sher,
barish poetry in urdu,
most romantic love poetry in urdu,
khamoshi poetry,
love poetry in urdu text,
sad poetry sms in urdu 2 lines,
sad poetry in urdu 2 lines about life,
ahmed faraz poetry,
mohabbat shayari urdu,
sad poetry sms,
urdu poetry written,
love poetry in urdu romantic 2 line,
attitude poetry in urdu text,
heart touching poetry in urdu,
sad ghazal in urdu,
2 line urdu poetry romantic sms,
ahmad faraz poetry,
poetry about life in urdu,
urdu words for poetry,
urdu poetry copy paste,
urdu poetry in english,
ahmad faraz shayari,
bewafa shayari urdu,
love poetry in urdu 2 lines,
urdu ghazal poetry,
poetry in urdu 2 lines deep
sad lines in urdu,
faraz shayari,
urdu words for shayari,
urdu sad poetry sms in urdu writing,
dard poetry,
happy poetry in urdu,
urdu love poetry for her,
faraz poetry,
ali zaryoun shayari,
shayari in urdu words,
very sad shayari urdu,
ishq poetry in urdu,
urdu shayari images,
2 lines poetry,
new poetry in urdu,
urdu poetry in hindi,
urdu poetry lines,
one line poetry in urdu,
poetry on beauty in urdu,
one line poetry in urdu text,
muskurahat poetry,
sad poetry in urdu 2 lines without images,
mohabbat poetry in urdu,
nice poetry in urdu,
best love poetry in urdu,
muhabbat poetry in urdu,
best lines in urdu,
deep love poetry in urdu,
beautiful shayari in urdu,
urdu sad poetry sms,

novel

urdu adab,
urdu digests,
raja gidh,
urdu novels list,
raqs e bismil novel,
novels in urdu pdf,
urdu books,
best urdu novels,
famous urdu novels,
free urdu digest,
naseem hijazi,
best urdu novels list,
raja gidh pdf,
urdu books library,
new urdu novels,
jangloos,
list of urdu books,
urdu story books,
bano qudsia books,
pdf urdu books,
famous urdu novels list,
best pakistani novels in urdu,
urdu stories pdf,
naseem hijazi novels,
urdu novels online,
udaas naslain,
best urdu novels pdf,
latest urdu novels,
short novels in urdu,,
romantic story urdu,
urdu best books,
best urdu books to read,
pakeeza anchal online reading,
ismat chughtai books,
urdu digest novels,
urdu books online,
urdu literature books,
islamic books urdu,
udas naslain pdf,
urdu poetry books,
urdu novel online reading,
jasoosi digest,
novel novels in urdu,
urdu audio books,
top urdu novels,
romance novel best novels in urdu,
wasif ali wasif books pdf,
urdu language books pdf,
tahir javed mughal novels,
urdu digest pdf,
naseem hijazi books,
best books to read in urdu,
ashfaq ahmed books pdf,
dastak novel,
a hameed novels,
psychology books in urdu,
bano qudsia novels,
pakeeza anchal romantic novel,
pyasa sawan novel,
free urdu novels,
anchal digest novels,
raqs bismil nove,l
urdu poetry books pdf,
new novel 2021 in urdu,
urdu novels 2021,
love story novel in urdu,
urdu history books,
raja gidh read online,
jasoosi novel,
urdu love novels list,
pakistani novels in urdu,
urdu historical novels,
romance novel famous urdu novels list,
romance novel urdu novels list
urdu poetry,
urdu shayari,
sad poetry in urdu
love poetry in urdu
jaun elia
allama iqbal poetry
poetry in urdu 2 lines
urdu shayri
sad poetry in urdu 2 lines
ahmad faraz
ghalib shayari
attitude poetry in urdu
sad quotes in urdu
funny poetry in urdu
romantic poetry in urdu
allama iqbal shayari
best poetry in urdu
bewafa poetry
sad shayari urdu
islamic poetry in urdu
barish poetry
poetry in urdu attitude
ghalib poetry
allama iqbal poetry in urdu
attitude quotes in urdu
poetry in urdu text
deep poetry in urdu
sad poetry in urdu text
love shayari urdu
ghazal in urdu
urdu poetry in urdu text
mirza ghalib shayari
love poetry in urdu romantic
urdu shayari on life
rekhta shayari
jaun elia poetry
iqbal shayari
deep lines in urdu
sad love poetry in urdu
urdu poetry sms
best shayari in urdu
death poetry in urdu
funny shayari in urdu
dosti poetry in urdu
father quotes in urdu
birthday poetry in urdu
poetry status
eid poetry
Hajoom e tanhai poetry,
Vaiza zaidi poetry,
jaun elia shayari,
urdu poetry text copy,
attitude poetry in urdu 2 lines text,
urdu shayari in english,
shero shayari urdu,
munafiq poetry,
mirza ghalib poetry,
romantic shayari in urdu,
allama iqbal ki shayari,
heart touching poetry in urdu 2 lines sms,
poetry in urdu 2 lines attitude,
john elia sad poetry,
sad poetry sms in urdu 2 lines text messages,
john elia shayari,
2 line urdu poetry copy paste,
dukhi poetry,
heart touching quotes in urdu,
mohsin naqvi poetry,
beautiful poetry in urdu,
udas poetry,
friendship poetry in urdu,
muhabbat poetry,
urdu sher,
one line quotes in urdu,
dosti shayari urdu,
sad poetry status,
narazgi poetry,
judai poetry,
ghalib shayari in urdu,
faiz ahmad faiz shayari,
barish poetry in urdu,
urdu one line caption copy paste,
wasi shah poetry,
most romantic love poetry in urdu,
khamoshi poetry,
love poetry in urdu text,
sad poetry sms in urdu 2 lines,
sad poetry in urdu 2 lines about life,
urdu poetry status,
islamic poetry in urdu 2 lines,
jon elia poetry,
funny poetry in urdu for friends,
attitude shayari in urdu,
allama iqbal poetry in urdu for students,
Zawwar haider poetry,
mohabbat shayari urdu,
jaun elia sad poetry,
sad poetry sms,
urdu poetry written,

urdu novels,urdu novels,
urdu poetry,
urdu afsanay,
urdu statuses,
urdu shayari,
sad poetry in urdu,
love poetry in urdu,
poetry in urdu 2 lines,
urdu shayri,
sad poetry in urdu 2 lines,
ahmad faraz,
romantic poetry in urdu,
best poetry in urdu,
bewafa poetry,
sad shayari urdu,
barish poetry,
poetry in urdu text,
deep poetry in urdu,
sad poetry in urdu text,
love shayari urdu,
ghazal in urdu,
urdu poetry in urdu text,
love poetry in urdu romantic,
urdu shayari on life,
deep lines in urdu,
sad love poetry in urdu,
urdu poetry sms,
best shayari in urdu,
very sad poetry in urdu images,
novels in urdu pdf,
urdu books,
bewafa poetry in urdu,
best urdu novels,
urdu poetry text copy,
urdu shayari in english,
shero shayari urdu,
romantic shayari in urdu,
heart touching poetry in urdu 2 lines sms,
sad poetry sms in urdu 2 lines text messages,
2 line urdu poetry copy paste,
famous urdu novels,
beautiful poetry in urdu,
udas poetry,
muhabbat poetry,
urdu sher,
barish poetry in urdu,
most romantic love poetry in urdu,
khamoshi poetry,
love poetry in urdu text,
sad poetry sms in urdu 2 lines,
sad poetry in urdu 2 lines about life,
ahmed faraz poetry,
mohabbat shayari urdu,
sad poetry sms,
urdu poetry written,
love poetry in urdu romantic 2 line,
attitude poetry in urdu text,
heart touching poetry in urdu,
sad ghazal in urdu,
2 line urdu poetry romantic sms,
ahmad faraz poetry,
poetry about life in urdu,
urdu words for poetry,
urdu poetry copy paste,
urdu poetry in english,
ahmad faraz shayari,
bewafa shayari urdu,
love poetry in urdu 2 lines,
urdu ghazal poetry,
poetry in urdu 2 lines deep
sad lines in urdu,
faraz shayari,
urdu words for shayari,
urdu sad poetry sms in urdu writing,
dard poetry,
happy poetry in urdu,
urdu love poetry for her,
faraz poetry,
ali zaryoun shayari,
shayari in urdu words,
very sad shayari urdu,
ishq poetry in urdu,
urdu shayari images,
2 lines poetry,
new poetry in urdu,
urdu poetry in hindi,
urdu poetry lines,
one line poetry in urdu,
poetry on beauty in urdu,
one line poetry in urdu text,
muskurahat poetry,
sad poetry in urdu 2 lines without images,
mohabbat poetry in urdu,
nice poetry in urdu,
best love poetry in urdu,
muhabbat poetry in urdu,
best lines in urdu,
deep love poetry in urdu,
beautiful shayari in urdu,
urdu sad poetry sms,

Novel urdu adab,
urdu digests,
raja gidh,
urdu novels list,
raqs e bismil novel,
novels in urdu pdf,
urdu books,
best urdu novels,
famous urdu novels,
free urdu digest,
naseem hijazi,
best urdu novels list,
raja gidh pdf,
urdu books library,
new urdu novels,
jangloos,
list of urdu books,
urdu story books,
bano qudsia books,
pdf urdu books,
famous urdu novels list,
best pakistani novels in urdu,
urdu stories pdf,
naseem hijazi novels,
urdu novels online,
udaas naslain,
best urdu novels pdf,
latest urdu novels,
short novels in urdu,,
romantic story urdu,
urdu best books,
best urdu books to read,
pakeeza anchal online reading,
ismat chughtai books,
urdu digest novels,
urdu books online,
urdu literature books,
islamic books urdu,
udas naslain pdf,
urdu poetry books,
urdu novel online reading,
jasoosi digest,
novel novels in urdu,
urdu audio books,
top urdu novels,
romance novel best novels in urdu,
wasif ali wasif books pdf,
urdu language books pdf,
tahir javed mughal novels,
urdu digest pdf,
naseem hijazi books,
best books to read in urdu,
ashfaq ahmed books pdf,
dastak novel,
a hameed novels,
psychology books in urdu,
bano qudsia novels,
pakeeza anchal romantic novel,
pyasa sawan novel,
free urdu novels,
anchal digest novels,
raqs bismil nove,l
urdu poetry books pdf,
new novel 2021 in urdu,
urdu novels 2021,
love story novel in urdu,
urdu history books,
raja gidh read online,
jasoosi novel,
urdu love novels list,
pakistani novels in urdu,
urdu historical novels,
romance novel famous urdu novels list,
romance novel urdu novels list


urdu poetry,
urdu shayari,
sad poetry in urdu
love poetry in urdu
jaun elia
allama iqbal poetry
poetry in urdu 2 lines
urdu shayri
sad poetry in urdu 2 lines
ahmad faraz
ghalib shayari
attitude poetry in urdu
sad quotes in urdu
funny poetry in urdu
romantic poetry in urdu
allama iqbal shayari
best poetry in urdu
bewafa poetry
sad shayari urdu
islamic poetry in urdu
barish poetry
poetry in urdu attitude
ghalib poetry
allama iqbal poetry in urdu
attitude quotes in urdu
poetry in urdu text
deep poetry in urdu
sad poetry in urdu text
love shayari urdu
ghazal in urdu
urdu poetry in urdu text
mirza ghalib shayari
love poetry in urdu romantic
urdu shayari on life
rekhta shayari
jaun elia poetry
iqbal shayari
deep lines in urdu
sad love poetry in urdu
urdu poetry sms
best shayari in urdu
death poetry in urdu
funny shayari in urdu
dosti poetry in urdu
father quotes in urdu
birthday poetry in urdu
poetry status
eid poetry
Hajoom e tanhai poetry,
Vaiza zaidi poetry,
jaun elia shayari,
urdu poetry text copy,
attitude poetry in urdu 2 lines text,
urdu shayari in english,
shero shayari urdu,
munafiq poetry,
mirza ghalib poetry,
romantic shayari in urdu,
allama iqbal ki shayari,
heart touching poetry in urdu 2 lines sms,
poetry in urdu 2 lines attitude,
john elia sad poetry,
sad poetry sms in urdu 2 lines text messages,
john elia shayari,
2 line urdu poetry copy paste,
dukhi poetry,
heart touching quotes in urdu,
mohsin naqvi poetry,
beautiful poetry in urdu,
udas poetry,
friendship poetry in urdu,
muhabbat poetry,
urdu sher,
one line quotes in urdu,
dosti shayari urdu,
sad poetry status,
narazgi poetry,
judai poetry,
ghalib shayari in urdu,
faiz ahmad faiz shayari,
barish poetry in urdu,
urdu one line caption copy paste,
wasi shah poetry,
most romantic love poetry in urdu,
khamoshi poetry,
love poetry in urdu text,
sad poetry sms in urdu 2 lines,
sad poetry in urdu 2 lines about life,
urdu poetry status,
islamic poetry in urdu 2 lines,
jon elia poetry,
funny poetry in urdu for friends,
attitude shayari in urdu,
allama iqbal poetry in urdu for students,
Zawwar haider poetry,
mohabbat shayari urdu,
jaun elia sad poetry,
sad poetry sms,
urdu poetry written,

