بھاری سامان اٹھاتا مزدور ہانپتا ہوا سیدھا ہوا مجھے سے بولا۔۔
باجی اس چوکی کو صاف کر لیں بہت جالے ہیں۔۔
اب میں اس پھیلے سامان کے ساتھ جھاڑن کہاں ڈھونڈتی۔۔
آپ اسکو ایسے ہی لے جاکر رکھ دیں میں خود صاف کر لوں گی۔۔
اس نے چپ ہو کر اٹھالیا۔۔ آگے بڑھ کر اسے فرش پر کوئی پرانا کپڑا ملا اس سے اٹھا کر جھاڑ نا شروع کر دیا۔۔
میں نے کہا بھی رہنے دیں۔۔
آپکا کام ہی آسان کر رہا ہوں۔۔ اس نے کہا
میں چپ ہو گئ۔۔
اس نے جھاڑا اور دوبارہ چوکی اٹھاتے ہوئے جانے کیا خیال آیا ہنس کر بولا۔۔
باجی آج تک اپنی گھر والی کیلیئے اتنا وزن نہیں اٹھایا ۔۔

    By Syeda Vaiza Zaidi

    Vaiza Zaidi is a female writer who writes Urdu web novels online. She is one of the most popular and prolific writers in the Urdu literature scene. She has written over 50 novels in different genres, such as romance, thriller, comedy, and social issues. She has a large fan following who admire her for her creativity, style, and humor. She is also an active blogger who shares her views on various topics related to Urdu culture, literature, and society. She is an inspiring role model for many young and aspiring Urdu writers.

    Leave a Reply

    Your email address will not be published. Required fields are marked *