urdu novels,urdu novels,
urdu poetry,
urdu afsanay,
urdu statuses,
urdu shayari,
sad poetry in urdu,
love poetry in urdu,
poetry in urdu 2 lines,
urdu shayri,
sad poetry in urdu 2 lines,
ahmad faraz,
romantic poetry in urdu,
best poetry in urdu,
bewafa poetry,
sad shayari urdu,
barish poetry,
poetry in urdu text,
deep poetry in urdu,
sad poetry in urdu text,
love shayari urdu,
ghazal in urdu,
urdu poetry in urdu text,
love poetry in urdu romantic,
urdu shayari on life,
deep lines in urdu,
sad love poetry in urdu,
urdu poetry sms,
best shayari in urdu,
very sad poetry in urdu images,
novels in urdu pdf,
urdu books,
bewafa poetry in urdu,
best urdu novels,
urdu poetry text copy,
urdu shayari in english,
shero shayari urdu,
romantic shayari in urdu,
heart touching poetry in urdu 2 lines sms,
sad poetry sms in urdu 2 lines text messages,
2 line urdu poetry copy paste,
famous urdu novels,
beautiful poetry in urdu,
udas poetry,
muhabbat poetry,
urdu sher,
barish poetry in urdu,
most romantic love poetry in urdu,
khamoshi poetry,
love poetry in urdu text,
sad poetry sms in urdu 2 lines,
sad poetry in urdu 2 lines about life,
ahmed faraz poetry,
mohabbat shayari urdu,
sad poetry sms,
urdu poetry written,
love poetry in urdu romantic 2 line,
attitude poetry in urdu text,
heart touching poetry in urdu,
sad ghazal in urdu,
2 line urdu poetry romantic sms,
ahmad faraz poetry,
poetry about life in urdu,
urdu words for poetry,
urdu poetry copy paste,
urdu poetry in english,
ahmad faraz shayari,
bewafa shayari urdu,
love poetry in urdu 2 lines,
urdu ghazal poetry,
poetry in urdu 2 lines deep
sad lines in urdu,
faraz shayari,
urdu words for shayari,
urdu sad poetry sms in urdu writing,
dard poetry,
happy poetry in urdu,
urdu love poetry for her,
faraz poetry,
ali zaryoun shayari,
shayari in urdu words,
very sad shayari urdu,
ishq poetry in urdu,
urdu shayari images,
2 lines poetry,
new poetry in urdu,
urdu poetry in hindi,
urdu poetry lines,
one line poetry in urdu,
poetry on beauty in urdu,
one line poetry in urdu text,
muskurahat poetry,
sad poetry in urdu 2 lines without images,
mohabbat poetry in urdu,
nice poetry in urdu,
best love poetry in urdu,
muhabbat poetry in urdu,
best lines in urdu,
deep love poetry in urdu,
beautiful shayari in urdu,
urdu sad poetry sms,

novel

urdu adab,
urdu digests,
raja gidh,
urdu novels list,
raqs e bismil novel,
novels in urdu pdf,
urdu books,
best urdu novels,
famous urdu novels,
free urdu digest,
naseem hijazi,
best urdu novels list,
raja gidh pdf,
urdu books library,
new urdu novels,
jangloos,
list of urdu books,
urdu story books,
bano qudsia books,
pdf urdu books,
famous urdu novels list,
best pakistani novels in urdu,
urdu stories pdf,
naseem hijazi novels,
urdu novels online,
udaas naslain,
best urdu novels pdf,
latest urdu novels,
short novels in urdu,,
romantic story urdu,
urdu best books,
best urdu books to read,
pakeeza anchal online reading,
ismat chughtai books,
urdu digest novels,
urdu books online,
urdu literature books,
islamic books urdu,
udas naslain pdf,
urdu poetry books,
urdu novel online reading,
jasoosi digest,
novel novels in urdu,
urdu audio books,
top urdu novels,
romance novel best novels in urdu,
wasif ali wasif books pdf,
urdu language books pdf,
tahir javed mughal novels,
urdu digest pdf,
naseem hijazi books,
best books to read in urdu,
ashfaq ahmed books pdf,
dastak novel,
a hameed novels,
psychology books in urdu,
bano qudsia novels,
pakeeza anchal romantic novel,
pyasa sawan novel,
free urdu novels,
anchal digest novels,
raqs bismil nove,l
urdu poetry books pdf,
new novel 2021 in urdu,
urdu novels 2021,
love story novel in urdu,
urdu history books,
raja gidh read online,
jasoosi novel,
urdu love novels list,
pakistani novels in urdu,
urdu historical novels,
romance novel famous urdu novels list,
romance novel urdu novels list
kdrama urdu,
Desi kimchi,
Desi kdrama fans,
Urdu kdrama,
Urdu web,
Kdrama maza,
Korean masti,
korean dramas,
kdrama,
k drama,
best korean drama,
korean drama 2020,
korean drama 2021,
kdrama 2021
best kdrama,
korean series,
kdramas to watch,
korean drama website,
kdrama website,
netflix korean drama,
asian drama,
best korean drama 2020,
top korean drama,
new korean drama 2021,
best korean drama 2021,
best kdrama 2020,
best kdrama to watch,
best korean drama on netflix,
best korean series,
best kdrama 2021,
kdrama netflix,
k drama urdu,
www korean drama,
watch korean drama,
best k dramas on netflix,
netflix korean drama 2021,
best kdrama on netflix,
new korean drama,
www kdrama,
k drama 2021,
korean series on netflix,
netflix korean drama 2020,
top 10 korean drama,
top kdrama,
top korean drama 2020,
k dramas to watch,
2021 korean drama,
korean drama series,
best korean series on netflix,
new kdrama 2021,
2020 kdrama,
2020 korean drama,
2021 kdrama,
k drama netflix,
best k drama to watch,
romance kdrama,
k drama 2020,
new korean drama 2020,
latest korean drama 2021,
korean dramas to watch,
top korean drama 2021,
watch kdrama,
korean tv series,
highest rated korean drama,
korean drama in hindi,
korean drama shows,
top kdrama 2021,
new kdrama,
watch asian drama,
popular korean drama,
kdrama online,
latest korean drama,
korean drama online,
korean netflix series,
korean tv shows,
korean shows,
must watch kdrama,
korean shows on netflix,
famous korean dramas,
romance korean drama,
top kdrama 2020,
most popular korean drama,
korean series 2021,
must watch korean drama,
new kdrama 2020,
best romance kdrama,
popular kdrama,
good kdramas,
korean drama in hindi dubbed,
korean series 2020,
kdramas 2020,
best korean shows on netflix,
korean drama 2021 netflix,
top k dramas,
top rated korean drama,
watch kdrama online,
korean romance,
top korean series,
netflix k drama,
good korean dramas,
latest kdrama 2021,
most watched korean drama,
top 10 kdrama,
famous kdrama,
all in korean drama,
best k drama 2020,
urdu adab,
urdu digests,
raja gidh,
urdu novels list,
raqs e bismil novel,
novels in urdu pdf,
urdu books,
best urdu novels,
famous urdu novels,
free urdu digest,
naseem hijazi,
best urdu novels list,
raja gidh pdf,
urdu books library,
new urdu novels,
jangloos,
list of urdu books,
urdu story books,
bano qudsia books,
pdf urdu books,
famous urdu novels list,
best pakistani novels in urdu,
urdu stories pdf,
naseem hijazi novels,
urdu novels online,
udaas naslain,
best urdu novels pdf,
latest urdu novels,
short novels in urdu,,
romantic story urdu,
urdu best books,
best urdu books to read,
pakeeza anchal online reading,
ismat chughtai books,
urdu digest novels,
urdu books online,
urdu literature books,
pakeeza anchal,
l online reading,
pakeeza anchal novel online reading,
urdu novel bank,
urdu novel platform,
yaar zinda sohbat baqi,
desi story urdu,
salam korea urdu web travel novel episode 15

قسط 15

۔۔۔۔۔

صبح الارم بجنے پر اسکی آنکھ کھلی تھی۔۔ سحری کا وقت نکل چکا تھا۔ وہ خود کو کوس کر رہ گئ۔ ہاں بنا کھائے پیئے روزے کی نیت کر نے کی ہمت نہ تھی۔ ایک تو ویسے ہی جب سے آئی تھی یہاں ڈھنگ سے کھانے کو نہیں مل رہا تھا۔۔ الارم بھئ یہ گوارا کا بجا تھا۔ اس نے اپنا موبائل اٹھا کر دیکھا الارم لگا ہوا تھا یقینا بج بج کے بند ہوگیا۔ اسکی بے ہوش نیند اور یہ ساتھی گوارا۔ ابھی بھی

گوارا کسمسمائی تھی مگر اٹھنے کا کوئی ارادہ نہین تھا۔۔ وہ فریش ہو کرباہر نکل آئی۔  ناشتہ بنانے لگی۔  ڈبل روٹی اور انڈے ہی موجود تھے اس نے توس سینک کر آملیٹ بنایا ساتھ کافی کے دو مگ بنائے تب گوارا نک سک سے تیار کمرے سے برآمد ہوئی۔

آجائو ناشتہ کر لو۔۔ 

اس نے خوشدلی سے اسے دعوت دی۔۔ 

میں تو ناشتہ نہیں کرتی۔ اس نے کہا تو مگر اتنے اہتمام سے ناشتہ سجا تھا وہ انکار نہ کر سکی۔۔ دونوں کھا پی کر اکٹھے یونی کیلیئے نکلی تھیں۔۔ 

اس فالتو اسائنمنٹ نے آج بھئ یونی کی شکل دکھا دی ورنہ میں نے پورا ہفتہ یہ والا یونیورسٹی کے بارے میں سوچنا بھی نہ تھا۔ 

یہ گوارا کے ارادے تھے۔

اور اریزہ چہرے پر ہلکی سی مسکراہٹ لیئے سوچ رہی تھی۔ 

مجھے تو ابھی سے بھوک لگ گئ ہے۔۔ دو پیس اتنے کم کیوں ہوتے ہیں میرے لیئے۔ 

اس وقت صد شکر کل شام جتنا ہجوم نہیں تھا میٹرو میں انہیں بیٹھنے کی جگہ بھی مل گئ۔۔

وہ دلچسپی سے ان لوگوں کو دیکھ رہی تھی۔۔ 

مختلف ملک مختلف شکلیں مختلف رویئے مگر سب روزی کی خا طر دھکے کھاتے مجبور ۔۔

وہ بوڑھی سی خاتون بڑی سی ٹوکری اٹھائے ایک ہاتھ سے ہینڈل پکڑے کھڑی تھیں۔ ٹوکری انہوں نے زمیں پر نہ رکھی تھی۔ اس نے پہلے تو نظر انداز کرنا چاہا مگر پھر مشرقی تربیت آڑے آہی گئ۔۔ اپنی جگہ سے اٹھ کر اس نے انکو اپنی جگہ بیٹھنے کو کہا۔۔ وہ جانے کیا سمجھیں معزرت کرنے لگیں۔۔ 

ٹوکری سامنے کر دی 

 وہ بری طرح ڈر گئ تھیں۔۔

وہ الٹا شرمندہ ہو گئ۔۔

میں آپ سے شکایت نہیں کر رہی ۔ اس نے اشارے سے بھی کام لے کر سمجھانا چاہا وہ چپ ہو کر اسے دیکھنے لگیں۔۔

دفعتا اسکی نظر ٹوکری پر پڑی۔ 

نہایت حسین چندی آنکھوں والا بچہ گورا چٹا چھوٹے سے دہانے میں انگوٹھا گھسیڑے آنکھیں موندے شائد سو رہا تھا۔۔

بالکل گڈا سا ۔۔۔ وہ موم سی ہو کر اسکے گال چھو بیٹھی۔۔ 

ماشااللہ ۔۔ بے ساختہ اسکے منہ سے نکلا وہ عورت کچھ کہتے کہتے چپ سی ہو کر اسکی شکل دیکھنے لگی۔

آہجومہ۔۔ یہ آپ کو اپنی نشست پر بیٹھنے کو کہہ رہی تھی۔۔ آپ سے بدبو کی شکایت نہیں کر رہی۔۔ 

گوارا نے اسکو اتنا تردد کرتے دیکھا تو گہری سانس لے کر مترجم کے فرائض نبھانے لگی۔۔

وہ۔عورت یکبارگی مشکور ہو کر اسکی جانب جھکی۔۔ اس نے جلدی سے ٹوکری تھام لی۔۔ غربت کے باعث وہ سودے کی پرانی ٹوکری میں گدا بچھا کر بچے کو لٹائے تھیں۔۔ اس نے ٹوکری اٹھائے انکے بیٹھنے کا ا نتظار کیا پھر احتیاط سے انکی گود میں رکھ دی۔۔

گومو وویو۔۔ انکی آنکھیں جھلما گئیں۔۔ 

یہ آپکا بچہ ہے۔۔۔۔ 

وہ عورت پلٹ کر گوارا کو منتظر نظروں سے دیکھنے لگی۔۔ 

اس نے غور سے انکے چہرے کو دیکھا۔۔ انکی عمر اتنی زیادہ نہیں تھیں مگر جانے زندگی کتنی بری طرح پیش آئی تھی۔۔ انکا چہرہ الجھنوں کی  لکیروں سے بھرا تھا۔۔ گال دبلاپے سے دھنسے تھے۔۔  گوارا نے ترجمہ کیا تو انہوں نے خوشی خوشی بتایا۔

نہیں میری بیٹی کا بچہ ہے۔۔ 

گوارا بھی اب دلچسپی سے اس گل گوتھنے سے بچے کے گال چھو رہی تھئ۔۔

بہت پیارا ہے۔۔ اس نے بےدھیانی سے اردو میں کہا

اس نے دو انگلیاں اپنے ہونٹوں سے چھو کر اسکے گال پر ثبت کیں۔۔۔

زبان گوارا کیلیئے بھی انجان تھی مگر وہ عورت اریزہ کے انداز سے بھی مطلب سمجھ گی۔۔

بو پیارا۔ اس نے اٹک کر اسکے کہے الفاظ دھرانے چاہے۔ شہادت کی انگلی سےاسکی جانب اشارہ کرکے اس نے پھر دہرایا۔۔

۔اریزہ خوشگوار حیرت میں گھرگئ۔۔ محبت کی واقعی اپنی ہی زبان ہوتی ہے۔۔ 

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

پتہ ہے تمہاری وجہ سے ناشتہ کر لیا۔۔ ورنہ میں ناشتہ نہیں کرتی دس گیارہ بجے بھوک سے بے حال۔ہو کر یون بن کے ساتھ کیفے گھس جاتی روز ریمن کھا کھا الگ دل اوب گیا مگر  تیار کھانا اور کیا کھایا جا سکتا۔۔ 

گوارا اسکے ساتھ چلتے بتا رہی تھی۔۔ یہ وہی گوارا تھی جو سیدھے منہ بات نہیں کرتی تھی نخرے سے بولتی تھی۔۔ اب اتنی اپنائیت سے پو را راستہ بولتی آئی تھی۔۔ واقعی انسان ضروری نہیں کہ ویسا ہو جیسا پہلی ملاقات میں اپنا تاثر چھوڑے۔۔ 

میں روز  تمہارے لیئے ناشتہ بنا دیا کروں گی۔۔۔ 

اریزہ نے خلوص سے کہا تو گوارا ششدر ہی تو رہ گئ۔۔

واقعی۔۔ اسے یقین نہیں آیا۔۔ 

ہاں۔۔ اس نے مسکرا کر سر ہلایا۔۔ 

گومو وویو۔۔ گوارا اس سے لپٹ ہی تو گئ۔۔ 

اریزہ کیلیئے یہ اچانک تھا مگر سنبھل کر اسکو گرم جوشی سے ساتھ لگایا۔۔

پتہ صبح مجھ سے کچھ کام نہیں ہوتا ۔مگر میں رات کو  روز کھانا بنا کر کھلا سکتی ہوں تمہیں۔۔ پکا۔۔ 

وہ شائد سحری کی بات کر رہی تھی۔ اریزہ ہنس دی۔ 

گوارا الگ ہو کر اسکی جانب اپنا سیدھا ہاتھ بڑھائے تھی سب انگلیاں بند کیئے سب سے چھوٹی انگلی آگے بڑھائے تھی۔۔ 

اریزہ اسے نہ سمجھنے والے انداز میں دیکھ رہی تھی۔ 

وعدہ۔۔ اس نے بھنویں اچکا کر اسے بھی ایسا کرنے کا اشارہ کیا۔۔ اریزہ نے بھی ویسے ہی ہاتھ بڑھایا تو اس نے کاٹ کر نے کے انداز میں اسکی چھنگلیا اپنی چھنگلیا سے لپیٹ کر اپنے انگوٹھے سے اسکا انگوٹھا ملا کر تالہ سا لگایا۔۔

یہ ہوا پنکی پرامس ۔۔ وہ بچوں کی طرح کھلکھلائی۔۔ اریزہ زور سے ہنس پڑی۔۔ 

کیا ہوا ۔۔ وہ الٹا حیران ہوئی۔۔ 

کچھ نہیں وہ ہنسی۔ روک کر بمشکل بولی۔۔

ہمارے یہاں ناراضگی کے اظہار اور تعلقات ختم کرنے پر ایسے کٹی کی جاتی۔۔ 

ہیں۔ گوارا کافی حیران ہوئی۔۔ 

واقعی۔۔ عجیب بات ہے۔۔ اس نے کندھے اچکائے۔۔ 

وہ اب اسکے کندھے سے لگی آہستہ آہستہ چل رہی تھی۔۔ 

اور دوستی کیسے کرتے ؟۔۔ وہ پوچھ رہی تھی۔۔ 

دوستئ۔ وہ بتا رہی تھی جبھی سامنے سے آتے ہایون پر نظر پڑی۔۔ اس نے بلا ارادہ گوارا سے اپنا ہاتھ چھڑا کر اسے دھیرے سے الگ کیا۔ ہایون کو بے ساختہ ہنسی آگئ۔۔ اس دن کے بعد آج ملاقات ہوئی تھی انکی۔۔ لگ بھگ پانچ دن ہورہے تھے اس نے سوری لکھ کر پیغام بھیجا تھا مگر اریزہ نے جواب نہ دیا

وے ۔۔ گوارا ابھی حیران ہو کر پوچھنے ہی والی تھی کہ ہایون رفتار بڑھا کر انکے پاس پہنچ گیا۔۔

آننیونگ واسے او۔۔ اس نے مسکرا کر سلام دونوں کو کیا رھا مگر دلچسپی سے اریزہ پر نظر ڈالی تھی۔۔

جو بے نیاز دکھائی دینے کی کوشش کر رہی تھی۔۔ 

آننیانگ واسے او۔ بڑے دن بعد نظر آئے کہاں تھے۔۔یونی کیوں نہیں آرہے تھے۔۔ گوارا کا دھیان بٹ گیا وہ بہت گرمجوشی سے احوال دریافت کر رہی تھی۔۔

بس تھوڑا سا کام میں مصروف تھا۔۔

ہایون اور گوارا باتوں میں لگے تو اریزہ نے کترا کر نکلنا چاہا۔۔ 

ہے۔۔ ہیونگ سے نے اسکا ہاتھ پکڑ کر جانے سے روکا۔۔

اتنی ناراض ہو پیغام کا جواب بھی نہیں دینتیں۔۔ سوری کہا تھا میں نے۔۔ 

وہ معصوم سی شکل بنا کر کہہ رہا تھا۔۔

اریزہ بری طرح چونک گئ۔۔ فورا ہاتھ چھڑانا چاہا۔۔ مگر ہایون نے گرفت تھوڑی سی سخت کی۔۔ 

اریزہ کے برعکس اسکے چہرے پر سادی سی مسکراہٹ تھی۔۔

معزرت۔۔ یار۔۔ غلط فہمی تھی سوری۔۔

اس نے ہاتھ چھوڑ کر باقائدہ جھک کر کہا۔۔ 

تم لوگ ناراض تھے ایک دوسرے سے۔۔ گوارا کو حیرت کا جھٹکا سا لگا۔۔

یار وہ بس میں سمجھا۔۔

ہایون پلٹ کر بتانے لگا تھا کہ اریزہ نے جلدی سے بات کاٹ دی۔۔ 

چھوٹی سی غلط فہمئ تھی ۔۔ میں ناراض نہیں تھی ہایون۔۔ 

اس نے ہونگ سک کی براہ راست آنکھوں میں دیکھ کر جیسے اسے مزید کہنے سے منع بھی کیا۔۔ ہایون نے سمجھ کر سر ہلایا۔۔

خیر اریزہ ۔۔۔وہ اسکی جانب مڑی۔۔ 

چونکہ تم نے مجھے ناشتہ کرایا سو دوپہر کا کھانا میری طرف سے ہوگا۔۔

اسکی ضرورت نہیں۔۔ اریزہ نے منع کرنا چاہا 

کیوں نہیں؟۔۔  بس طے ہوگیا۔۔ تین بجے یہیں ملنا اکٹھے چلیں گے۔۔

یہ آفر بس اریزہ کیلئے ہے۔۔ ہایون نے ٹوکا۔۔

نہیں اگر تمہارا بھی موڈ ہے دعوت کا تو سائیڈ ڈشز تمہاری طرف سے ہو جائیں گی۔۔ 

گوارا کی بے نیازی عروج پر تھی۔۔

اسکی چالاکی پر اریزہ کھلکھلا دی تو ہایون گھورنے لگا تھا ۔۔۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

ریسٹورنٹ خالی تھا تقریبا۔۔

اس نے ایک ایک۔میز کپڑا رگڑ کر صاف کی پھر ایپرن اتارتی کائونٹر کے پاس آئی۔۔

میری شفٹ ختم ہو گئ ہے میں جاتی ہوں۔۔ اس نے بتانا ضروری سمجھا تھا۔۔

ٹھیک ہے۔۔ مینیجر نے سر ہلا دیا۔۔ 

وہ پلٹنے لگی تو اسے روک کر ایک چھوٹا سا شاپر تھما دیا۔۔

یہ کھا لینا۔۔

وہ ادھیڑ عمر مینجیجر اسے تھما کر اندر کچن میں چلا گیا۔۔ وہ چونکی پھر شاپر میں ہاتھ ڈال کر دیکھنے لگی کیا ہے یہ۔۔

اس کھڑوس بڈھے کو جانے اس کے کام کرنے لگن یا اسکی اتری شکل دیکھ کر ترس آیا تھا ایک بڑا ہیم برگر مفت تھما دیا۔۔ وہ گہری سانس لیتی ریستوران سے باہر نکل آئی۔۔ دوپہر کا وقت تھا سورج سر پر چمک رہا تھا۔۔ وہ چھوٹے چھوٹے قدم اٹھاتی بس اسٹاپ پر چلی آئی۔۔

وہ گلی میں  تھڑے پر بیٹھی۔ننھے ننھے پتھر چن کر ان سے کھیل رہی تھی

کوئی پتھر اسکا باپ تھا کوئی ماں کوئی بھائی۔۔ 

مجھے دو۔۔ 

ایک۔ننھے پتھر نے اپنے سے تھوڑے بڑے پتھر کی پلیٹ پر جھپٹا مارا تھا۔۔

یہ میرا ٹکڑا ہے۔۔ 

اس نے جلدی سے واپس چھینا۔۔ 

کھانا ٹوتھ پیسٹ کے خالی ڈھکن میں پیش کیا جا رہا تھا۔۔

مجھے بھوک لگی ہے اور کھانا۔۔

اس نے اپنے چھوٹے بھائی کی آواز نکالی۔۔

ای جی روہانسی ہوگی۔۔

میں نے صبح بھی نہیں کھایا تھا۔۔

جونگسو شا۔۔ بہن کو بھی کھانے دو۔۔ اناج کا۔۔ 

وہ بولتے بولتے رکی۔۔ 

گوشت کا ٹکڑا۔۔

خیالی کہانی تھی۔ اناج کی۔جگہ گوشت کہا جا سکتا تھا۔۔ 

اسکی ماں کہہ رہی تھی

وہ خوش سی ہوئی۔۔ 

ای جی۔۔ تم بہت کھانے لگی ہو ۔۔ 

ایک بڑا سا پتھر ایک چھوٹے سے پتھر کو ڈانٹ رہا تھا

مگر یہ تو میری ہی پلیٹ ہے آہموجی نے یہ مجھے دیا تھا۔۔

وہ اپنی آواز نکالتی تو انداز گھگیا جاتا۔۔ 

زبان چلاتی ہو۔۔ وہ آہبو جی کی طرح غرائی۔۔

ایک جھاڑو کا تنکا اٹھا کر اس نے اس چھوٹے پتھر کو خوب پیٹا تھا۔۔

بیانئے بیانئے آہبوجی۔۔

وہ رو رہی تھی۔۔

آہموجی اسکو بچانے آئی تھیں۔۔ 

اس نے دوسرا بڑا پتھر اٹھایا۔

ای جی آ۔

آہموجی اسکے سر پرکھڑی تھیں۔ 

وہ ڈر کر پیچھے ہٹی۔۔

یہ لو۔۔

وہ اپنے دامن میں سے چاولوں کا کیک نکال کر اسے پکڑا رہی تھیں۔۔ اسکی آنکھیں چمک گئی تھیں

ابھی مت کھانا۔۔ انہوں نے فورا ٹوکا تھا۔۔

اس نے بڑے شوق سے تھاما تھا۔۔ اس ہدایت پر آنکھوں میں آنسو ہی تو آگئے تھے۔۔

کیوں۔۔

اس نے۔معصومیت سے پوچھا۔۔

رات کے کھانے کیلیئے ہے ابھی تو تھوڑی سی مکئی کھا لی ہے نا بیٹا۔۔ انہوں نے اسکی تھوڑی چھو کر پیار سے سمجھانا چاہا۔۔ 

میں ابھی امدادی ٹرک سے بہت مشکل سے تھوڑے سے یہ لا پائی ہوں۔۔ باقی بچوں میں تم چھین جھپٹ کر رات کو نہیں لے پائو گی اسلیئے ابھی دے رہی ہوں۔۔ اسے اپنی قمیض کے دامن میں چھپا لو۔۔ اور چپکے سے اپنے کمرے میں ٹرنک میں لے جا کر رکھ لو۔۔ رات کو کھانا۔۔ سمجھ آئی۔۔

اپنی کم خوراکی کا شکار دھنسی ہوئی آنکھوں اور بے انتہا ابھری گالوں کی ہڈیوں والے چہرے کی مالک بیٹی کو انہوں نے چمکار کر سمجھایا تھا۔۔

وہ ڈبڈبائی آنکھوں سے دیکھنے لگی۔۔

تھوڑا سا کھا لوں۔۔ 

رات کو پھر بھوک لگ جائے گئ بیٹا۔۔ اہموجی کی آنکھوں میں تارے سے جھلملا گئے۔۔

ٹھیک ہے۔۔ ای جی مایوس سی ہوئی مگر اپنی فراک کے دامن میں چھپانے لگی۔۔

ماں کا دل اسکی سعادتمندی پر پگھل سا گیا۔ اپنے حصے میں سے تھوڑا سا توڑ کر اسکے منہ میں ڈال دیا۔۔ ای جی کی آنکھیں جھلملائیں۔۔ وہ نا چبا رہی تھی نہ نگل رہی تھی  بس ذیادہ سے زیادہ دیر منہ میں رکھ کر اسکے ذائقے کو محسوس کرتے رہنا چاہتی تھی۔۔

ماں مطمئن ہو کر پلٹ گئ۔۔ تو اس نے فراک مین چھپایا کیک نکال کر کترا۔۔

کتنی عجیب بات ہے نا بھوک نہ بھی تو ہاتھ میں اگر کھانے کی چیز ہو تو ہاتھ رکتا نہیں۔۔

کتنی تکلیف دہ یادیں تھیں اسکے بچپن کی۔۔ ایک۔کھانے نے اسے کتنا تڑپایا ہے۔۔ 

اس نے ہیم برگر کو ہاتھ میں لے کر جیسے تولا تھا۔

وہ بس اسٹاپ پر بنے بنچ پر بیٹھی تھی۔۔ دوپہر کا وقت تھا سڑک پر بس اسٹاپ پر کہیں رش نہیں تھا۔۔

دو دن میں وہ تین بار کھاتی تھی۔۔ آخری بار کل شام کو کھایا تھا۔۔

وہ پیسے جمع کر رہی تھی کسی گھٹیا سے علاقے میں ایک کمرہ اسکو درکار تھا سر چھپانے کو۔۔ 

اس نے بیگ سے ایک اشتہا ر نکالا کمرہ کرائے کیلیئے دستیاب 

میرے پاس ہیں۔۔ اٹھارہ سو وون۔۔ روز میں کھانے کی مد میں خرچ کرتی پچاس وون۔ آج اس سے گزارہ کروں تو آج کے پچاس وون بچ جائیں گے۔۔ 

وہ حساب لگا رہی تھی۔۔ 

مطمئن ہو کر اس نے برگر سلیقے سے پیک کر کے اپنے بیگ میں رکھ لیا۔۔ 

برگر کی خوشبو حواس پر سوار ہو رہی تھی۔۔ اسکی نظر بھٹک کر دو بار بیگ پر گئ۔۔ مگر اب یوآنہ بچی تھوڑی تھئ۔۔

یوآنہ کہا بھی تھا رات کو کھانا اب کیا کروگی؟۔۔

ماں نے اسکےہاتھ میں کیک کے نام پر وہ چاولوں کا پاپڑ جیسا بمشکل چار انگل کا ٹکڑا دیکھا تو سر پیٹ لیا تھا۔۔ 

ای جی شرمندگی سسے سر جھکا ئے تھی۔۔

اب چوبیس  سال کی یوانہ کو اتنی سمجھ تھی

کہ رات کی بھوک برداشت کرنا بہت مشکل ہوتا۔۔ کالی اندھیری رات بھوک میں مزید دیر سے گزرتی اتنی دیر سے کہ سمجھو جان نکلنے ہی لگتی مگر بھوکا مرنا بھی آسان تھوڑی ہوتا۔۔ 

وہ استہزائیہ ہنس دی۔۔ 

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

وہ دوپہر کو گوارا کی بتائی جگہ پر اسکا انتظار کر رہی تھی۔۔ پارکنگ کے قریب فٹ پاتھ پر اس جانب آج رش نہ ہونے کے برابر تھا باہر جاتے ایڈون نے دور سے اسے دیکھا۔ 

وہ فرنچ فرائز کھا رہی تھی ساتھ ساتھ موبائل میں لگی تھی۔ 

وہ اسکے پاس ہی چلا آیا۔

کیسی ہو اریزہ۔ 

اسکے قریب آکر کہنے پر وہ بری طرح اچھلی۔ 

رمضان میں فرائز کھا رہی تھی وہ بھی اپنی دانست میں چھپ کے۔ لا شعوری طور پر فرائز ایکدم سائڈ میں رکھ دیئے۔ 

ایڈون اسکے برابر ہی آن بیٹھا۔ وہ اسکی سٹپٹاہٹ محسوس کر چکا تھا جبھی سرسری سے انداز میں پلیٹ اٹھا کر اس میں سے یونہی ایک دو چپس اٹھا کر اسکو تھما دی۔

اسائنمنٹ جمع کرادی تم نے۔ 

اس نے یونہی اسکی شرمندگی زائل کرنے کو پوچھا۔ 

ہاں صبح سب سے پہلے یہی کام کیا اسکے بعد سے یہاں بیٹھی ہوں۔ 

اریزہ نے بھی سوچا اب کیا ہوسکتا۔ سو آرام سے چپس کھانے لگی۔

سنتھیا کے پاس چلی جاتیں۔ 

اس نے کہا تو اریزہ گہری سانس بھر کے بولی

اس نے بتایا تھا کہ تم اور وہ آج دوسرے شہر جا رہے ہو۔ اسلیئے وہاں نہیں گئ۔ 

ہم بس نکل رہے ہیں سنتھیا چارجر بھول گئ تو واپس گئ ہے لینے۔ چلو گی تم بھی؟ 

اس کے منہ سے بے اختیارانہ نکلا۔

مجھے کباب میں ہڈی کیوں بنانا ہے۔ 

تم ہم دونوں کیلئے ہڈی نہیں ہو۔ یہ بات تم بھی جانتی ہو۔ 

وہ زو ردے کر بولا۔ اسکی بات گہری تھی اور وہ اس میں الجھنا نہیں چاہتی تھی۔ سو خاموش ہی رہی۔ 

تمہیں کوریا کیسا لگا؟ وہ بات سے بات نکال رہا تھا

اچھا ہے۔ اس نے مختصرا کہا۔ 

مجھے بہت اچھا لگا۔ اپنا اپنا سا۔ ایڈون دونوں بازو پیچھے زمین پر ٹکا کران پر وزن دے کر  ریلیکس سا ہو کر بیٹھا۔ 

اپنا اپنا سا؟ وہ حیران ہوئی۔ 

چندی آنکھیں گوری رنگت نا مانوس زبان اس میں اپنائیت کہاں سے جھلکی۔ اسے حیرت تھئ۔

یہاں بہت آزادی ہے لوگوں کے ذہن بندھے ہوئے نہیں ہیں۔ سب اپنے کام سے کام رکھتے ہیں کوئی کسی کو دیکھ کر جج نہیں کرتا۔ لوگ اپنے عقائد دوسروں پر نہیں تھوپتے۔ کسی کو اسکے عقائد کی وجہ سے مسترد نہیں کر دیتے۔ 

وہ بڑ بڑانے والے انداز میں بول رہا تھا۔ وہ چپس چباتے رک سی گئ۔ جانے کیوں اسے لگا وہ اسے ہی سنا رہا ہے۔ 

تبھی ایڈون کا فون بجنے لگا۔ اس نے بیزاری سے دیکھا 

سنتھیا کی کال آرہی تھی۔ وہ شائد باہر بلانے کیلئے ہی کال کر رہی تھی۔ اس نے کال نو کرکے فون جیب میں رکھا اور اٹھ کھڑا ہوا۔ چند لمحے اسے کھڑا دیکھتا رہا۔ وہ حیران سی ہو کر دیکھنے لگی اسے تو بنا کچھ کہے پلٹ کر لمبے لمبے ڈگ بھرتا داخلی راستے کی جانب بڑھ گیا۔

اسکے دل پر بے تحاشا بوجھ آن گرا۔ آگہی عذاب ہے جس نے بھی کہا سولہ آنے درست بات کی۔ 

کاش 31 دسمبر 2015 میری زندگی میں نہ آئی ہوتی۔۔

وہ یاسیت سے سوچ کر رہ گئ۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ۔

وسیع و عریض لان سے اندر رہائشی عمارت کا فاصلہ اسے صدیوں پر محیط لگا تھا۔ نیم اندھیرے لان میں ایڈون کے ہمراہ چلتے اسے جانے کیوں خیال آیا تھا کہ اسے کم از کم سنتھیا کو بتاکے آنا چاہیئے تھا۔ 

اندر جا کے ویسے کیا کروگی؟ سنتھیا کا کمرہ لاکڈ ہی ہوگا۔ 

ایڈون نے کہا تو وہ حقیقتا پریشان ہوگئ۔ 

یہاں  واک کریں۔ 

ایڈون نے خود ہی دوسرا آپشن دیا۔ 

ہمم۔۔۔ وہ اور کیا کہتی۔  ابھی بارہ بجنے میں وقت تھا اس سے قبل تو یہ دعوت پارٹی ختم ہوتی نظر نہ آرہی تھی۔ گھر کے تین اطراف لان تھا۔ پارٹی اگلے حصے میں تھی وہ دوسرے حصے میں چلے آئے۔ 

سردی کافی تھی۔ اس نے انر بھئ پہن رکھا تھا ساتھ شنیل کی میکسی۔ جبکہ ایڈون اسکے برعکس صرف ایک ہائی نیک اور کوٹ پہنے تھا مگر یوں سکون سے تھا جیسے جون چل رہا ہو اور اسے ٹھنڈ سی لگ رہی تھی۔ 

آج کچھ ذیادہ ٹھنڈ نہیں ہے؟ 

اسکے دانت بجنے کو تیار تھے۔ بڑی کوشش سے قابو کیے

نہیں بلکہ آج تو مجھے کم۔ٹھنڈ لگ رہی ہے۔ 

ایڈون کو اس سے اختلاف تھا۔ 

میم ثمینہ والی اسائنمنٹ بنا لی؟ میم نے کہا تھا پیپرز سے پہلے سب جمع کروادیں ورنہ مارکس نہیں لگائیں گی۔ 

اریزہ کو جنوری میں ہونے والے امتحانوں کی فکر ہو رہی تھی۔

نہیں ۔ تم نے کروا دئ؟ 

ایڈون نے کہا تو وہ فخر سے بولی

میں اپنا کام وقت پر مکمل کر لیتی ہوں۔ ڈیو ڈیٹ سے بھی دو دن پہلے جمع کرادی تھئ۔ 

جی آپ ٹھہریں بلا کی پڑھاکو یونہی تو نہیں ٹاپر کی ریس میں شامل ہیں ۔ وہ چھیڑنے لگا۔اریزہ فخر سے گردن اکڑا گئ

انشا اللہ گولڈ میڈل لوں گئ۔ 

اسے یقین تھا خود پر۔ 

صرف پڑھائی کر کر کے تھک نہیں جاتیں یہی تو چار دن ہیں جوانی ہے کیا پڑھ پڑھ کر ریڑھ لگانی انکی۔ کبھی پڑھائی سے ہٹ کر بھی ادھر ادھر دیکھ لیا کرو۔ اتنے پیارے لڑکے ہیں یونی میں۔ شاہزیب تو گورا چٹا بھی ہے۔ 

وہ۔جان بوجھ کر چھیڑ رہا تھا۔

اس چھچھورے کا نام بھی نہ لینا میرے سامنے۔ حسب توقع وہ بھڑک اٹھی

باڈی بنا کر خود کو سلمان خان سمجھنے لگا ہے۔ نشیلی نگاہیں بنا کر جب گھورتا ہے نا تو دل کرتا ہے دونوں ڈیلے باہر نکال دوں۔ 

وہ اتنے جوش سے بولی تھی کہ ایڈون بے ساختہ ہنس پڑا۔ ہنسے گیا۔ وہ کھسیا سی گئ۔ کھل کر ہنس کر وہ محظوظ سے انداز میں بولا

اف کتنی خطرناک ہو تم۔ اب میں بھی تمہاری طرف دیکھے بنا بات کروں گا کیا خبر غصہ آئے تم میری بھی آنکھیں پھوڑ دو۔ 

وہ معصوم سے انداز میں بولا۔

تم اسکی طرح نہیں گھور سکتے وہ بہت برا لگتا ہے گھورتے ہوئے۔ 

اس نے جھرجھری سی لی۔ ایڈون غور سے اسے دیکھ رہا تھا۔ مگن سے انداز میں وہ دل کی بات کر رہی تھی۔ دو سال ہو رہے تھے انہیں اکٹھے پڑھتے وہ سنتھیا اریزہ اچھے دوست تھے۔ وہ تینوں ہر کام مل کر کرتے تھے۔  مگر جانے کب اسکا دل اسکے ہاتھوں سے نکلتا چلا گیا۔ 

تمہارا کیا آئیڈیل ہے۔ کیسا لڑکا ہونا چاہیئے تمہاری زندگی میں۔ 

وہ دھڑ دھڑ کرتے دل سے پوچھ رہا تھا۔ اریزہ لمحہ بھر رک کر جیسے سوچنے سی لگی۔ 

کیسا لڑکا ہونا چاہیئے۔۔۔ کبھی سوچا ہی نہیں۔ 

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

مجھ سے آنکھیں بند نہیں ہوتیں۔ مجھے اندھیرے سے ڈر لگتا ہے۔ جب اندھیرا ہوتا ہے مجھے بس نگاہوں میں ایک منظر سما جاتا ہے۔ خون لاشیں چیخیں۔ مجھے لگتا ہے میرے بازو ہاتھوں پر خون ہے مجھ پر کچھ گرا ہوا ہے۔ اسے جھاڑیں ۔

پندرہ سالہ اریزہ بولتے بولتے ہزیانی سے انداز میں اپنے ہاتھوں پر سے نادیدہ گرد سی جھاڑنے لگی۔ 

مجھے ڈر لگتا ہے اندھیرے سے بہت۔۔ آپ لائٹ جلائیں۔ 

سائیکو تھیراپی میں بہترین وقت یہی ہوتا ہے جب مریض اپنا لاشعور میں دبا خوف بیان کر نے لگے۔ تبھی تو علاج سہل ہو جاتا ہے نفسیات دان کیلئے۔ نفسیات دان نے دھیرے سے اسکی۔نبض پر ہاتھ رکھا 

جب ڈر   محسوس ہوتا ہے تو آپ کیا کرتی ہو۔ 

حماد بھائئ کو پکارتی ہوں۔ مگر وہ اب تو نہیں آسکتے۔ 

وہ مایوس سی ہوئی۔ 

اور پھر۔ 

امی کو بابا کو۔۔اس نے سادگی سے بتایا۔ 

امی اور بابا نہ آئیں کبھی تو کیا کروگی۔

ڈاکٹر پوچھ رہا تھا۔ 

وہ آجاتے ہیں۔ 

اسے یقین نہ آیا ایسا بھئ کبھی ہو سکتا ایسے تو آج تک کبھی نہ ہوا تھا۔ کبھی اچانک لائٹ جائے یو پی ایس ٹرپ کرجائے یا کسی بھی وجہ سے ذرا سا بھی اندھیرا ہو اور وہ پکارے تو امی اور بابا دوڑ کر آتے تھے۔ کبھی کبھی تو اسکے پکارنے سے پہلے ہی۔ 

اب انکے آنے کا انتظار نہیں کرنا۔اریزہ نے اب اندھیرے میں دیکھنا ہے کہ اسے کیا نظر آتا ہے۔ روشنی کا انتظار نہیں کرنا خود اٹھ کر دیکھنا ہے روشنی کرنی ہے۔ جب ڈر لگے تو اپنا ہاتھ خود تھامنا ہے ایسے۔ 

انہوں نے اسکی دونوں ہتھیلیاں جوڑ کر اسکا ہاتھ اسکے اپنے ہاتھ سے ہی ملایا۔ 

اور کہنا ہے۔میں خود بھی اپنے لیئے روشنی کا انتظام کر سکتی ہوں۔ میں اپنے ساتھ ہوں۔ مجھے اپنا ہاتھ تھامنے کے بعد ڈر نہیں لگتا۔ 

آپ لائٹ جلا دیں۔ 

اس نے ملتجی سے انداز میں کہا۔ 

نفسیات دان اپنا ہاتھ اسکے ہاتھوں سے ہٹا لیا۔ 

سامنے میز پر ٹارچ رکھی ہے۔ اپنا ہاتھ تھام کر دہرائو میں اپنے ساتھ ہوں۔۔ مجھے اپنا ہاتھ تھامنے کے بعد ڈر نہیں لگتا۔ 

انکی آواز دور اور مدہم ہوتی گئ۔ اریزہ نے کانپتے ہاتھوں کو مضبوطئ سے باندھا۔۔ کپکپاتی آواز میں دہراتی اٹھنے لگی۔ لہرائی۔ ٹھوکرکھائی۔ مگر جملہ دہراتے وہ چند قدم اٹھا کر میز تک پہنچ ہی گئ۔ 

ٹا۔۔ ٹارچ۔ 

اسکا ہاتھ ٹارچ پر نہیں پڑا تھا وہ میز ٹٹول رہی تھی۔تبھی کسی نے دھیرے سے اسکا ہاتھ تھام کر ٹارچ اسے تھما دی تھی۔ 

اس نے ٹارچ آن کرکے یہ عنایت کرنے والے کو دیکھنا چاہا۔ اسکی معالج مہربان سے انداز میں اسے دیکھ کر مسکرا رہا تھا۔ 

پچیس چھبیس سال کا وہ نوجوان ڈاکٹر جس نے اسکو اپنے خوف سے لڑنے میں مدد دی۔ اسکاپہلا کرش۔ 

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

ایسا لڑکا جس کے ساتھ گھپ اندھیرے میں بھی میں ٹارچ ڈھونڈ سکوں۔ 

اس نے یہی کہہ دیا۔ 

اپنے چار سال پرانے کرش کی یاد پر اسکے لبوں پر مسکراہٹ دوڑ گئ۔ اسکے معالج نے اسے اپنی شادی پر بلایا تھا اور وہ اسکی شادی کا سن کر گھنٹوں روئی تھی وہ بھی اندھیرے میں تکیئے میں منہ دے کر۔ 

ایڈون نے اسکے جواب پر خاصی حیرت سے دیکھا تھا اسے۔ 

اندھیرا ٹارچ ڈھونڈنا اسے ان دونوں میں ربط نہ سمجھ آسکا۔ جبکہ اریزہ جانے کیا سوچ کےدھیرے دھیرے قدم اٹھاتئ محظوظ سی مسکرا رہی تھی۔ 

اس نے ہلکے سے گلا کھنکارا۔۔ وہ تب بھی متوجہ نہ ہوئی۔

میں تم سے بات کرنا چاہ رہا تھا۔ مگر موقع نہیں مل رہا تھا۔ 

ایڈون نے دھیرے سے ہمت کرکے کہا۔ 

بولو۔ وہ لاپروا تھی۔ لانگ کورٹ شوز جن میں تین انچ کی بلاک ہیل تھی اسے خاصا دراز قامت بنانے کے ساتھ سہج سہج کر چلنے پر مجبور بھئ کر رہی تھی۔

اندھیرا تو یہاں بھی ہے ۔۔۔ کیا میں تمہارے لیئے ٹارچ ڈھونڈنے میں مدد کرنے والا۔۔۔ 

تبھئ درختوں کے قریب سرسراہٹ سی ہوئی۔ شائد کوئی بلی تھی۔ تیزی سے نکل کر سامنے آئی سیاہ بلی جسکی تاریکی میں بس آنکھیں چمکی تھیں۔ اسکا دل ایکدم بند سا ہوا۔

نیم تاریک اندھیرے اور اوپر سے تقریبا پورے چاند سے اسے اس لان میں سیدھا سیدھا بھوت پریت کا ہی گمان ہوا تھا۔ 

وہ  بے ساختہ ایڈون کی اوٹ میں ہوئی تھی۔ ایڈون کا بازو دبوچ لیا تھا۔ آواز حلق سے نکل بھی نہ سکی۔ 

اسکے منہ سے غیر مرئی سی آواز نکلی تھی۔ 

بلی ہے۔ اریزہ ڈرو مت۔ 

یہ تسلی دیتے ایڈون کا چہرہ تمتماسا گیا تھا۔ اریزہ اس کی اوٹ میں پناہ لے گئ تھی کسی کمزور لمحے میں آکر ہی سہی۔ مگر یقینا اسے اس پر بھروسہ تھا اسے کچھ اپنا سمجھتی تھی جبھی۔ یہ خیال اسے سرشار کرنے کیلئے کافی تھا۔ 

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

ہائش۔ بیانیئے۔ 

حسب عادت خوب اونچی آواز میں گوارا بولی۔ وہ تھوڑئ دیر سے آئی مگر آتے ہی معزرت کرنے لگی ۔۔ اریزہ چونک کے حال میں واپس آئی تھئ۔ 

سوری سوری یون بن کے ساتھ ریہرسل کرتے وقت کا پتہ نہیں چلا۔۔ تمہیں بھوک لگی ہوگی چلو بس بھاگم بھاگ چلتے ہیں۔۔ 

وہ عجلت بھرے انداز میں بولی۔۔

نہیں۔۔ اس نے نرمی سے منع کر دیا۔۔

مجھے بھوک نہیں ہے ابھی چپس کھائے ہیں تھوڑی دیر پہلے 

واقعی۔۔ اس نے مشکوک انداز میں دیکھا۔۔

ہاں سچی۔۔ اریزہ نے مسکرا کر سر اثبات میں ہلایا۔۔ 

وہ یون بن کیساتھ میں نے بھی ریمن کھا ہی لیا تھا۔۔ بھوک مجھے بھی نہیں۔۔ گوارا نے کھسیا کر کان کھجایا۔۔

گھر چلیں پھر۔۔ اس نے پوچھا تو اریزہ نے فورا نفی میں سر ہلایا۔۔ 

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

وہ دونوں سپر اسٹور آئی تھیں۔۔ اریزہ کو سودا خریدنا تھا۔ بیسن گھی وہ  بے دریغ خریداری کر رہی تھی

گوارا ٹوک ہی گئ۔۔

تم پاکستان کے کسی رئیس خاندان سے ہو؟۔۔

اریزہ اپنے دھیان میں تھی چونک کر دیکھنے لگی۔۔

ریک سے خشک خوراک اٹھاتے ہوئے ہاتھ وہیں رک گیا۔۔

مطلب تم یہاں جاب بھی نہیں کرتی ہو تمہارے والد تمہارے خرچے کیلیئے کافی رقم بھیجتے ہیں لگتا ہے۔۔ 

گوارا نے ہلکے پھلکے انداز میں کہا تھا۔۔

اریزہ مسکرا کر رہ گئ۔۔

اچھے خاصے۔۔۔۔اس نے کہا نہیں مگر۔

تم پاکستان میں تو جاب کرتی ہو گی۔۔ اس نے پوچھا تو اریزہ نے نفی میں سر ہلا دیا۔۔

نہیں۔۔میں نے کبھی جاب نہیں کی۔۔ 

واقعی۔۔ گوارا حیران ہوئی۔۔ 

واقعی امیر زادی ہے ۔۔۔۔اس نے سوچا۔۔

تمہارے آہبوجی کیا کرتے پاکستان میں۔۔ 

گوارا متجسس تھی۔۔

بیرسٹر ہیں۔۔

اس نے سرسری انداز میں بتا کر ٹرالی پر نظر دوڑائی۔۔کوئی چیز رہ تو نہیں گئ۔ وہ گن رہی تھی۔۔

بیرسٹر ۔ گوارا نے متاثر انداز میں سر ہلارہی تھی

تم نے کچھ نہیں لینا۔۔ اریزہ نے پوچھا 

تم نے سب کچھ لیا مگر ٹوائلٹ رول نہیں لیا۔۔

گوارا نے کچھ سوچ کر اسے ٹوکا۔۔

میں لے لیتی ہوں۔۔ 

اریزہ نے فورا ایک رول اٹھا لیا۔۔

استعمال کرنا چاہیئے۔۔ صحت و صفائی کا خیال رکھنا چاہیئے ورنہ بندہ بیمار ہو جاتا۔۔ 

اریزہ نے ہوں کر دیا سوچا ہی نہیں گوارا کیوں اسے ٹوک رہی۔۔ گوارا بھی اسکئ بے دھیانی محسوس کرکے چپ ہوگئ۔۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

انی اپنے دفتر میں بیٹھی  فائلوں میں سر کھپا رہی تھیں جب انکے سیکٹری نے ایک رپورٹ لا کر سامنے رکھی۔۔

انہوں نے مصروف انداز میں ہی سر اٹھا کر دیکھا سیکٹری اشارہ سمجھ کر بتانے لگا۔۔

یہ شمالی کوریا ئی باشندوں کی فہرست ہے جنہوں نے 2014 میں وہاں سے نکلنا چاہا تھا اور مارے گئے۔ انکے بارے میں معلومات اکٹھا کی گئی ہیں۔۔ زندہ یا مردہ جسکی جو جتنی اطلاع ملی ہے میں نے اکٹھی کر دی ہے۔۔ 

انی نے اپنا کام چھوڑ چھاڑ فائل اٹھا لی۔۔

انہوں نے ایک ایک نام انگلی رکھ کر پڑھا تھا۔۔

مطلب مجھے جاناہی پڑے گا۔۔ وہ دھیرے سے بڑ بڑائیں۔۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

اپارٹمنٹ میں آکر وہ سارا سودا سلف باورچی خانے میں ٹھکانے لگانے لگی۔۔ نماز کا وقت تنگ ہو رہا تھا۔ سو جلدی سے نماز پڑھنے کی تیاری کرنے لگی۔ وضو کرکے کمرے کے ایک کونے میں چادر بچھا کر نیت باندھ لی۔ گوارا سستی سے بستر پر پڑی تھی۔ اسکو نماز پڑھتے دیکھ رہی تھی۔ اسکو اسکی نظریں محسوس ہو رہی تھیں مگر یقینا اسے بھی تجسس تھا۔ نماز پڑھ کر چائے کی طلب اسے کچن میں لے آئی۔

دروازے پر دستک ہورہی تھی۔۔ اس نے یہی سوچا گوارا کھول دے گئ۔۔

دستک مستقل  ہوئی تو اس نے کمرے میں جھانکا گوارا شائد غسل کر رہی تھی۔۔ پانی گرنے کی آواز آرہی تھی۔۔

وہ خود ہی دروازہ کھولنے چلی آئی۔۔

دروازہ کھولا تو آنے والے افراد بھونچکا ہی تو رہ گئے۔۔

تم۔۔ نووارد نے انگلی اٹھا کر اسکو ہینڈز اپ کر لیا تھا وہ ڈری ڈری سی پیچھے ہوئی

تم ہو گوارا کی نئی کرائہ دار۔۔ اس نے دانت کچکچائے۔۔

تم ۔۔ کیا ضرورت تھی تمہیں ڈورم چھوڑنے کی۔۔ 

تمہیں منع کیا تھا نا گوارا کے ساتھ اپارٹمنٹ میں منتقل ہونے سے ۔۔ کیوں ہوئیں۔۔ 

یون بن  جانے واقعی غصے میں تھا یا ڈرامہ کر رہا تھا وہ ڈر سچ مچ گئ۔۔

میں وہ۔۔ اس سے جواب نہ بن پڑا۔۔

بس ۔۔ ہیون نے یون بن  کو کندھے سے پکڑ کر روکا۔۔ 

روکنا ہے تو گوارا کو پلاسٹک سرجری کرنے سے روکو۔۔  

اس نے جتایا۔۔ یون بن  سر جھٹک کر رہ گیا۔۔

وہ کہاں رک رہی ۔۔ انداز بے بسی بھرا تھا۔۔

اریزہ کو اس سے ہمدردی سی محسوس ہوئی۔۔

میں سمجھائوں گی گوارا کو۔۔ 

اس نے کہا تو یون بن اور ہایون نے اسکی شکل دیکھی پھر زور سے ہنس دئے۔۔ 

سن ہی نہ لے وہ ۔۔ دونوں ہنگل میں اکٹھے بڑ بڑائے۔۔

انکو ہنستے اور بڑبڑاتے دیکھ کر اریزہ برا مان گئ۔۔

تم لوگوں کو میری صلاحیت پر شک ہو رہا۔۔ میں سمجھا سکتی۔۔ بہت اچھا سمجھاتی ہوں لوگوں کو مان جاتے ہیں میری بات۔۔ 

اس نے جتایا تو یون بن نے شرارت سے پوچھا

مثال کے طور پر۔۔ 

مثال کے طور پر ۔۔۔

وہ روانی میں بولتے بولتے رک گئ۔۔

میں بس چھٹیاں گزارنے آئی ہوں مستقل منتقل نہیں ہوگئ۔ یونی کھلے گی تو چلی جائوں گی۔ 

اس نے تسلی دی۔یون بن تھوڑا ٹھنڈا ہوا

چائے پیوگے؟ تم لوگ ۔۔

اس نے تکلفا پوچھا تھا۔۔ 

ضرور۔۔مگر گوارا کہاں ہے۔۔ اسکو کو فورا گوارا کی غیر موجودگئ ستائی

تمہیں آتی ہے بنانی۔۔ ہیون نے کسی وجہ سے پوچھا تھا وہ مزے سے بولی۔۔

میں ماہر ہوں پورے خاندان میں میرے ہاتھ کی بنی چائے مشہور ہے۔۔ لوگ فرمائش کر کے بنواتے۔۔

اس نے فخریہ انداز میں گردن اکڑائی۔۔ ہیون اسکے انداز پر ہنس دیا۔۔

اریزہ نئے کپ لائی تھی۔۔ بہت پیارے سے کارٹون بنے تھے۔۔ ساتھ ہنگل میں کچھ لکھا بھی تھا۔۔ وہ چائے چڑھا کر پلٹی تو ہیون دلچسپی سے کپ پر کو ہاتھ میں لیئے جائزہ لینے میں مشغول تھا

اچھے ہیں نا۔۔ اس نے تائید چاہی۔۔

ہاں۔۔اس نے خوشدلی سے کہا۔۔

وہ دوبارہ شاپرزکھول کھول کر ترتیب سے کیبنٹ میں رکھنے لگی۔۔

ہیون خود ہی آگے بڑھ کر مدد کروانے لگا۔۔ کاوئنٹر صاف کرکے اس لائن سے چار کپ سجائے۔۔

ایک پلیٹ میں گندم کے بسکٹس سجائے وہ یونہی بیکڈ کپ کیک بھی لائی تھی ایک پلیٹ میں وہ بھی سجا دیئے۔۔

اف کتنی سگھڑ ہوگئ ہوں میں۔۔ اسے خود پر پیار بھی آگیا۔۔

وہ خود کلامی کر رہی تھی۔۔ ہایون نے مسکراہٹ دبائی۔۔

اور ایک بسکٹ اٹھا کر کترنے لگا۔۔

تمہاری دوست بھی رہتی ہے نا یہیں۔۔

اریزہ کو اچانک ہی یاد آیا تھا سو بلا ارادہ پوچھ لیا۔۔ 

کون۔۔ ہیون اپنے دھیان میں تھا فوری طور پر یاد نہیں آیا۔۔

اریزہ کھسیا گئ۔۔

خود ہی سر پر چپت لگا دی۔

بڑی کوئ بچپن کی سکھی سہیلی ہوں نا جو اتنی بےتکلفی سے پوچھ بیٹھی ہوں۔۔ 

وہ اردو میں بڑ بڑائی۔۔ ہیون دلچسپی سے اسے دیکھ رہا تھا۔۔

کون کسکی بات کر رہی ہو۔۔ اس نے پھر پوچھا۔۔

نیور مائنڈ۔۔ بس ایسے ہی۔۔ کچھ نہیں۔۔ اس نے ٹالنا چاہا۔۔

ہایون ابھی بھی منتظر دیکھ رہا تھا۔۔

ہوپ کی بات کر رہی ہو۔۔ اسے خیال آیا۔۔ 

وہ میں نے گوارا کی تصویر دیکھی تھی وہ بتا رہی تھی تمہاری دوست نے بنائی ہے۔۔

اسے جواب سوجھ گیا سو وضاحت کی۔۔

ہاں ۔۔ آرٹسٹ ہے اچھئ پینٹنگ بناتی ہے۔۔ میں نے بھی بنوائی تھی اپنی۔۔ انتقال کر گئی ہے اب یہاں نہیں رہتی۔۔ 

ہیون سرسری انداز مین بتا رہا تھا۔۔

اریزہ نے غور سے دیکھا۔۔

نہ آنکھیں چمکیں نہ لہجہ بدلا۔۔

ایویں جی ہائے  نے اسکو گرل فرینڈ ہی بنا دیا تھا ہیون کا۔۔ خود ٹرائی مار لیتی اچھا خاصا ہینڈسم تو ہے۔۔ وہ اسے تنقیدی نظروں سے دیکھ رہی تھی۔۔

ہیون کو اسکی تنقیدی نگاہوں سے گدگدئ سی ہوئی۔ اسے خیال بھی نہ تھا اچھی طرح جائزہ لیکر گھوم بھی گئ

یون بن  اور گوارا اندر سے زور زور سے بول رہے تھے ۔ 

ایڈون کا نام آیا تو ہیون  چونکا۔۔ دونوں کا لہجہ اتنا مختلف تھا کہ اریزہ کو سمجھ نہیں آیا۔۔البتہ ہیون  کو چونکتے دیکھ کر پوچھنے لگی۔۔ 

دونوں لڑ تو نہیں رہے۔۔ 

آنیو۔۔ اس نے فورا نفی میں گردن ہلائی۔۔ پھر انگریزی میں وضاحت کی۔۔

نہیں۔۔باتیں کر رہے ہین۔ تمہاری چائے میں دودھ ابالا جاتا۔۔ وہ چولہے کو دیکھ رہا تھا۔۔

ہاں دودھ ابالتے پھر پتی ڈالتے۔۔ وہ۔مزے سے بتانے لگی۔۔

تو ڈال دو۔۔ ہایون نے اسکی آنکھوں میں دیکھ کر کہا۔۔

کیا۔۔ اسے سمجھ نہ آئی۔۔ پھر اچانک خیال آیا تو چونک کر پلٹی دودھ ابل کر بس گرنے ہی والا۔تھا۔۔ اس نے بھاگ کر چولہا دھیما کیا۔۔

چائے بنا کر اس نے پیالیوں میں نکال کر گوارا کو آواز دی۔۔ 

واہ یہاں تو پارٹی کا اہتمام ہے۔۔ گوارا اور یون بن خوشگوار انداز میں ہنستے بولتے کھنچے چلے آئے۔۔ 

دونوں کا مزاج پل میں تولہ پل میں ماشہ تھا۔۔

جبھئ شائد نبھ رہی تھی۔۔

یہ کیا ہے۔۔ یون بن کو جھٹکا لگا تھا۔۔

گوارا کو االبتہ اندازہ تھا۔ کپ اٹھا کر اس نے عبارت پڑھی پھر خود منتخب کر کے ایک کپ خود لیا ایک یون بن  کی جانب بڑھا دیا۔۔

ہیون البتہ یہ جھٹکا پہلے سہ چکا تھا سو آرام سے ایک کپ اپنی جانب کھسکا لیا۔۔

چائے ہے۔ اریزہ اسکے انداز پر شرمندہ ہوگئ۔۔

یہ چایے تھوڑی کہی تھی۔۔ اس نے صاف کہا۔۔

تو کیا ہوا انگریزی چائے ہےکچھ نیا بھی آزمانا چاہیئے۔۔ گوارا نے آرام سے کہہ کر گھونٹ بھرا۔۔

وہ ہم شام کو میرا مطلب ہم پاکستانی شام کو یہی چائے پیتے ۔۔ اریزہ نے وضاحت کی۔۔ 

مزے کی ہے نیا زائقہ ہے شکریہ اریزہ۔۔

ہیون  نے اسے شرمندہ ہوتے دیکھا تو اثر زائل۔کرنے کو بولا۔۔

مجھے پتہ تم کو بھی زیادہ پسند نہیں آئی ہو گی۔۔ تم لوگوں کو اسکی عادت نہیں نا سوری۔۔ اریزہ خجل سی ہو گئی تھی۔۔ یون بن  نے دلچسپی سے اسکے گال گلابی ہوتے دیکھے۔۔ 

نہیں نہیں۔۔ اچھی ہے مزے کی ہے۔۔ گوارا نے سچ مچ دل سے کہا تھا۔۔

میں بھی اس ذائقے کو برا نہیں کہہ رہا تھا۔۔ یون بن  کو بھی اخلاقیات نبھانے کا خیال آیا۔۔ 

ہایون خاموشی سے چسکیاں لیتا رہا۔۔ 

اریزہ نے اپنا کپ اٹھایا تو گوارا نے ایک نظر اسے دیکھا ایک نظر ہیون کو اور قہقہہ لگا کر ہنس پڑی۔۔

اس دن تم لوگ کپل شرٹس پہن کر پھر رہے تھے آج کپل کپس میں چائے پی رہے۔۔ کیا سمجھوں میں یہ قدرت کا اشارہ ہے دو دل ملانے کیلیئے۔۔

وہ شرارت سے ہنگل میں بولی۔۔ ہیون اور یون بن  نے بھی چونک کر کپ دیکھا۔۔

 میری ایک خواہش ہے

میں اور تم ہاتھوں میں ہاتھ ڈالے 

یون بن  نے عبارت پڑھی۔۔

پھر اریزہ کے کپ پر نظر ڈالی وہ انکی باتوں سے بے نیاز چائے پی رہی تھی۔۔

بقیہ اسکے کپ پر لکھا تھا۔۔

 سڑک کنارے چل رہے ہوں 

اور موسم کی پہلی برفباری ہم پر برس اٹھے

ہیون اور یون بن  زور سے ہنسے 

اریزہ نے خفا خفا نظر ڈالی۔۔ 

کتنی غلط بات ہے تم لوگ اپنی زبان میں بولے جا رہے مجھے کچھ سمجھ نہیں آرہا اوپر سے ہنس بھی رہے۔۔

اس نے کہہ ڈالا۔۔

ہم شعر پڑھ رہے تھے۔۔ ہیون نے فورا صلح جو انداز میں کہا۔۔

اب ہم کیا کریں ہم ٹھہرے کورین نا انگریزی سمجھ آتی نہ انگریزی چائے۔۔ یون بن  نے آہ بھر کر پھر چھیڑ دیا۔۔

ہماری بدقسمتی  انگریز دو سو سال ہم پر مسلط رہے دو بلائیں چھوڑ گئے انگریزی اور چائے۔۔چاہ کر بھی جان نہیں چھڑا پا رہے ہم۔۔ اریزہ نے صاف گوئی سے کہا۔۔

پتہ ہے مفت پلاتے تھے شروع شروع میں ایسے عادی کیا تھا انہوں نے۔۔ اریزہ نے بتایا تو تینوں دلچسپی سے سننے لگے۔

ورنہ برصغیر کے لوگ تھوڑی چائے پیتے تھے۔۔ 

واقعی۔۔ وہ کافی حیران ہوئے۔۔ 

کاروبار کے بہانے آئے تھے دھیرے دھیرے قبضہ کر لیا ۔۔ وہ منہ بنا کر بتا رہی تھی۔۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

ایڈون شاہزیب سالک کم سن ڈنر کرنے جا رہے تھے

ارادہ قریبی فوڈ پوائنٹ تک جانے کا تھا سو پیدل ہی رواں ہوئے۔۔  جب سنتھیا کی کال آئی اسے۔۔

کہاں ہو۔۔

وہ قصدا ایک قدم پیچھے ہو کر اس سے بات کرنے لگا۔۔

کیا کر رہے ہو۔۔ وہ شائد بور ہورہی تھی۔۔

یار شاہزیب وغیرہ کیساتھ ڈنر کا پروگرام ہے۔۔ وہیں جا رہے۔۔ تم نے کھانا کھا لیا۔۔

نہیں۔۔ تم آجائو ان لوگوں کو جانے دو اکٹھے ڈنر کرتے ہیں۔۔ اس نے حسب عادت ناز بھرے انداز سے اسے کہا۔۔

یار ۔۔ وہ تھوڑا سا بےزار ہوا۔۔

میں نے ہی پروگرام بنایا ہے سوری جان تم اریزہ کیساتھ جائو کھانا کھا لو بھوکی نہ سونا اچھا۔

۔ اس نے مزید اپنا انداز نرم کرکے پیار سے کہا تھا۔۔

اریزہ نہیں ہے یہاں۔۔ اسکا منہ کڑوا ہوگیا۔۔

کہاں گئ ہے۔۔۔ اس نے یونہی پوچھا تھا مگر وہ بھڑک کر بولی۔۔

جہاں بھی جائے تمہیں کیا۔ اور ہم کیوں نہیں گئے اسکی وجہ سے؟ ۔۔

ایڈون نے ہونٹ بھینچے۔۔

نہیں۔۔ 

اچھا بعد میں بات کرتے ہیں۔۔ اس نے بات ختم کرنی چاہی۔۔ 

تم میرے ساتھ ہمیشہ ایسے کرتے ہو۔ میں بات کر رہی ہوں نا کیوں فون بند کر رہے۔ میں نے تو کبھی ایسا نہیں کیا جب جس وقت بھی تم فون کرتے سب کام چھوڑ کر تم سے بات کرتی تمہاری خاطر اپنی انا اپنے سب اصول توڑ لیئے پھر بھی تم خوش نہیں ہو مجھ۔ سے کیوں بھلا۔۔ وہ زور زور سے بولتی روہانسی ہو چلی تھی۔۔

ایسی کوئی بات نہیں۔۔ دوستوں کیساتھ ہوں بعد میں فارغ ہو کر کرتا ہوں نا بات۔۔ ایڈون کو اب ہلکا ہلکا غصہ آنا شروع ہو گیا تھا۔۔

 میری جگہ اریزہ ہوتئ تو ؟۔۔ اسے تو ایسے نظر انداز نہیں کرتے نا تم۔۔ 

اریزہ کہاں سے آگئ بیچ میں۔۔

زچ ہو کر وہ تھوڑا اونچی آواز میں بول گیا۔۔

آگے آگے باتیں کرتے کم سن سالک اور شاہزیب تینوں یکدم خاموش ہو کر مڑ کر  اسے دیکھنے 

 لگے۔۔

آئی نہیں وہ گئ ہی نہیں ہمارے بیچ سے مین کتنی بھی کوشش کر لوں وہ جاتی ہی نہیں تمہارے نا دل سے نا دماغ سے ۔۔ وہ بھڑک کر چلائی

میرے ساتھ ہو کر بھی تم اسی کو سوچتے ہو۔۔ میں بات کر رہی ہوتی ہوں تمہارا دھیان کہیں اور ہوتا۔۔ 

میں جان بھی دے دوں تمہارے لیئے تمہیں کوئی فرق نہ پڑے ایسا کیا ہے اس میں؟۔۔ 

تم سے کچھ کہنے کا فائدہ ہی کچھ نہیں۔۔ اس نے دانت کچکچا کر نہ صرف کال بند کی بلکہ موبائل بھی بند کر دیا۔۔ 

سنتھیا نے ایکدم کال بند ہونے پر موبائل کو کان سے ہٹا کر دیکھا پھر فورا ہی دوبا رہ کال ملا دی۔۔

اسکا نمبر بند تھا۔۔

آہ۔۔ اسے بے تحاشہ رونا آگیا اس نے بلبلا کر موبائل سامنے دیوار میں دے مارا ۔۔

خیریت۔۔ شاہزیب اور سالک اسکا لال بھبھوکا چہرہ دیکھ کر پوچھے بنا نہ رہ سکے۔۔

ہاں۔۔ وہ زبردستی مسکرایا۔۔

کچھ نہیں اس نے ٹال دیا ان دونوں نے بھی اصرار نہ کیا۔۔

کم سن انکی باتیں سمجھ نہیں سکتا تھا سو دھیان ہٹا لیا۔۔

یار کیا لڑکی ہے۔۔

یونہی باتیں کرتے شاہزیب کی سامنے بل بورڈ پر نظر پڑی تھی۔ 

ڈیجیٹل بورڈ تھا کئی فٹ کی اسکرین پر ایک کوریائی حسینہ جلوہ گر تھی۔ کسی کریم کا ہی اشتہار تھا دودھ جیسی گوری کھنچی ہوئی آنکھیں کسی حور کا گمان ہورہا تھا اس پر۔۔

ہاہ واقعی۔۔ سالک بھی رک کر دیکھنے لگا۔۔

اوئے بھابی ہے تیری ہٹ پرے۔۔

شاہزیب نے اسکو فورا  دھکا دیے کر پرے کیا۔۔ 

شکل دیکھ اتنی گوری ہے اسے بھی گورا ہی پسند آئے گا۔۔

سالک نے ڈھٹائی سے کالر جھاڑے۔

کس کتاب میں لکھا۔۔ اسے کم گورا بھی پسند آسکتا۔۔

شاہزیب کی بات میں  وزن تھا۔۔ 

ابے چل۔۔ سالک نے اسکو سڑک کی جانب دھکا دیا۔۔ وہ پلٹ کر آیا اس پر پل پڑا۔۔

انکی مار کٹائی سے بچتا ایڈون دونوں ہاتھ اپر کی جیبوں میں ڈالے محظوظ ہو رہا تھا۔۔کم سن اپنے دھیان سے چونکا تو براہراست کشتی اسکے سامنے چل رہی تھی۔۔

  میری نظر پہلے پڑی وہ اب میری ہے۔۔

شاہزیب  اسکی گردن قابو کی۔۔ 

 یہ کیوں لڑ رہے اچانک۔۔ اس نے ایڈون سے حیرت سے پوچھا۔

دونوں گتھم گتھا سڑک پر پڑے تھے۔۔

ایڈون نے بل بورڈ کیطرف اشارہ کیا۔۔ 

سوزی بے؟۔۔ وہ حیران ہوا۔۔

ایڈون نے اثبات میں سر ہلایا تو وہ ہنس دیا۔۔

چھوڑو سالوں ۔۔ نہ تمہارے کام کی ہے نہ تمہارے۔۔

ایڈون نے آگے بڑھ کر سالک پر پلے پڑے شاہزیب کو کھینچا کم سن نے ہنستے ہنستے بے حال ہوئے سالک کو ہاتھ پکڑ کر اٹھایا۔۔ دونوں بندر اب اپنے کپڑے جھاڑ رہے تھے۔۔

میرا بھی کرش رہا ہے اس پر ۔۔ مگر سنا ہے لی من ہو(کوریائی اداکار) کے ساتھ آجکل تعلق میں ہے۔ 

کم سن نے معلومات میں اضافہ کیا۔۔

ہاہ۔۔

ایک تو ہر لڑکی جس پر میرا دل اٹکتا یا تو منگنی شدہ نکلتی یا شادی شدہ۔۔ میں لگتا کنوارا مروں گا۔۔

شاہزیب نے یاسیت سے کہا تھا کم سن نے ایڈون کو وضاحت طلب نظروں سے دیکھا تو اس نے مترجم کے فرائض نبھائے۔۔ کم سن ہنس دیا۔۔

سالک نے منہ بنایا۔۔

اب تو نہیں ہے دوبارہ کوشش کر کے دیکھ۔۔

وہ دھیرے سے اردو میں بڑ بڑایا۔۔

شاہزیب کے چہرے پر سایہ سا لہرایا۔۔ ایڈون بھی یکدم سنجیدہ نظر آنے لگا۔۔

کم سن تینوں کی باری باری شکل دیکھنے لگا۔۔

کیا ہوا تم لوگوں کو۔؟۔۔

اس نے چٹکی بجائی۔۔

کچھ نہیں۔۔ یہی کہہ رہے تھے تم جیسا بندہ اکیلا ہے تو ہمارے حال گئے گزرے ہیں

۔۔ ایڈون نے سنبھل کر ہلکے پھلکے انداز میں بات گھما دی

کم سن زور سے ہنسا۔۔

مجھے بچپن سے بس ایک لڑکی پسند آئی سیدھا یہاں جگہ بنائی۔۔ اسکے بعد کوئی یہاں دستک نہیں دے پائی۔۔ 

اس نے دل پر ہلکے سے مٹھی بنا کر رکھی۔۔ اسکی آنکھون میں تبھی ایک اور چہرہ بھی در آیا۔۔ 

یہ کیا ہوا۔۔ وہ ساکت رہ گیا۔۔ 

وہ تینوں خاموشی سے اسے دیکھنے لگے۔۔

پھر؟۔۔ ایڈون نے پوچھا تو وہ چونک سا گیا۔پھر شانہ جھٹک کر دھیرے سے مسکرا دیا۔۔

پھر یہ کہ اسے کوئی اور پسند تھامیں تو اسے بتا بھی نہیں پایا اپنے جزبات کا۔۔ وہ ہنسا۔۔

کیوں؟۔۔ شاہزیب نے فورا پوچھا۔۔  

اسے میں نظر بھی نہیں آتا تھا اسکے آگے۔۔ اور مجھے اس سے بھی پہلے اسکے جزبات کا احساس ہو گیا تھا۔۔ آپ جس سے محبت کرتے اس کا رویہ  اسکی سوچیں کسی بھی دوسرے انسان سے زیادہ جلدی پڑھ لیتے۔۔ آپکا دل اس انسان کے دل کی دھڑکن کب کہاں تھمتی یہ بھی محسوس کر لیتا۔۔ 

وہ بظاہر مسکرا کر بتا رہا تھا۔ مگر اسکی آنکھیں جھلملانے لگی تھیں۔۔

ایڈون اسکے الفاظ میں کھو سا گیا۔۔

ہر بار سنتھیا اس سے اریزہ کے نام پر ہی لڑتی۔۔ تو کیا۔۔ وہ سوچ میں پڑا۔۔

پھر بھی کہتے تو کیا پتہ وہ قدر کرلیتی 

۔۔ سالک کو اسکی بات پسند نہیں آئی۔۔ ایک۔انسان دوسرے انسان کے بارے میں کیسے کوئی پریقین اندازہ لگا سکتا جبکہ انسان ہی تو نا قابل بھروسہ مخلوق کب کہاں کسکے جزبات بدل جائیں کون جانے۔۔ 

آپ کسی سے محبت کریں تو نا ممکن ہے اس انسان کو پتہ نہ چلے۔۔ محبت اپنا آپ منوا لیتی ہے۔۔ الا وہ انسان جان کے انجان بنے تو علیحدہ بات۔۔ مجھے اسے بتانے کی ضرورت ہی نہیں تھی۔۔ اسے پتہ تھا۔۔ 

کم سن سالک کی آنکھوں میں دیکھ کر بولا۔۔ انداز ایسا تھا جیسے کہہ رہا ہو بچے ہو کچھ پتہ وتا نہیں تمہیں۔۔ سالک کندھے اچکا کر رہ گیا۔۔ واقعی محبت تو آج تک نہ ہوئی تھی اسے ہوتا ہوگا ایسا بھی۔۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔  

وہ گرم کافی کا مگ اٹھا کر ٹیرس میں چلی آئی۔۔ دور تک دمکتی جگنو سی روشنیاں ہلکا ہلکا ٹریفک کا شور دور فلائی اوور اور اس پر جگمگاتی گاڑیوں کی بتیاں۔۔ وہ گھنٹوں کھڑے دیکھ سکتی تھی۔۔

کتنا پیارا ہے سیول۔۔ اسکے منہ سے بے ساختہ نکلا۔۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

کتنا برا ہے سیول۔۔ رات کے گیارہ بجے بھی سب جاگ رہے ایسے پھر رہے جیسے صبح انکو کوئی کام ہی نہیں۔۔ 

اس نے بےزاری سڑک پر رواں ٹریفک کو گھورا۔۔

شور اسکے سر پرگراں گزر رہا تھا۔۔

آج اس نے مقررہ وقت سے زیادہ دیر کام کیا تھا۔۔ 

اسکی واپسی کیلیئے آخری بس اس سے چھوٹ گئ تھی۔۔ ٹیکسی کے کرائے کے پیسے نہیں تھے۔۔ وہ فی الحال بس اسٹاپ پر بیٹھی میٹرو اسٹیشن بند ہونے کا انتظار کر رہی تھی۔۔ اسکے داخلی حصے میں نیچےسیڑھیوں کے پاس اس نے اکثر کچھ بے گھر افراد کو بستر لگائے سوئے دیکھا تھا۔۔ آج اسکا ارادہ بھی یہی کرنے کا تھا۔۔ اسپا تک پیدل جانے کی ہمت نہیں تھئ۔۔

وہ نیند اور بھوک سے نڈھال تھی۔۔ بھوک برداشت کرنے کی تو اسے عادت تھی مگر نیند۔۔ 

سو جائو سیول۔۔ وہ بڑ بڑائی۔۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

کم آن سیول۔۔ ویک اپ۔۔ بریو ہارٹ اسکے کان میں چلا رہے تھے وہ مگن سر ہلاتی محظوظ ہو رہی تھی۔۔

آج میرا دل کر رہا میں شائع کروں۔۔

کچھ نہیں۔۔

آج کیلیئے کچھ نہیں۔۔ بس کچھ بھی نہیں۔۔ نہ اچھا کہنے کو ہے نا برا کہنا۔۔

جینا ہے بس ابھی اس وقت کو۔۔ جیو میرے ساتھ بس صرف اس پل کو۔۔

اس نے بلاگ پر شائع کیا۔۔

پہلا کمنٹ۔۔

کچھ نہیں۔۔۔ اور آگے ہا ہا ہا ہا۔۔۔

دوسرا۔۔ 

جب کچھ کہنا نہیں ہوتا تو پوسٹ کیوں کرتے ہو۔۔؟؟؟؟؟؟

عمائما کی طرح کوئی چلایا تھا۔۔

تیسرا۔۔

مجھے بھی ایڈمن لے لو قسم سے کبھی بھی ایسا کچھ نہیں شائع کروں گا وعدہ۔۔۔

چوتھا۔۔

گزر چکا ایک پل اب جائیں۔۔ ؟۔۔

وہ ہنسی۔۔

پانچواں۔۔

میں ایسا ہی کرتا ہوں۔۔ ہمیشہ۔ 

عجیب سی آئی ڈی۔۔ 

آہ۔۔ اس نے پہچانا۔۔ 

آپکا نام سمجھ نھہیں آتا انگریزی میں لکھئے مہربانی۔۔

اس نے ٹائیپ کیا۔۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

وہ ابھی ابھی اپنے اپارٹمنٹ آیا تھا۔۔ بتیاں جلاتا۔۔ جوتے حسب عادت گھر میں داخل ہوتے ہی سب سے پہلے شوریک میں سجائے۔۔ اسکے ہاتھ میں بڑے بڑے شاپر تھے وہ ہفتے بھر کا سودا لے کر آیا تھا۔۔ اب چیزیں ٹھکانے پر رکھ کر اس نےپیک کھانا نکالا۔۔ کھمچھی اور سادے نوڈلز۔۔ کھمچی پر ایک کونے میں حلال بھی لکھا تھا۔۔

اس نے گھڑی میں وقت دیکھا پھر انتظار کرنے لگا۔ تاوقتیکہ مقررہ وقت پر سوئی آن ٹھہری۔

اس نے دعا پڑھ کر رغبت سے کھانا شروع ہی کیا تھا کہ اسے کال آگئ۔۔

بٹلر ہانگ۔۔

وہ نام دیکھ کر چونکا۔۔ چاپ اسٹک رکھ کر اس نے بے تابی سے فون اٹھایا۔۔

یوونگ سے او۔۔ 

آننیاگ واسے او۔۔ بٹلر ہانگ ادب سے گویا ہوئے۔۔

آننیانگ واسے او۔۔ وہ سنبھلا۔۔

آپ کو  رات کو زحمت دینے کیلیئے پیشگی معزرت۔۔ مگر بات کچھ ایسی ہے کہ میں صبح تک کا انتظار نہیں کر سکتا۔۔ وہ گھبرائے ۔۔

کہیئے۔۔ اسکے دل کی دھڑکن تھمی۔۔

مادام نے چالیس فیصد شئرز آپکے چچا کے نام کر دئے ہیں۔۔اسطرح انکا حصہ آپ سے تھوڑا سا ہی کم رہ جائے گا۔۔ اگر وہ ایک دو ڈاریکٹرز کو اپنے ساتھ ملانے میں کامیاب ہو گئے تو پوری کمپنی انکے ہاتھ میں آجائے گی۔۔ کل صبح وہ ڈائریکٹرز کی اہم۔ملاقات بلا کر اپنے اثر رسوخ کی دھاک بٹھانا چاہیں گے۔۔ مجھے لگتا ۔۔۔۔۔۔۔۔۔

وہ کہہ رہے تھے  علی نےغیر دلچسپی سے بات کاٹ دی۔

آہمونی کیسی ہیں ؟۔۔

ٹھیک ہیں۔۔ وہ چپ سے ہوئے۔۔

آپ فکر نہ کریں۔۔کر لینے دیں میرے چچا کو کمپنی پر قبضہ مجھے اس کاروبار میں زرا بھر دلچسپی نہیں۔۔ پھر جو چیز جیسے شروع ہوئی ہے ویسے ہی ختم بھی ہوتی ہے۔۔ آہبوجی نے بھی چچا کو ایسے ہی بے دخل۔کیا تھا جیسے وہ اب مجھے کریں گے۔۔

اس کا اطمینان قابل رشک تھا۔۔ 

مگر۔۔ بٹلر نے کچھ کہنا چاہا۔۔ 

مجھے اس گھر سے بس تب تک اور اتنی دلچسپی ہے جب تک آہموجی وہاں ہیں۔۔ آئندہ آپ زحمت مت کیجئے گا انکی کوئی بھی اطلاع دینے کی۔۔ اسکا انداز درشت نہیں تھا مگر محسوس کی جانے والی سختی تھی۔۔

بہتر ۔۔ وہ۔ہونٹ بھینچ گئے۔۔

آپ سنائیں سب ٹھیک ٹھاک آپکے گھر میں۔۔ جان کی اسکولنگ کیسی جا رہی ؟۔۔   وہ اب ہلکے پھلکے انداز میں پوچھ رہا تھا۔۔ اس نے دوبارہ کھانا کھانا شروع کر دیا تھا۔

سب ٹھیک ہے آپکو یاد کرتا ہے۔۔ وہ مشکور ہوئے۔۔

میں آئوں گا اس سے ملنے۔۔ اس نے خوشدلی سے کہا۔۔

جی ۔۔ بٹلرہانگ مسکرائے۔۔ 

آپ اپنا اور آہموجی کا خیال رکھیے گا۔۔ میں اطمینان سے اسلیئے ہوں کہ آپ انکے پاس ہیں۔۔ ۔۔ جون جے کا انداز التجائیہ ہوا تھا

دے۔۔ وہ اثبات میں سر ہلا گئے۔۔

اس نے الوداعی کلمات ادا کرکے فون بند کر دیا۔۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

اس نے پوری پریزنٹیشن بنا کرفائل  ماں کے سامنے ٹیبل پر رکھی تھی 

فائلوں میں الجھی سومئ نے مسکرا کر سر اٹھایا۔

وہ اڑتالیس سال کی انتہائی اسمارٹ اور حسین خاتوں تھیں۔۔ وہ خواتین کے تھری پیس سوٹ مین ملبوس تھیں سادہ سے میک اپ میں تیس تک کی لگ رہی تھیں۔۔ جانے اسکی ماں بے حد پیاری تھی یا اسے پیاری لگ رہی تھی کیوں کہ ماں تھی۔۔ وہ سوچ میں پڑا۔۔ 

بیٹھو۔۔ انہوں نے اشارے سے اسے بیٹھنے کو کہا۔۔ 

مجھے بہت خوشی ہے تم نے میری بات مان لی۔۔ 

میں بس یہ سب تمہارے حوالے کر دینا چاہتی ہوں

اب تمہاری آہمونی بوڑھی ہوگئ ہیں۔۔ 

وہ مسکرا کر کہہ رہی تھیں۔۔

آپ اور بوڑھی۔ وہ ہنسا۔۔ آہمونی جی کا دل چھو گئی اسکی ہنسی۔۔ کتنے عرصے کے بعد اسے یوں ہنستے دیکھا تھا۔۔ 

آئنہ دیکھیں میری چھوٹی بہن لگ رہی ہیں۔۔

اس نے مزید کہا وہ زور سے ہنس پڑیں۔۔

اف بہت فلرٹی ہو۔۔ ایسی ہی باتیں کرکے گھائل کیا ہوگا رچل کو۔۔

وہ۔یونہی روانی میں ہنستئ اسکی دکھتی رگ چھیڑ گئیں۔ جون جے کی مسکراہٹ دھیمی پڑی۔ سومئئ نے بیٹے کا چہرہ بجھتا دیکھا تو خود کو کوس کر رہ گئیں۔۔

بیانتا۔۔ انہوں نے شرمندہ سے انداز میں کہا۔۔

آہمونی ۔۔ جون جے انکا دل رکھنے کو مسکرایا۔۔

آئندہ مجھے کبھی سوری مت کہیئے گا۔۔ آپ مجھے گناہگار کرتی ہیں۔۔ 

آہمونی کو اسکی بات سمجھ نہیں آئی۔۔ مگر چپ ہوگئیں۔۔

کیا پرپوزل لائے ہو۔۔ ؟۔۔ وہ نظر کی عینک۔لگا کر اسکی فائل دیکھنے لگیں۔۔

انکے چہرے پر پہلے حیرانی آئی پھر الجھن آخر میں وہ اسے سر اٹھا کر گھورنے لگیں۔۔

یہ کیا ہے ؟۔۔

جون جے نے گہری سانس لی۔ انکا ردعمل غیر متوقع نہیں تھا۔۔

تم نے یہ کیا رپورٹ بنائی ہے۔ جون جےآ۔۔ وہ 

حتی المقدور لہجے پر قابو پا کر رسانیت سے بولیں۔۔

جون جے مضبوط لہجے میں بولنا شروع ہوا۔۔

میں نے منافع میں کمی کرکے ملازمین کیلیئے نئے فنڈز کے اجرا کی تجویز دی ہے۔۔ ملازمین کے بہبود فنڈ میں سے بلا سود قرض دینے اور انکی تنخواہ میں اضافے کیساتھ ساتھ فی  الحال جو جو ملازمیں کسی وجہ سے کمپنی کے مقروض ہیں انکے قرضے معاف کرنے کی بھی تجویز دی ہے۔ میں نے خود اکاوئنٹس کے معاملات دیکھے ہیں۔۔ ہم اصل رقم سے دوگنا کم از کم وصول چکے ہیں۔۔ اب مزید یہ ظلم کرنے کی ضرورت نہیں۔۔

تم پاگل تو نہیں ہوگئے ہو؟۔۔ 

وہ خاموشی سے سنتے ضبط کھو کر چلائیں۔۔

جون جے فورا خاموش ہوا۔۔

ٹیکس کی مد میں اتنا پیسہ بھاڑ میں جھونکو گے میں نے مان لیا۔ تم اپنے باپ کی طرح چور راستے تلاش نہیں کرنا چاہتے مت کرو۔۔ مگر یہ سود سے کیا بیٹھے بٹھائے خار ہوگئی ہے تمہیں؟۔۔

آہمونی جی ہم بہت منافع کماتے ہیں ان سے سود وصول نہ کرکے بھی نقصان میں نہیں رہیں گے البتہ

ان تنخوادار ملازمین کا بھلا ہو جائے گا۔۔ اس نے سمجھانا چاہا وہ درشتی سے گھورتی رہیں۔۔

اور میں نے تجویز کی ہے۔۔ہم اپنی پراڈکٹس کی قیمت کم نہیں کر سکتے کیونکہ وہ استحکام پر ہیں تاہم ہم مقدار بڑھا ئیں گے تاکہ ناجائز منافع وصول نہ ہو۔۔ 

اس نے کہا تو حقیقتا سومئئ کو لگا اسکا دماغ الٹ چکا ہے۔۔

کیا۔لگتا تمہیں۔۔ ہم یہاں کوئی خیراتی ادارہ چلا رہے۔

 بیس ہزار لوگ اس کمپنی سے اپنا معاش چلا رہے۔۔ تم کمپنی کو ڈبونا چاہتے ہو۔۔ ؟

نہیں میں بس ان خامیوں کو دور کرنا چاہتا ہوں جن سے ہمارے ملازمیں مشقت کرکے پیٹ بھر کر نہیں کھا پاتے اور ہم محض نگرانی کرکے اپنا پیٹ جہنم سے بھر رہے۔۔ اسکا انداز نہ چاہتے ہوئے تلخ ہو گیا۔۔

جہنم۔ وہ چونکیں۔۔

یہ تمہارے اس نئے مزہب کی وجہ سے ۔۔ افف۔ انہوں نے پیشانی پیٹ ڈالی۔۔وہ غصے سے ابلتی اٹھ کھڑی ہوئیں۔

 مجھے لگا تھا تم رچل کے جانے کی وجہ سے اپ سیٹ ہو پریشان ہو میں تمہیں سنبھلنے کا موقع دے رہی تھی۔۔ تم نے مزہب بدلنے کا فیصلہ کیا میں نے اعتراض تک نہیں کیا مجھے لگا تھا کچھ عرصے میں خود ہی تمہارا جنون کم ہو جائے گا مگر تم تو برین واش ہوتے جا رہے ہو۔۔ 

کس قسم کا یہ تارک الدنیا مزہب ہے یہ؟۔۔ پچھلا پورا مہینہ تم روزے کے نام پر بھوکے رہے اب اپنا پیسہ لٹا دینا چاہتے ہو  وقت بے وقت عبادت کرتے ہو۔۔ کھانا پینا سونا جاگنا سب حرام ہے کیا تمہارے مزہب میں؟۔۔ کوئی انسانوں والا۔کام جائز ہے تمہارے اس سو کالڈ مزہب میں کہ نہیں۔۔تم کتنے سمجھدار بیٹے تھے میرے کیا ہوتا جا رہا ہے تمہیں۔۔ 

وہ چلا رہی تھیں  بے بسی سے گھگھیا رہی تھیں۔۔ جون جے کی ماں ہونا انہیں بے حد کڑا امتحان لگ رہا تھا۔۔ جون جے بالکل خاموش رہا۔۔

آپکو لگتا نہیں کہ میں اب زیادہ بہتر بیٹا بن گیا ہوں آپکا۔۔

اس نے بے چارگی سے کہا تھا۔۔

ہرگز نہیں۔۔ وہ قطعیت سے بولیں۔۔

اسلام اور اسکے بارے میں مغرب جو پراپیگینڈہ کرتا میں کبھی اس سے متاثر نہیں ہوئی مگر اب

۔ وہ رکیں۔۔ اور جون جے کی آنکھوں میں آنکھیں ڈال کر بولیں۔۔

سب صحیح لگتا ہے واقعی یہ ایسا مزہب ہے جو انسان کا دماغ بند کر دیتا اور شدت پسندی پر اکساتا۔۔ 

وہ عجیب سی زبان والی کتاب اس سے سب سیکھتے ہو ابھی میں اس کتاب کو گھر سے۔۔

بس۔۔ جون جے ضبط کی شدت سے سرخ ہوتے چہرے کیساتھ پورے قد سے انکے مقابل آکھڑا ہوا۔۔

اسکی کنپٹی پھڑک رہی تھی۔۔ 

انہیں لگا تھا وہ اب کچھ کر بیٹھے گا۔۔ اسکی آنکھوں میں سرخی تھی۔۔ وہ پہلی بار زندگئ میں اپنے بیٹے کی آنکھوں میں دیکھ کر گھبرائی تھیں

آپ مجھے جتنا مرضی برا بھلا کہہ لیں میرے مزہب کو اس کتاب کو کچھ مت کہیں۔۔ آپ نہیں جانتی اسکی حرمت۔۔

وہ تھم کر بولا تھا۔۔ کپکپاتے لب دھیمی آواز وہ تو چلایا بھی نہیں تھا۔۔ اسکی انکھیں بس نم ہو کر رہ گئی تھیں

۔۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

اسکا موبائل بجا تو وہ چونکا۔۔ 

بلاگ کی اپ ڈیٹ تھی۔۔

اسکی اشتہا ختم ہو چکی تھی اس نے میز سے خالی پلیٹ اٹھا کر کھانا ڈھک دیا اور ہاتھ نیپکن سے پونچھتا موبائیل اٹھاتا کمرے میں چلا آیا۔۔ اطمینان سے بستر پر نیم دراز ہو کر اس نے پڑھا۔۔ 

کمنٹ کیا۔۔ ایڈمن نے عجیب فرمائش کی تھی۔۔

جے او۔۔ وہ نام لکھتے لکھتے رکا۔۔ پھر مسکرا کر علی لکھ دیا۔۔ محمد علی۔۔ 

فورا جواب آیا۔۔

بہت خوبصورت نام ہے۔۔ ماشااللہ۔۔ 

یہ کیسا نام ہے؟۔۔

اب نام بدلنے کی کیا ضرورت ہے ۔۔۔ جو مرضی مزہب کے پیروکار بنو نام کیوں بدل رہے

میں تو جون جے ہی کہوں گا۔۔ ۔

اس کے زہن میں مختلف لوگوں کے ردعمل گونجے

اس نے سر جھٹکا۔۔

شکریہ ۔۔ اور آپکا؟

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

نو مسلم۔ 

اس نے سوچا۔۔ 

پھر اپنا نام لکھ دیا۔۔

بیٹری ختم ہونے والی تھی۔۔۔۔۔ اس نے بلاگ  بھئ بند کر دیا۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

ختم شد 

جاری ہے۔

Kesi lagi apko salam korea ki qist? Rate us

Rating

By Syeda Vaiza Zaidi

Vaiza Zaidi is a female writer who writes Urdu web novels online. She is one of the most popular and prolific writers in the Urdu literature scene. She has written over 50 novels in different genres, such as romance, thriller, comedy, and social issues. She has a large fan following who admire her for her creativity, style, and humor. She is also an active blogger who shares her views on various topics related to Urdu culture, literature, and society. She is an inspiring role model for many young and aspiring Urdu writers.

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *